سانتا فی پاکستان میں بمقابلہ سانتا فی باقی دنیا میں


ہیونڈائی نشاط موٹر (پرائیوٹ) لمیٹڈ نے نئی سانتا فی پیش کردی ہے؛ جسے ایک بڑی کامیابی قرار دیا جا سکتا ہے، کم از کم پاکستان میں آٹوموبائل انڈسٹری میں تو ضرور۔اسپورٹس یوٹیلٹی وہیکل (SUV) کی رونمائی ہیونڈائی کی جانب سے پاکستان کے پہلے ڈجیٹل شوروم کی افتتاحی تقریب میں کی گئی۔ تفصیلات سے قبل جلدی سے دیکھ لیتے ہیں کہ ہیونڈائی پاکستان میں اپنی سانتا فی میں کیا کچھ پیش کررہا ہے۔ 

سانتا فی کو یہ نام نیو میکسیکو کے ایک شہر پر دیا گیا ہے جسے پہلی بار 2000ء میں متعارف کروایا گیا تھا۔ SUV کی چوتھی جنریشن 2018ء میں دنیا بھر کی آٹوموبائل مارکیٹوں تک کامیابی سے پہنچی، جسے پاکستان میں ہیونڈائی نشاط موٹرز نے 2019ء ماڈل کے طور پر متعارف کروایا۔ چوتھی جنریشن کی سانتا فی ایک دو قطاروں والی SUV ہے جو امریکا میں 7 مختلف ویرینٹس میں پیش کی گئی جبکہ ان میں سے تین یورپ میں متعارف کروائے گئے۔ البتہ پاکستان میں صرف ایک ویرینٹ پیش کیا جا رہا ہے۔ 

سانتا فی کی خصوصیات اور تفصیلات یہاں دیکھیں 

پاور ٹرین: 

اس SUV کے اندر 2.4 لیٹر (2359cc) کا MPI ایٹکنسن سائیکل انجن ہے جو 6000 rpm پر 172hp اور 4000rpm پر 225 Nm ٹارک پیدا کرتا ہے۔ پاکستان میں متعارف کروایا گیا ویرینٹ 6-اسپیڈ آٹو ٹرانسمیشن مع پیڈل شفٹرز ہے جو گیئر تبدیل کرنے کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے آرام فراہم کرتا ہے۔ آل-ویل-ڈرائیو (AWD) سانتا فی ہیونڈائی کے انٹیلی جنٹ ٹریکشن کنٹرول سسٹم (HTRAC) سے بھی لیس ہے جو ڈرائیور کے لیے زیادہ سے زیادہ ٹریکشن فراہم کرتا ہے، چاہے سڑک کی حالت کیسی بھی ہو۔ 190 کلومیٹر فی گھنٹہ کی زیادہ سے زیادہ رفتار کے ساتھ سانتا فی ایک یقینی انتخاب ہے۔ 

اگر ہم باقی دنیا کی بات کریں تو امریکا میں سانتا فی کے پیش کردہ ویرینٹس کچھ یہ ہیں: 

  • سانتا فی SE 185 hp، 2.4 لیٹر 4-سلنڈر انجن 
  • سانتا فی SEL 185 hp 2.4 لیٹر 4-سلنڈر انجن 
  • سانتا فی SEL پلس 185 hp، 2.4 لیٹر 4-سلنڈر انجن 
  • سانتا فی لمیٹڈ 185 hp، 2.4 لیٹر 4-سلنڈر انجن 
  • سانتا فی لمیٹڈ 2.0 لیٹر ، 235 hp، 2.0 لیٹر ٹربو GDI DOHC 4-سلنڈر انجن 
  • سانتا فی الٹیمیٹ 185 hp، 2.4 لیٹر 4-سلنڈر انجن
  • سانتا فی الٹیمیٹ 2.0 لیٹر ، 235 hp، ٹربو GDI DOHC 4-سلنڈر انجن 

ہیونڈائی آسٹریلیا میں سانتا فی کے درج ذیل ورژنز پیش کرتا ہے 

  • سانتا فی ایکٹو 2.4 لیٹر GDi AWD
  • سانتا فی ایکٹو 2.2 لیٹر CRDi AWD ٹربو ڈیزل 
  • سانتا فی ایلیٹ 2.4 لیٹر CRDi AWD 
  • سانتا فی ہائی لینڈر 2.4 لیٹر CRDi AWD 

