اوپن لیٹر پر گاڑیاں چلانے والے افراد کو ایکسائز ڈپارٹمنٹ کا انتباہ


پنجاب کے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈپارٹمنٹ نے ایک مرتبہ پھر اُن افراد کو خبردار کیا ہے جو اوپن لیٹرز پر گاڑیاں چلا رہے ہیں۔ اتھارٹی نے شہریوں کو اپنی گاڑیاں اپنے نام سے رجسٹر کروانے کے لیے 10 دن کا وقت دیا ہے، بصورتِ دیگر گاڑیوں کی رجسٹریشن منسوخ کردی جائے گی۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق یہ قدم ای-چالان منصوبے کے بھرپور نفاذ کو یقینی بنانے کے لیے اٹھایا گیا ہے۔ قبل ازیں بتایا گیا تھا کہ لوگوں کی جانب سے گاڑیاں اپنے نام سے رجسٹر نہ کروانے کی وجہ سے گزشتہ مالکان کو ای-چالانز موصول ہو رہے ہیں، جو ان کے لیے ایک مصیبت بن رہا ہے۔

اب تک 8,00,000 ایسی گاڑیاں سڑکوں پر موجود ہیں جو اوپن لیٹر پر ہیں، اتھارٹی نے 3,00,000 گاڑیوں اور 5,00,000 موٹر سائیکلوں کی فہرست تیار کی ہے اور ان کے خلاف سخت اقدامات اٹھانے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔ واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں کہ اتھارٹی نے اوپن لیٹر پر گاڑیاں چلانے والوں کو خبردار کیا ہے، ایکسائز ڈپارٹمنٹ کئی مواقع پر ایسے ہی انتباہ جاری کر چکا ہے، دیکھتے ہیں اس مرتبہ اتھارٹی کوئی سنجیدہ قدم اٹھاتی ہے یا نہیں۔

ای-چالان سسٹم ستمبر 2018ء میں شروع کیا گیا تھا۔ تیز رفتار، غلط یو-ٹرن، سگنلز توڑنے یا ٹریفک اشاروں کو نظرانداز کرنے کی شہر بھر میں نصب CCTV کیمروں کی اتھارٹیز کی جانب نگرانی کی جا رہی ہے۔ قوانین کی خلاف ورزی کی صورت میں ایک ای-ٹکٹ سسٹم کی جانب سے بنایا جاتا ہے جو بعد ازاں کوریئر سروس کے ذریعے خلاف ورزی کرنے والے کو بھیجا جاتا ہے۔

پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی (PSCA) خلاف ورزی کرنے والوں کو مستقل چالان بھیج رہا ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ اس نظام کو بہتر بنانے کا عہد رکھتا ہے۔ اس بارے میں اپنی رائے نیچے تبصروں میں پیش کیجیے۔


My name is M. Ali Laghari and I love to read and write about Cars.

Top