موٹر سائیکل کی فروخت میں اضافہ؛ بیرون ممالک سے درآمد میں کمی

yamaha-bikes-in-pakistan-launched-6

پاکستان شماریاتی بیورو کی جانب سے پیش کردہ اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ گزشتہ چھ ماہ کے دوران بیرون ملک سے جزوی اور مکمل تیار شدہ موٹر سائیکلوں کی درآمد میں واضح کمی واقع ہوئی ہے۔ البتہ ایٹلس ہونڈا پچھلے کئی مہینوں سے موٹر سائیکل کی فروخت کے مسلسل نئے ریکارڈ بنا رہا ہے۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ صرف ایٹلس ہونڈا ہی وہ واحد ادارہ ہے کہ جو پاکستان میں نت نئے معیارات پیش کرنے کی طرف گامزن ہے۔ علاوہ ازیں چینی موٹر سائیکل ساز ادارہ یونائیٹڈ موٹر سائیکلز بھی اس ضمن میں قابل ذکر پیش رفت کرتا ہوا نظر آرہا ہے۔

دسمبر 2016ء میں ہونڈا ایٹلس نے ریکارڈ 84,137 موٹر سائیکلیں فروخت کیں۔ دچسپ بات یہ ہے کہ گزشتہ سال 2016کے آخری چھ ماہ (جولائی تا دسمبر) میں فروخت ہونے والی ہونڈا موٹر سائیکلوں کی تعداد 4,58,695 رہی ہے جو سال بہ سال 16.8 فیصد اضافہ ہے۔ جبکہ یونائیٹڈ موٹر سائیکلز نے گزشہ چھ ماہ کے دوران 33.2 فیصد اضافے کے ساتھ 1,61,828 موٹربائیکس فروخت کی ہیں۔

مقامی سطح پرپرزوں کی تیاری کے باعث چین، جاپان اور تھائی لینڈ سے موٹر سائیکل کٹِس کی درآمدات میں واضح کمی دیکھی جارہی ہے۔ پاکستان میں موٹر سائیکل ساز اداروں کی انجمن APMA کے سربراہ محمد شبیر شیخ نے بھی اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں موٹر سائیکلوں کے پرزہ جات تیار کیے جانے کے بعد درآمدات میں کمی ہوئی ہے۔تاہم انہوں نے باور کروایا کہ پچھلے چھ ماہ میں اس کے کچھ خاص اثرات مرتب نہیں ہوئے۔ شبیر شیخ نے مزید کہا کہ درآمدات میں کمی کی بنیادی وجہ جعل سازی، اسمگلنگ اور دھوکا دہی ہے لہٰذا حکومت کو بیرون ممالک سے غیر قانونی درآمدات پر قابو پانے کے لیے درآمدی ڈیوٹی پر نظر ثانی اور دیگر متعلقہ معاملات حل کرنے کے لیے ضروری اقدامات اٹھانا ہوں گے۔

محمد شبیر شیخ نے کہا کہ چینی موٹر سائیکل ساز اداروں کو ملک میں زبردست مقابلے کا سامنا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مالی سال 2015-16 کے دوران 125 میں سے 26 اداروں نے کوئی موٹر سائیکل یہ تیار نہ کی جس کے بعد مجموعی طور پر 32 اداروں نے اپنے کارخانے بند کرنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اب بھی 67 ادارے مجموعی طور پر 20 لاکھ موٹر سائیکلیں تیار کرچکے ہیں۔

مالی سال 2015-16 میں دیگر ممالک سے درآمد کی جانے والی جزوی اور مکمل تیار شدہ موٹر سائیکلوں کی تعداد سال بہ سال 4 فیصد اضافے کے ساتھ 9 کروڑ 40 لاکھ رہی تھی۔ مالی سال 2016-17 کی پہلی ششماہی کے دوران یاماہا جاپان کی موٹرسائیکلیں پچھلے سال کے مقابلے میں 60.6 کمی کے بعد 5000 تک پہنچ چکی ہیں۔ تاہم سوزوکی موٹر سائیکلوں کی تیاری میں 18.4 فیصد اضافہ ہوا ہے اور اس عرصے میں فروخت ہونے والی سوزوکی موٹر سائیکلوں کی تعداد 9,952 کو چھو چکی ہے۔


Top