بھارت میں سانتا فی 3 ویرینٹس میں آتی ہے: 

  • سانتا فی CRDi 194 HP، 2.2 لیٹر 2WD ڈیزل انجن 
  • سانتا فی CRDi 194 HP، 2.2 لیٹر 2WD ڈیزل (آٹومیٹک) 
  • سانتا فی CRDi ، 2.2 لیٹر 4WD ڈیزل انجن 

ایکسٹیریئر: 

آئیے گاڑی کی پیمائش سے سے آغاز کرتے ہیں۔ نئی SUV سات نشستوں کی ایک گاڑی ہے جو 4770 ملی میٹر کی لمبائی اور 1890 ملی میٹر کی چوڑائی رکھتی ہے۔ سانتا فی کی بلندی 1705 ملی میٹر ہے جو 2765 ملی میٹر کی واضح ویل بیس رکھتی ہے۔ گاڑی میں 70 لیٹر ایندھن کی گنجائش رکھنے والا فیول ٹینک ہے جو طویل سفر کے لیے بھی کافی ہے۔ یہ گاڑی جارحانہ اور طاقت ور فرنٹ لُک کا ملاپ رکھتی ہے جو ڈے ٹائم رننگ لائٹس کے فیچرز کے ستھ ہموار لیکن اسٹائلش LED پروجیکشن ہیڈلیمپ کے ساتھ ہے۔ 

فرنٹ ریڈی ایٹر گرِل سیاہ اور کروم کوٹنگ کا ملاپ ہے جس کے وسط میں ہیونڈائی کا لوگو لگا ہوا ہے۔ فوگ لائٹس ہیڈلیمپس کے نیچےٹو-ٹون فرنٹ بمپر کے اندر دیے گئے ہیں جو گاڑی کی خوبصورتی میں اضافہ کرتے ہیں۔ مزید یہ کہ ٹرن سگنلز سائیڈ مررز میں موجود ہیں جو خود الیکٹریکلی ایڈجسٹ ایبل اور ری ٹریکٹ ایبل ہیں۔ ہیونڈائی پچھلے حصے میں بھی اسی ڈیزائن انداز کی پیروی کی ہے کہ جہاں ٹو-ٹون بمپر گاڑی کو اعلیٰ درجے کا منظر دیتا ہے۔ پیچھے نصب LED لیمپس زبردست اضافہ ہے جن کے درمیان کروم گارنش ہے۔ پیچھے نچلے حصے میں فوگ لیمپس بھی نصب ہیں۔ مزید یہ کہ SUV پچھلی اسکرین پر وائپرز اور ایک ہائی ماؤنٹ اسٹاپ لیمپس رکھنے والے اسپائلر کی بھی حامل ہے۔سانتا فی اسٹائلش الائے رِمز رکھتی ہے جن میں ٹائر کا سائز 235/55 R19 ہے۔ 

دنیا کے دوسرے حصوں میں فروخت ہونے والی SUV بھی تقریباً یہی پیمائش رکھتی ہے، بس ویرینٹ کی بنیاد پر معمولی تبدیلیاں ہیں۔ پاکستان میں متعارف کروائی گئی گاڑی ان اپ گریڈ شدہ ایکسٹیریئر فیچرز کی حامل ہے جو دنیا بھر میں دستیاب سانتا فی کے بہترین ویرینٹ میں موجود ہیں۔ 

انٹیریئر: 

جنوبی کوریائی ادارے سے جو توقعات ہیں ان کے عین مطابق اس SUV کا انٹیریئر بھی شاندار ہے۔ سب سے پہلے جب آپ گاڑی میں داخل ہوتے ہیں تو آپ کو کشادہ کیبن کا احساس ہوتا ہے جس کی وجہ ہیونڈائی کی فراہم کردہ پینورامک سن رُوف ہے ۔ 

