آوڈی پاکستان نے اپنی سروسز کے نرخ جاری کردیئے


پاکستان میں آوڈی گاڑیوں کی شہرت اور پسندیدگی میں بتدریج اضافہ ہو رہا ہے۔ اس کی اہم وجوہات میں سے ایک آوڈی پاکستان کی کم قیمت جرمن گاڑیاں متعارف کروانے کی حکمت عملی ہے۔ اب سے چند روز قبل آوڈی A3 سیڈان کو صرف 38 لاکھ روپے میں پیش کیے جانے سے اس بات ثبور حاصل کیا جاسکتا ہے۔ گو کہ بعد میں نئے انداز کی حامل آوڈی A3 کی قیمت میں 2 لاکھ روپے کا معمولی اضافہ ہوا تاہم تب تک یہ جرمن سیڈان خریداروں کے دلوں میں اپنی جگہ بنا چکی تھی۔ اب آوڈی پاکستان سال 2017 کی پہلی سہہ ماہی میں آوڈی Q2 کراس اوور متعارف کروانے جارہا ہے۔ امید کی جارہی ہے کہ آوڈی Q2 کی آمد سے پاکستان میں جرمن گاڑیوں کے ناقابل خرید حد تک مہنگے ہونے کی سوچ کو ختم کیا جاسکے گا۔

آوڈی پاکستان کے حالیہ اعلانات اور پیشکش سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ ادارہ بہترین حکمت عملی کے ساتھ نپے تلے قدم اٹھا رہا ہے۔ پاکستان میں کم قیمت گاڑیاں متعارف کرواکر جرمن گاڑیوں سے “مہنگے” ہونے کی سوچ کا خاتمہ کرنا ان کی اولین ترجیح ہے۔ اس کے ساتھ ہی آوڈی پاکستان میں جرمن گاڑیوں کی مہنگی منٹی نینس سروس کے خیال کو بھی غلط ثابت کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آوڈی پاکستان کی جانب سے گاڑیوں کی سروسز اور منٹی نینس پلان کو ازسرنو ترتیب دیا گیا جس کی تفصیل درج ذیل ہے۔

پاکستان میں آوڈی گاڑیاں رکھنے والے ان خدمات سے مستفید ہوسکتے ہیں:
– آئل کی مقدار جانچنے کی سہولت
– ظاہری اور زیریں حصوں کا جائزہ
– اندرونی حصے اور برقی سہولیات کا جائزہ
– آوڈی سروس کی تفصیلات
– آئل فلٹر کی تبدیلی
– انجن آئل کی تبدیلی
– ظاہری اور اندرونی حصوں کی صفائی

آوڈی پاکستان کی درج بالا سروسز کے نرخ بمطابق ماڈل یہ ہیں:

ماڈل انجن (TFSI) قیت (روپے)
آوڈی A3 1200cc 9,300
آوڈی A3 1800cc 10,900
آوڈی A4 1400cc 9,300
آوڈی A4 1800cc 10,900
آوڈی A5 1800cc 12,100
آوڈی A6 1800cc 12,100
آوڈی A6 2000cc 12,100
آوڈی A6 2800cc 14,850
آوڈی A6 3000cc 14,850
آوڈی A7 3000cc 14,850
آوڈی A8 3000cc 14,850
آوڈی Q3 1400cc 9,300
آوڈی Q5 2000cc 12,100
آوڈی Q7 3000cc 14,850

گو کہ عام اور روایتی گاڑیوں کے مقابلے میں آوڈی کی سروسز اب بھی مہنگی معلوم ہوتی ہیں تاہم یہ بات مدنظر رکھنی چاہیے کہ ابھی صرف شروعات ہے۔ لہذا پاکستان میں جرمن گاڑیوں کے رجحان میں اضافے اور وقت کے ساتھ ان قیمتوں میں کمی کی توقع رکھی جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: بی ایم ڈبلیو X1 بمقابلہ آوڈی Q3 – دو جرمن گاڑیاں کا ٹاکرا


Top