ویڈیو: 2016 ہونڈا سِوک ٹربو 1.5 کا تفصیلی جائزہ

7

جولائی 2016 میں ہونڈ اایٹلس (Honda) نے ہونڈا سِوک کی نئی دسویں جنریشن متعارف کروائی۔ پاکستان میں دسویں جنریشن ہونڈا سِوک (Civic) کے تین ماڈلز پیش کیے گئے ہیں جن میں سوک 1.8، سوک 1.8 اوریئل اور سوک ٹربو 1.5 شامل ہیں۔

مزید پڑھیں: ہونڈا سِوک 2016 کے تینوں ماڈلز کا تفصیلی جائزہ

اندرونی حصہ (Interior)

ہونڈا سِوک کا اندرونی حصہ مختلف جدید گیجٹس سے بھرپور ہے۔ ان میں بٹن سے گاڑی اسٹارٹ کرنے کی سہولت، پچھلی نشستوں کے لیے علیحدہ LCD اور ٹریکشن کنٹرول کے علاوہ برقی ہینڈ بریک کی بھی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ گو کہ سِوک ٹربو میں آڈیو / ویڈیو کے لیے ٹچ اسکرین بھی دی گئی ہے تاہم اس میں چند تکنیکی نقائص موجود ہیں۔ سگریٹ نوشی کرنے والوں کے لیے بری خبر یہ ہے کہ گاڑی میں سگریٹ جلانے کے لیے لائٹر اور ایش ٹرے نہیں دی گئی۔ اگلی نشستوں کے ساتھ ایک اور پچھلی نشستوں کے ساتھ دو کپ ہولڈرز دیئے گئے ہیں۔ جدید اور اسپورٹی انداز کے حامل اسٹیئرنگ ویل کو ڈرائیور صاحبان حسب ضرورت اوپر یا نیچے بھی کرسکتے ہیں۔ اسٹیئرنگ ویل پر ملٹی میڈیا اور کروز کنٹرول کے لیے بٹن بھی دیئے گئے ہیں۔ اگر مینوئل انداز سے گاڑی چلانا چاہیں تو اس کے لیے اسٹیئرنگ ویل کے پیچھے پیڈل شفٹرز بھی دیئے گئے ہیں۔ 2016 ہونڈا سوک 1.5 کی نمایاں خصوصیات میں جدید کلسٹر بھی شامل ہے۔ پچھلی نشستیں اور فرش ہموار نہیں ہے جس کی وجہ سے درمیان میں بیٹھنے والے مسافر کو مشکل پیش آسکتی ہے۔ پچھلی جانب موجود ڈگی میں 425 لیٹر جگہ موجود ہے جس میں کافی سامان رکھا جاسکتا ہے۔

ظاہری انداز (Exterior)

ہونڈا سوک کا ظاہری انداز بہت خوبصورت اور اسپورٹی ہے۔اس کے دروازے کھولنے کے لیے چابی کی ضرورت نہیں کیوں کہ انہیں ریموٹ کنٹرول سے کھولا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ سِوک میں امموبلائزر بھی دیا گیا ہے جس سے گاڑی کو چوری ہونے سے محفوظ رکھا جاسکتا ہے۔ LED ہیڈ لائٹس اور ان کے ساتھ موجود LED رننگ لائٹس کی موجودگی نے گاڑی کو مزید دلکش اور جاذب نظر بنا دیا ہے۔ پچھلی جانب دو ایگزاسٹ بھی اس کے جذباتی انداز کو مزید نمایاں کر رہے ہیں۔ سوک ٹربو میں BG لکسو پلس ٹائرز لگائے گئے ہیں جو جنرل موٹرز کا برانڈ ہے۔ہونڈا جاپان اور کونٹی نینٹل جرمنی کی مشاورت سے جنرل موٹرز کے تیار کردہ یہ ٹائرز 210 کلومیٹر فی گھنٹہ تک کی رفتار پر بہترین کارکردگی دکھا سکتے ہیں۔

کارکردگی (Performance)

ہونڈا سِوک کے اندر کافی گنجائش موجود ہے۔ چونکہ یہ گاڑی 1500cc ٹربو انجن کی حامل ہے اس لیے رفتار بھی بہترین ہے۔ پچھلے ماڈلز کے مقابلے میں نئی ماڈلز کی گرفت بہترین ہے۔ مزید برآں اس کے فرش کی زمین سے اونچائی (ground clearence) بھی لاجواب ہے۔ ہموار رستوں پر تو بہترین سفری تجربہ حاصل ہوتا ہی ہے نیز اونچے نیچے رستوں پر بھی بہترین شاکس کی وجہ سے بھی زیادہ پریشانی نہیں ہوتی۔ سوک ٹربو 1.5 میں ڈیجیٹل ایئر کنڈیشننگ بھی دیا گیا ہے جس کی کارکردگی بھی بہترین ہے۔ پچھلی نشستوں پر سفر کرنے والے مسافروں کی سہولت کے لیے پچھلی جانب بھی AC وینٹس دیئے گئے ہیں۔

3

حفاظتی سہولیات (Safety)

ہونڈا سِوک میں سیٹ بیلٹس اور کروز کنٹرول کے علاوہ ڈرائیور اور اس کے ساتھ اگلی نشست پر سفر کرنے والے مسافر کی حفاظت کے لیے دو ایئر بیگز بھی دیئے گئے ہیں۔

خصوصی ایندھن (Premium Fuel)

اگر آپ ہونڈا سِوک 1.5 ٹربو لینا چاہتے ہیں لیکن درکار ایندھن کی دستیابی سے پریشانی ہیں تو آپ کو یہ جان کر اطمینان ہوگا کہ حکومت نے معیاری پیٹرول کی دستیابی کا فیصلہ کرلیا ہے۔ سادے لفظوں میں آئندہ ماہ یعنی نومبر سے آپ کو اضافی آکٹین والا پیٹرول باآسانی دستیاب ہوجائے گا۔ شہر میں سوک ٹربو ایک لیٹر پر 8 کلومیٹر جبکہ طویل شاہراہوں پر ایک لیٹر میں 10 کلومیٹر تک سفر کرسکتی ہے۔ ٹربو انجن کی موجودگی میں کم مائلیج قابل سمجھ ہے۔

گو کہ مجموعی طور پر ہونڈا سوک ایک بہترین گاڑی ہے تاہم اس میں بہتری کی گنجائش بدستور موجود ہے۔30 لاکھ روپے خرچ کرنے والے ایک صارف چاہتا ہے کہ اسے گاڑی میں معیاری اور اچھی چیزیں فراہم کی جائیں۔ سوک کے اندرونی حصے میں موجود معمولی نقائص جیسا کہ دروازوں پر ویلڈنگ کے نشانات وغیرہ کو باآسانی مٹایا جاسکتا ہے۔ اس کے لیے LCD میں موجود مسائل بھی دور کرنا بہت ضروری ہے۔ چند ایک معمولی اور چھوٹے موٹے مسائل کو حل کرلیا جائے تو سوک پاکستان میں دستیاب بہترین گاڑیوں میں سے ایک ہوگی جسے چلانے والے کا فخر کرنا حق بجانب ہے۔

پاک ویلز کی جانب سے ہونڈا سوک 1.5 ٹربو کا ویڈیو تجزیہ ذیل میں ملاحظہ فرمائیں:



A car enthusiast, with a Computer Science background, loves to read and write about cars.

Top