جیمز بونڈ 007 کی نئی فلم میں اربوں روپے کی گاڑیاں تباہ

aston-db10

اگر آپ یہ تحریر پڑھ رہے ہیں تو اس کا مطلب ہوا کہ آپ نہ تو نونہال ہیں اور نہ ہی غاروں میں رہنے والی مخلوق۔ اس لیے میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ آپ نے جیمز بونڈ کا نام ضرور سنا ہوگا۔ اس تصوراتی جاسوس کا شمار گذشتہ پچاس دہائیوں سے ہالی ووