ہیونڈائی نشاط 2020ء میں مقامی طور پر اسمبل شدہ گاڑیاں لانچ کرنے کا منصوبہ بناتا ہوا

feat2-640x360

ہیونڈائی نشاط موٹر 2020ء کی پہلی سہ ماہی کے اختتام (مارچ) تک اپنی مقامی طور پر اسمبل شدہ گاڑی جاری کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے۔ یہ ادارے کے آپریشنل منصوبوں سے معلوم ہوا ہے جو ادارے نے فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ ڈیولپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی کو پیش کیے ہیں۔

ہیونڈائی نے اپنے اسمبلی پلانٹ کی تعمیر کے لیے فیصل آباد انڈسٹریل زون میں 66 ایکڑ زمین حاصل کی ہے۔ فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ ڈیولپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی، یا FIEDMC، اس صنعتی زون کی نگرانی کرتی ہے جس میں ہیونڈائی اپنا کارخانہ لگا رہا ہے۔

مقامی ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے FIEDMC کے COO عامر سلیمی نے کہا کہ

“ادارہ اپنے پہلے سال میں 7,000 یونٹس کی پیداوار کا منصوبہ رکھتا ہے۔”

جناب سلیمی نے مزید کہا کہ

“جاپان کا غلبہ رکھنے والا صنعت اب تبدیلی دیکھنے کے لیے تیار ہے۔ ہیونڈائی گاڑیاں مارچ 2020ء میں جاری کی جائیں گی۔”

آٹو ڈیولپمنٹ پالیسی 2016-21ء نے غیر ملکی آٹو میکرز کو پاکستان میں اپنے کاروبار شروع کرنے پر حوصلہ افزائی دی۔ پاکستان پر اس وقت جاپانی اسمبلرز کا غلبہ ہے، چاہے معاملہ کاروں کا ہو یا موٹر سائیکلوں کا۔ حال ہی میں کِیا لکی موٹرز نے کِیا K2700 اور گرینڈ کارنیول لانچ کیں اور اپنی لائن اپ میں مزید گاڑیاں لانے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے۔ فرانسیسی آٹومیکر رینو (رینالٹ) ایک اور ادارہ ہے جو پاکستان میں اپنی گاڑیاں لانچ کرنے کے لیے متحرک انداز میں کام کر رہا ہے۔

آپ اس بارے میں کیا سمجھتے ہیں نیچے تبصروں میں ضرور بتائیے۔


Writing about cars and stuff.

Top