جنگی جہاز P-51 کی نقل میں ہونڈا اوڈیسی انجن

+Hurry+Home+Honey

اگر آپ تاریخ میں دلچسپی رکھتے ہیں تو دوسری عالمی جنگ میں شامل مشہور امریکی جہاز P-51 موستنگ کے بارے میں ضرور جانتے ہوں گے۔ جنگی مقصد کے لیے بگاٹی ویرون 16.4 انجن کے حامل 15 ہزار جہاز تیار کیے گئے تھے جن میں سے آج صرف 200 باقی بچے ہیں۔ تقریباً 15 لاکھ امریکی ڈالر کی لاگت سے تیار ہونے والے ان جہازوں میں سے ایک مشہور ہالی ووڈ اداکار ٹام کروز کی ملکیت ہے۔

اتنی زیادہ قیمت کو دیکھتے ہوئے ٹائٹن ایئرکرافٹ اس کی نقل بنانے کا فیصلہ کیا جو دنیا بھر کے شوقین افراد کے لیے قابل خرید ہو۔ P-51 موستنگ کی نقل کو T-51 کا نا دیا گیا اور اس کی قیمت تقریباً 10 لاکھ امریکی ڈالر ہے جو پاکستانی روپے میں 1 کروڑ سے زائد رقم بنتی ہے۔ باہر سے دیکھنے پر اصل اور نقل کے درمیان فرق بتانا مشکل ہے البتہ T-51 کو اندر سے کافی تبدیل کیا گیا ہے۔ اس میں آپ کو رولز روئس مارلن V12 انجن نہیں ملے گا بلکہ آپ اس میں ہونڈا اوڈیسی کا خصوصی طور پر تیار کردہ V6 انجن لگا ہوا پائیں گے۔

ٹائٹن ایئرکرافٹ کے صدر جان ولیمز نے کہا کہ انہوں نے T-51 کو شروع میں روٹکس 912F چار-سلینڈر انجن استعمال کیا جو بمشکل 100 براک ہارس پاور فراہم کر رہا تھا اور یہ ہمارے صارفین کے لیے بہت کم تھی۔ اس کے بعد ہم نے بہت سے تجربات کیے جن میں مختلف انجن استعمال کیے اور بالآخر اوڈیسی کا تیار کردی V6 ہمیں اچھا لگا جو 250 براک ہارس پاور دیتا ہے اور اس کا وزن بھی ہلکا ہے۔ پھر کچھ تبدیلیوں کے ساتھ ہم نے اس کی رفتار کو بڑھا کر 300 براک ہارس پاور تک کردیا۔ اب آپ کسی بھی عام پیٹرول پمپ پر جا کر اپنے T-51 موستنگ میں پیٹرول ڈلواسکتے ہیں لیکن اگر 100 اوکٹین دستیاب ہو تو کیا ہی بات ہے۔

T-51 جہاز کی کٹ کے جسے آپ خرید کر خود بنا سکتے ہیں۔ اس کے لیے ٹائٹن آپ کو مدد بھی فراہم کرتا ہے۔ مارکیٹ میں دستیاب اس طرز کے دیگر جہازوں سے موازنہ کریں تو یہ قیمت میں مناسب لگتا ہے۔ 3 ہزار فٹ کی بلندی پر 150 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے جب آپ ہواؤں سے باتیں کریں گے تو بس سمجھیے قیمت تو وصول ہو ہی گئی!

Honda Odyssey Engine

Top