سانتا فی کا مثالی ڈیش بورڈ اپنے ہلکے رنگ کی وجہ سے آنکھوں کے لیے بہت آرام دہ ہے۔ کشادہ انٹیریئر آرام دہ سیٹوں کے ساتھ ہے جو مل کر آپ کے سفر کو بہت خوشگوار بنا دیتے ہیں۔ یہ گاڑی اسٹیئرنگ ویل ایڈجسٹمنٹ بھی رکھتی ہے،یعنی ڈرائیور اسے اپنے حساب سے اوپر نیچے کر سکتا ہے یا ٹیلی اسکوپک ایڈجسٹمنٹ بھی موجود ہے۔ ڈرائیور کے بیٹھنے کے آرام دہ انداز کو ذہن میں رکھتے ہوئے ڈرائیور کی سیٹ میں قابلِ ذکر لمبر سپورٹ موجود ہے۔ مزید برآں ڈرائیور کی نشست الیکٹریکلی کنٹرولڈ بھی ہے جسے ننھی الیکٹرک موٹرز کی مدد سے ایک سوئچ کے ذریعے کی جا سکتی ہے۔ اس گاڑی کا ایک اور دلچسپ فیچر آٹومیٹک رین سینسر ہے، جو بارش کی صورت میں وِنڈ اسکرین کے وائپرز کو خودکار طور پر چلا دیتا ہے۔ سانتا فی کا گلَو باکس بھی خودکار طور پر ٹھنڈا ہوتا ہے اور فرنٹ پرسنل لیمپ بھی نصب ہے۔ گاڑی ایک سینٹرل ڈور لاکنگ سسٹم اور کی لیس انٹری مع اموبیلائزر رکھتی ہے۔ مزید برآں، یہ تین قسم کے ڈرائیونگ تجربات کے کنٹرولز دیتی ہے: کمفرٹ، ایکو اور اسپورٹس جو ڈرائیور اپنی سہولت کے مطابق اختیار کر سکتا ہے۔ 

کنیکٹیوِٹی: 

کنیکٹیوِٹی کے سلسلے میں یہ SUV جدید ٹیکنالوجی جیسا کہ USB، AUX، BT، CD اور یہاں تک کہ voice recognition یعنی آواز پہچاننے کی ٹیکنالوجی سے بھی لیس ہے۔ اینڈرائیڈ آٹو اور ایپل کار پلے سے مطابقت رکھنے والا ہائی کوالٹی 7 انچ ٹچ اسکرین انفوٹینمنٹ سسٹم بھی اس SUV میں لگایا گیا ہے۔ سانتا فی کا انسٹرومنٹ کلسٹر اینالوگ RPM میٹر مع فیول اور ہیٹ گیج رکھتا ہے ۔ درمیان میں ایک اور 7 انچ کی TFT LCD ہے جو گاڑی کی رفتار سمیت دیگر اہم معلومات دیتی ہے۔ 

امریکا میں پیش کیا گیا ماڈل ڈیوائس چارجنگ پیڈ بھی فراہم کرتا ہے جو فون کو بغیر کسی تار کے باآسانی چارج کرنے کی سہولت دیتا ہے۔ ایک ہیڈ اَپ ڈسپلے بھی عین اسی جگہ موجود ہے جہاں ڈرائیور چاہتا ہے۔ یہ فیچر رفتار سمیت تمام ضروری ریئل ٹائم انفارمیشن اسٹیئرنگ ویل کے عین اوپر دیتا ہے۔ یہ ایک دلچسپ فیچر ہے جس کی مدد سے ڈرائیور کو سڑک پر سے آنکھیں ہٹانے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ 

سیفٹی فیچرز: 

آٹومینوفیکچرر نے پاکستان میں متعارف کردہ سانتا فی میں جدید سیفٹی فیچرز کی موجودگی کو یقینی بنایا ہے۔ دو SRS ایئربیگز اگلے حصے میں، ایک ڈرائیور اور ایک مسافر کے لیے موجود ہے۔ اگلے اور پچھلے دونوں پہیے ڈسک بریکس سے لیس ہیں جو کسی بھی تصادم سے بچنے کے لیے بریکنگ تجربے کو بہتر بناتے ہیں۔ مزید برآں، پارکنگ گائیڈلائنز رکھنے والے بیک ویو کیمرے کے ساتھ ABS، ESC، HAC، DBC اور EPB جیسے فیچرز بھی موجود ہیں۔ ایک پارکنگ سینسر بھی اس SUV میں انسٹال کیا گیا ہے تاکہ محفوظ اور درست پارکنگ کو یقینی بنایا جائے۔ بلاشبہ ہیونڈائی کی سانتا فی اسٹائل، آرام، سہولت اور حفاظت کا زبردست ملاپ ہے۔ یہ شوخ اور ہائی-ٹیک SUV ایک مکمل فیملی یونٹ ہے۔ 

جنوبی کوریائی آٹومینوفیکچرر کی سانتا فی امریکا کی آٹوموبائل مارکیٹ میں مزید سیفٹی فیچرز کے ساتھ دستیاب ہے ۔ ان میں سے چند یہ ہیں: 

