برقی گاڑیوں کی 5 نمایاں خصوصیات

Electric car featured

1: کار کردگی (Performance)
برقی گاڑیوں میں فوری ٹارک ہوتا ہے۔ یہاں آپ نے ایکسلیریٹر پر پاؤں رکھا اور وہاں گاڑی چل پڑی۔ برقی موٹر بغیرآر پی ایم پر ٹارک فراہم کرسکتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ ایکسلیرٹر دباتے ہی آپ کو رفتار حاصل ہونا شروع ہوجاتی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر آپ کی گاڑی کھڑی ہوئی ہے اور آپ نے ایکسلیریٹر دبایا تو برقی موٹر فوراً گاڑی کو ٹارک فراہم کرے گی۔ یہ خصوصیات روایتی پیٹرول اور ڈیزل گاڑیوں سے بالکل مختلف ہے کیوں کہ ان میں آر پی ایم بڑھانے سے پہلے ٹارک کا حصول ممکن نہیں۔ فی الفور ٹارک کی فراہمی سے برقی گاڑی چلانے کا مزہ ہی اور ہوتا ہے خاص کر جب آپ 50 سے 80 کلومیٹر کی رفتار پر گاڑی چلائیں ۔

Electric car performance

دیکھ بھال (maintenance)
روایتی گاڑیوں کے برعکس برقی گاڑی میں انجن آئل، آئل فلٹر، گیئر آئل حتی کہ اسپارک پلگ جیسی چیزیں بھی موجود نہیں ہوتیں اور اسی لیے ان کی دیکھ بھال اور مرمت وغیرہ کی بھی ضرورت باقی نہیں رہتی۔البتہ بجلی سے چلنے والی گاڑیوں میں ٹائرز، بریک آئل، اور اے سی فلٹر وغیرہ پر نظر رکھنا بھی اتنی ہی ضروری ہے کہ جتنا دیگر روایتی گاڑیوں میں ہوتی ہے۔بیشتر برقی گاڑیوں میں بریک پیڈز بھی برقی موٹر ہی کے ذریعے کنٹرول کیے جاتے ہیں۔ ایک جانب بریک کے ذریعے توانائی حاصل کر کے بیٹری چارج کی جاتی ہے تو دوسری جانب اس سے بریک پیڈز بھی زیادہ عرصے تک قابل استعمال رہتے ہیں۔ معروف کار ساز ادارے اپنی برقی گاڑیوں کے ساتھ 8 سال کی وارنٹی بھی دیتے ہیں لہٰذا خریدار کم از کم 8 برس تک تو بغیر کسی پریشانی اور الجھن کے گاڑی چلا سکتا ہے۔

ev-cheaper-maintain

اہلیت (Efficiency)
روایتی ایندھن جیسا کہ پیٹرول پر چلنے والے گاڑیوں کے مقابلے میں برقی گاڑیوں کی قابلیت 3 گنا زیادہ تصور کی جاتی ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق عام گاڑیوں میں لگائے گئے انجن سے پیدا ہونے والی 33 فیصد توانائی ایگزاسٹ کے راستے باہر نکل کر ضائع ہوجاتی ہے۔ جبکہ برقی گاڑی میں اس قسم کا کوئی نقصان نہیں ہوتا۔ بجلی سے چلنے والی گاڑیوں میں ایگزاسٹ موجود ہی نہیں ہوتا لہٰذا معمولی سے بھی توانائی ضائع ہونے کا کوئی خطرہ نہیں۔ علاوہ ازیں ڈیزل اور پیٹرول پر چلنے والی گاڑیوں کے برعکس برقی گاڑیاں 50 فیصد کم توانائی خرچ کرتی ہیں۔

Green-Cars_2

چارجنگ کی سہولت (Charging Convenience)
شمالی امریکا اور یورپ میں آپ پیٹرول اسٹیشن جائے بغیر بھی برقی گاڑیوں کو اپنے گھر یا دفتر میں باآسانی چارج کرسکتے ہیں۔ البتہ پاکستان میں چونکہ برقی گاڑیوں کا رجحان اتنا زیادہ عام نہیں اس لیے بی ایم ڈبلیو نے ان گاڑیوں کی چارجنگ کے لیے لاہور میں پہلا چارجنگ اسٹیشن قائم کیا ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ بہت جلد اس طرز کے مزید اسٹیشن دیگر شہروں میں بھی لگائے جائیں گے تاکہ شہریوں کو برقی گاڑیوں کے استعمال میں سہولت حاصل ہوسکے۔

مزید پڑھیں: پاکستان میں برقی گاڑیوں کے لیے پہلا چارجنگ اسٹیشن قائم

Charing electric car

مناسب قیمت (Economical Price)
یورپ اور شمالی امریکا میں برقی گاڑی رکھنے والوں کو حکومت خصوصی مراعات مثلاً ٹیکس سے چھوٹ دیتی ہے۔ اس طرح آپ بہت سا پیسہ بچا کر اپنی آمدنی کو محفوظ رکھ سکتے ہیں۔ امریکا میں برقی گاڑی خریدنے کے خواہشمند بغیر کسی پیشگی ادائیگی کے صرف 200 ڈالر کے عوض گاڑی حاصل کرسکتے ہیں۔ پاکستان میں بھی برقی گاڑی درآمد کرنے پر روایتی گاڑیوں سے کم ڈیوٹی لاگو ہوتی ہے۔

electric-vehicle-label-mpge-epa

پاکستان میں بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کا رجحان پنپنا شروع ہوچکا ہے۔ ان کے استعمال سے نہ صرف پیسوں کی بچت ممکن ہے بلکہ یہ برقی گاڑیاں ماحول دوست بھی ہیں۔

Samiullah Sharief

Samiullah Sharief is a car enthusiat. He is passionate about writing blogs and reviews about cars. His hobbies are driving,watching TV Shows like Top Gear, Mega Factories and he follows Popular car magazines. You can reach out to him by tweeting @sami649

Top