ٹائر کی تیاری میں استعمال ہونے والے اجزا کی تفصیل

Tires

مشہور ہے کہ چلتی کا نام گاڑی اور گاڑی کے چلنے کے لیے ضروری ہے کہ اس میں ٹائر بھی لگے ہوں۔ اگر گاڑی چلے گی نہیں تو گاڑی کہلائے گی کیسے؟ تو آج ہم آپ کو گاڑی کے چند اہم ترین حصوں میں سے ایک یعنی ٹائر سے متعلق بتا رہے ہیں۔ گاڑی کے ٹائر 10 سے 15 مختلف اجزاء سے مل کر بنتا ہے۔ ربڑ، کپڑے اور اسٹیل کے کئی تاروں کو مختلف مراحل سے گزارا جاتا ہے پھر کہیں جا کر ایک ٹائر بنتا ہے۔ اس کے علاوہ ٹائر کے بھی مختلف حصے ہوتے ہیں جو علیحدہ علیحدہ تیار کیے جاتے ہیں۔ مثلاً ٹائر کا اندرونی حصہ، اس پر بنے ہوئے ٹریڈ اور دائیں بائیں موجود دیواریں بنانے اور جوڑنے کا ایک مفصل طریقہ ہے۔ ہم اس طریقہ کار میں آپ کو نہیں الجھائیں گے اور یہاں صرف ان اجزا سے متعلق بتائیں گے کہ جو ٹائر کی تیاری میں استعمال ہوتی ہیں تاکہ آپ اپنی گاڑی یا موٹر سائیکل کے لیے ٹائر خریدتے وقت مختلف اصطلاحات کو بہتر انداز میں سمجھ سکیں۔

ٹریڈ (Tread)
Tyre Treadیہ ٹائر کا وہ حصہ ہے جو ہمہ وقت سڑک سے جڑا رہتا ہے۔ اس کے اوپر مختلف طرح کے نقش و نگار بنے ہوئے ہوتے ہیں۔ یہ حصہ دوران سفر ڈرائیور کو گاڑی پر گرفت مضبوط رکھنے میں مدد دیتا ہے۔ اور برسات کے موسم میں یہ پانی کے اخراج بھی معاون ثابت ہوتا ہے۔ اور اگر آپ کے پاس خوش قسمتی سے ایسے ٹائر ہیں جن پر مضبوط ربڑ استعمال کیا گیا ہے تو آپ کو کیچڑ میں بھی گاڑی بہت آسانی سے چلانے کی سہولت حاصل ہوگی۔ ٹائر کے ٹریڈ جتنے ہموار ہوں گے گاڑی اتنے ہی اچھے انداز سے بغیر کسی قسم کی لرزش کے چلتی رہے گی۔ اس کے علاوہ یہ گاڑی کی تیز رفتاری کے دوران آواز بھی پیدا نہیں کرتے۔

بیڈ (Bead)
drag-gifبیڈ کا کام ٹائر اور پہیے کے درمیان تعلق کو برقراررکھنا ہے۔ بیڈ میں اسٹیل کا استعمال کیا جاتا ہے تاکہ اس کی شکل برقرار رہے اور وہ کسی بھی قسم کا دباؤ پڑنے پر اپنی ہئیت تبدیل نہ کرے۔ جب ٹائر ٹیوب بھی ہوا بھری جاتی ہے تو یہی بیڈ والا حصہ ربر کی مدد سے پہیے سے چپکا رہتا ہے تاکہ ہوا کے اخراج اور ٹائر کو پھسلنے سے محفوظ رکھا جاسکے۔ برق رفتاری گاڑیوں میں اس حصے کو پہے سے باقاعدہ جوڑ دیا جاتا ہے تاکہ وہ کسی بھی صورتحال میں پہیے سے الگ نہ ہوسکیں۔

سائیڈ وال (Sidewall)
سائیڈ وال ٹائر کے دائیں اور بائیں جانے موجود حصے کو کہا جاتا ہے۔ یہ لچک دار حصہ ٹائر کے ٹریڈ اور بریڈ کو ملاتا ہے۔ اسے گاڑی کے پہیے کے معیار اور کارکردگی کی وجہ سے بہت اہمیت حاصل ہے۔ دوران سفر موڑ کاٹتے ہوئے اس پر سب سے زیادہ دباؤ پڑتا ہے۔ اگر آپ دائیں جانب گاڑی موڑ رہے ہیں تو بائیں سائیڈوال پر دباؤ پڑے گا اور بائیں جانب گاڑی موڑتے ہوئے دائیں سائیڈ وال پر دباؤ پڑے گا۔ سفر کے دوران اونچی نیچے رستوں سے گزرتے ہوئے یہ حصہ گاڑی کو ایک خاص حالت میں رکھتا ہے تاکہ مسافروں کو زیادہ تکلیف کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ غیر معیاری ٹائر کے اس حصے میں لچک کم ہوتی ہے اور ہوا کا غیر مناسب دباؤ اس حصے کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔

کارکَس (Carcass)
یہ دراصل ٹائر کا ڈھانچہ ہوتا ہے جو دیگر اعضاء کو آپس میں جوڑے رکھتا ہے۔ ٹائر کی ٹریڈ کو ایک خاص طریقے سے پھگلا کر کارکس سے جوڑ دیا جاتا ہے۔ اسے مختلف اجزا سے تیار کیا جاتا ہے۔ ریڈیئل ٹائر میں اسٹیل کے تار بھی استعمال کیے جاتے ہیں۔ یہ تار ایک بیڈ سے دوسری بیڈ کو جوڑتے ہیں۔ البتہ یک سمتی ٹائر میں کپڑے اور شیشے کے تار بھی استعمال کیے جاتے ہیں۔

tire-structure

یہ وہ چند باتیں ہیں جو گاڑیوں کے شوقین افراد کی معلومات میں اضافے کے لیے بتائی گئیں ہیں۔ اچھے ٹائر ڈرائیور اور گاڑی دونوں کی حفاظت اور سہولت کے لیے اہمیت کے حامل ہیں۔ اگر آپ کے پاس بھی اس حوالے سے کوئی معلومات ہوں تو ہمارے ساتھ ضرور شیئر کریں۔

Top