  • فارورڈ کولیژن اوائیڈنس اسسٹ مع پیڈسٹیرین ڈٹیکشن 
  • بلائنڈ-اسپاٹ کولیژن وارننگ 
  • لین کیپنگ اسسٹ فیچر 

مندرجہ بالا سیفٹی فیچرز ڈرائیور کو اپنے اردگرد سے ہوشیار رکھنے میں مدد دیتے ہیں کیونکہ اگر گاڑی سڑک پر کسی چیز کے قریب پہنچ جائے تو الارم بج اٹھتا ہے۔ لیکن یہ فیچرز پاکستان میں بہت زیادہ کارآمد نہیں ہوں گے کہ یہاں ٹریفک کا بہاؤ ہمیشہ ہی بہت قریب قریب ہوتا ہے۔ 

قیمت کا تقابل: 

ہیونڈائی نشاط موٹرز کے ایک عہدیدار کے مطابق سانتا فی کی قیمت 16 ملین روپے سے شروع ہوتی ہے جو ساڑھے 18 ملین روپے تک جاتی ہے۔ کیونکہ پاکستان میں سانتا فی کا صرف ایک ویرینٹ متعارف کروایا گیا ہے، اس لیے قیمت میں کمی بیشی صارفین کی جانب سے فیچرز کی شمولیت پر منحصر ہے۔ آئیے بات کرتے ہیں کہ اس SUV کی قیمت فراہم کردہ فیچرز کے مطابق جائو ہے یا نہیں۔ جیسا کہ ہم نے پہلے بتایا کہ امریکا میں سانتا فی 7، آسٹریلیا میں 4 اور یورپ اور بھارت میں تین مختلف ویرینٹس میں آتی ہے۔ ان مختلف ویرینٹس کا ذکر پہلے ہی اس مضمون میں ہو چکا ہے۔ اگلی چیز ہے قیمت کہ پاکستان میں پیش کردہ ایک ویرنٹ کے مقابلے میں یہ یہ ویرینٹس ان ممالک میں کس قیمت پر فراہم کیے گئے ہیں۔ متحدہ عرب امارات میں سانتا فی 3.3 سے 4.9 ملین پاکستانی روپے کے درمیان آتی ہے۔ امریکا میں پیش کردہ 7 ویرینٹس کی قیمت 3.4 سے 4.9 ملین پاکستانی روپے ہے جبکہ اس کی لاگت ہمارے پڑوسی ملک بھارت میں 6.1 ملین پاکستانی روپے ہے۔ آسٹریلیا میں اس SUV کی قیمت 4.3 سے 6 ملین روپے کے درمیان ہے۔ 

دنیا بھر میں بننے والے سانتا فی کے یہ ویرینٹس پاکستان میں متعارف کردہ ویرینٹ سے زیادہ یا اس جتنے ہی فیچرز رکھتے ہیں۔ البتہ نئی SUV پاکستان میں تقریباً 3 گنا مہنگی ہے جس کا اندازہ ہم دیگر ملکوں کے مقابلے میں قیمتوں سے لگا سکتے ہیں، میری رائے میں یہ قیمت کسی بھی طرح جائز نہیں۔ البتہ سانتا فی اس وقت پاکستان میں نہیں بنائی جا رہی ہے اور completely built unit یعنی CBU کی حیثیت سے آتی ہے اور اس پر تمام اضافی کسٹمز ڈیوٹیز اور ٹیکس لگتے ہیں۔ ہیونڈائی نشاط موٹرز کو مقامی مارکیٹ میں آگے رہنے کے لیے اس معاملے پر گہری نگاہ رکھنا ہوگی۔ ماضی کے مقابلے میں اب ممکنہ خریداروں کے پاس کئی آپشنز موجود ہیں کیونکہ کئی نئے ادارے پاکستان کی آٹوموبائل انڈسٹری میں آ چکے ہیں۔ 

حال ہی میں پاکستان میں متعارف کرائی گئی ہیونڈائی سانتا فی کے بارے میں آپ کی رائے کیا ہے؟ ہمیں تبصروں میں ضرور بتائیں۔ آٹوموبائل انڈسٹری کی مزید خبروں کے لیے پاک ویلز پر آتے رہیے۔


Google App Store App Store

Apart from being an Electrical Engineer by profession, he is an automotive content writer at PakWheels, a web designer and a photographer.

Top