سی این جی کی قیمت میں 22 روپے کا اضافہ


حکومت پاکستان نے ملک میں سی این جی کی قیمتوں میں 22 روپے فی کلو کا اضافہ کردیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ حکومت کی جانب سے قدرتی گیس کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے سی این جی کی قیمتیں بھی بڑھیں گی۔ مقامی ٹرانسپورٹرز اور عوام کی جانب سے حکومت کے اقدام پر سخت تنقید کی گئی ہے کہ جو پبلک ٹرانسپورٹ کے ذریعے سفر کرتے ہیں۔

نرخوں میں اضافے کے ساتھ ہی خیبر پختونخوا میں سی این جی کی قیمتیں 96 روپے سے بڑھ کر 118 روپے فی کلو ہوگئی ہیں۔ دوسری جانب ٹرانسپورٹرز نے کرایوں میں بھی اضافہ کردیا ہے۔ مزید برآں کراچی کے ٹرانسپورٹرز نے بھی خبردار کیا ہے کہ حکومت اس فیصلے کو واپس لے، ورنہ ہڑتال کا سامنا کرے۔

سی این جی کی قیمتوں میں اضافے سے ہٹ کر دیکھیں تو حکومت نے اکتوبر 2018ء کے لیے پیٹرولیئم مصنوعات کی قیمتوں کو برقرار رکھا تھا۔ قبل ازیں آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی نے پیٹرولیئم مصنوعات کی قیمتوں میں 4.41 روپے کا اضافہ تجویز کیا تھا۔

اب تک ڈیزل پر جنرل سیلز ٹیکس 17.5 فیصد اور پیٹرول پر 4.50 فیصد ہے۔ مزید برآں مالی سال 2019ء کی پہلی سہ ماہی میں گیسولین کی فروخت 2 فیصد کمی کے ساتھ 1.896 میٹرک ٹن ہو گئی، دوسری جانب ڈیزل کی فروخت میں بھی 19 فیصد کمی آئی ہے۔

اس بارے میں اپنی رائے نیچے تبصروں میں دیجیے۔


Top