ڈاٹسن گو، پاکستانیوں کے لیے نئی ہیچ بیک؟


چند روز قبل پاک ویلز ڈاٹ کام نے بتایا تھا کہ انجینیئرنگ ڈیولپمنٹ بورڈ (EDB) اور بورڈ آف انوسٹمنٹ (BOI) گندھارا نسان کو براؤن فیلڈ درجہ دینے پر رضامندی کا اظہار کر چکے ہیں اور اس بات کا قوی امکان ہے کہ براؤن فیلڈ اسٹیٹس ملنے کے بعد کمپنی اپنی معروف ہیچ بیک ڈاٹسن گو پاکستان میں متعارف کروائے، جو مقامی کار مارکیٹ کو بدل کر رکھ دے گی۔

اس تحریر میں ہم ڈاٹسن گو کے بارے میں مختصراً بات کریں گے، اس لیے بغیر کسی تمہید کے آگے بڑھتے ہیں۔ ڈاٹسن گو اِس وقت بھارت اور جنوبی افریقہ سمیت مختلف ممالک میں دستیاب ہے۔ 5 دروازوں کی ہیچ بیک 1200cc، 3 سلنڈر انجن سے لیس ہے جو 5-اسپیڈ مینوئل ٹرانسمیشن کے ساتھ 68 بریک ہارس پاور اور 104 نیوٹن میٹر ٹارک پیدا کر سکتی ہے۔

مزید برآں، کار صرف 14 سیکنڈوں میں 100 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار حاصل کر سکتی ہے، جو بلاشبہ بہترین ہے۔ علاوہ ازیں یہ کار بہت اچھا مائلیج بھی رکھتی ہے؛ یہ 1 لیٹر میں 21 کلومیٹر چلتی ہے۔

یاد رہے کہ نسان نے 1988ء میں ڈاٹسن برانڈ ختم کردیا تھا، لیکن ادارے نے 2012ء میں ڈاٹسن گو لانچ کرکے اسے دوبارہ بحال کیا ۔ کار حیران کن اور ہموار شکل رکھتی ہے اور انٹیریئر بھی بہترین ہے؛ اس کے علاوہ یہ گاڑی مہران کے مقابلے میں کافی کشادہ ہے اور اس میں پانچ بڑے افراد بیٹھ سکتے ہیں۔ کار کے دو مختلف ماڈلز ہیں؛ ایک ڈاٹسن گو جس کا اوپر ذکر ہے اور دوسری 7 نشستوں کی MVP ڈاٹسن گو+۔ یہ گو جیسی خصوصیات ہی رکھتی ہے، اور بہت حد تک ممکن ہے کہ ادارہ پاکستان میں بیک وقت یہ دونوں گاڑیاں پیش کرے۔ ایک ہیچ بیک اور MVP پاکستانیوں کے لیے واقعی ایک تحفہ ہوگی۔

ڈاٹسن گو ایئر کنڈیشننگ کے ساتھ آتی ہے اور پاور ونڈوز کا بھی انتخاب کیا جا سکتا ہے۔ گو کی پیمائش 3,785 ملی میٹر لمبائی، 1,635 ملی میٹر چوڑائی اور 1,485 ملی میٹر بلندی ہے۔ مزید برآں کار کا وہیل بیس 2,450 ملی میٹر ہے۔

اس گاڑی کی قیمت کے بارے میں کچھ کہنا مشکل ہے؛ اگر کمپنی اس گاڑی کو پاکستان میں کامیاب بنانا چاہتی ہے تو اسے مناسب قیمت کے ساتھ فروخت کرنا ہوگا۔ یاد رکھیں کہ ابھی تک اس امر کی تصدیق نہیں ہوئی کہ گندھارا گو یا گو+ ملک میں لانچ بھی کرے گا، لیکن بہت ساری وجوہات ہیں جن کی بنیاد پر مانا جا سکتا ہے کہ مستقبل قریب میں ایسا ہوگا۔

پہلی وجہ ہے کہ گزشتہ سال گندھارا کے حکام نے BOI اتھارٹیز سے ملاقات کی اور انہیں اپنے اسمبلی پلانٹ کی بحال کرنے کے تفصیلی منصوبے سے آگاہ کیا۔ اجلاس میں گندھارا کے حکام نے آپریشن کے پہلے چار سالوں میں 4.5 بلین پاکستانی روپے کی خطیر رقم کی سرمایہ کاری سے ڈاٹسن کاریں بنانے کا جامع منصوبہ پیش کیا۔ دوسری یہ کہ ڈاٹسن گو اور گو+ تجرباتی مراحل میں پاکستانی سڑکوں پر دیکھی گئی ہیں۔

امید ہے کہ گندھارا نسان ملک میں ڈاٹسن کاریں لانچ کرے گا۔ اس بارے میں اپنی رائے ضرور دیجیے۔


My name is M. Ali Laghari and I love to read and write about Cars.

  • Asif Javed

    ye kab tak expected hai .. Pakistan main launch kab ho gi ye gari ?

Top