پاک سوزوکی نے 1 لاکھ سے زائد گاڑیاں فروخت کرنے کا سنگ میل عبور کرلیا

car-sales-jul15-apr16

پاکستان آٹوموٹیو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پاما) کی جانب سے جاری ہونے والے تازہ ترین اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ گزشتہ مالی سال 2014-15 کے مقابلے میں رواں مالی سال 2015-16 کے ابتدائی 10 ماہ کے دوران پاکستان میں گاڑیوں کی فروخت 26 فیصد زیادہ رہی ہے۔ پچھلے مالی سال مجموعی طور پر 120,942 گاڑیاں فروخت ہوئیں جبکہ جولائی 2015 سے اپریل 2016 (رواں مالی سال) تک 152,229 گاڑیاں بیچی جا چکی ہیں۔ البتہ مجموعی طور پر مارچ 2016 کے مقابلے میں اپریل 2016 کے دوران گاڑیوں کی فروخت کم رہی۔

رواں مالی سال فروخت ہونے والی سب سے زیادہ گاڑیاں 800 اور 1000 سی سی رہیں۔ اس زمرے میں شامل کُل 58,345 گاڑیاں صارفین کو دی جاچکی ہیں جن میں سوزوکی مہران اور سوزوکی بولان کی تعداد قابل ذکر ہے۔ یاد رہے کہ گزشتہ مالی سال انہی مہینوں میں یہ تعداد صرف 42,083 رہی تھی یوں اس بار 800 اور 1000 سی سی گاڑیوں کی فروخت 38.64 فیصد زائد رہی۔ اس اضافے کی بنیادی وجہ پنجاب سبز ٹیکسی اسکیم رہی جس کے تحت بیروزگار افراد کو آسان اقساط اور کم شرح سود پر روزگار کمانے کے لیے گاڑیاں فراہم کی جارہی ہیں۔

جاری مالی سال کے دوران پاک سوزوکی نے 109,628 سے زائد گاڑیاں فروخت کر کے گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں 41 فیصد زائد گاڑیاں بیچیں۔ سب سے دلچسپ اعداد و شمار سوزوکی ویگن آر کے دیکھے گئے جو اب آہستہ آہستہ خریداروں کو اپنی جانب متوجہ کرنے میں کامیاب ہو رہی ہے۔ گزشتہ مالی سال صرف 4,027 سوزوکی ویگن آر فروخت ہوئیں تھیں جبکہ رواں مالی سال اب تک یہ تعداد 7,782 تک پہنچ چکی ہے۔ کچھ ایسی ہی صورتحال سوزوکی راوی کے ساتھ بھی ہے جس کی پچھلے مالی سال فروخت 17,146 رہی تھی اور اب یہ 56.90 فیصد اضافے کے بعد 26,902 تک پہنچ چکی ہے۔

1300cc اور زائد انجن کی حامل گاڑیوں کے زمرے میں اب تک 72,821 گاڑیاں فروخت کی جاچکی ہیں۔ گزشتہ سال کے ابتدائی 10 ماہ میں 63,385 گاڑیاں بیچی گئی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں: ہونڈا سِوک 2016 رواں سال جون یا جولائی میں پیش کی جائے گی

گو کہ ہونڈا ایٹلس کے اعداد و شمار دیگر کار ساز اداروں کے مقابلے میں کافی کم نظر آتے ہیں تاہم ہونڈا کی گاڑیاں بھی گزشتہ مالی سال سے زائد فروخت ہورہی ہیں۔ مالی سال 2014-15 کے ابتدائی 10 ماہ کے دوران ہونڈا ایٹلس نے 18,781 گاڑیاں فروخت کی تھیں جبکہ اس سال یہ تعداد 21,293 تک پہنچ چکی ہے۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ہونڈا ایٹلس سِوک اور سِٹی کی تعداد علیحدہ علیحدہ بتانے سے اجتناب برت رہا ہے۔ ماہرین کے خیال میں سِوک کی فروخت ناقابل یقین حد تک کم ہوچکی ہے جبکہ سِٹی کی فروخت میں معمولی اضافہ ہورہا ہے۔ رواں سال سِوک کے نئے ماڈل کی متوقع آمد اس کی فروخت میں کمی کی بڑی وجہ بتائی جارہی ہے۔

اب بات کرتے ہیں ٹویوٹا انڈس موٹرز اور ان کی مقبول ترین ٹویوٹا کرولا سے متعلق۔ حسب توقع ٹویوٹا کرولا کی فروخت گزشتہ مالی سال کی طرح اس بار بھی سب سے زیادہ رہی ہے۔ پچھلی مالی سال ٹویوٹا نے 41,650 فروخت کی تھیں جبکہ اس سال یہ تعداد 48,203 تک پہنچ چکی ہے۔

دیگر زمروں کی اگر بات کریں تو جہاں بسوں کی فروخت میں اضافہ نظر آرہا ہے وہیں ٹریکٹرز کی تعداد میں 30 فیصد تک کمی دیکھی جارہی ہے۔ گزشتہ مالی سال کے دوران 448 بسیں اور 38,356 ٹریکٹرز فروخت ہوئے تھے جبکہ اس سال یہ تعداد بالترتیب 805 اور 26,586 رہی ہے۔

ماہانہ اعداد و شمار کا جائزہ لیں تو ماہِ اپریل میں مجموعی طور پر فروخت ہونے والی 7,939 گاڑیوں کی تعداد گزشتہ سے پیوستہ مہینے مارچ سے کم رہی۔ مارچ 2016 میں 8,406 گاڑیاں خریداروں کو فراہم کی گئی تھیں۔

Top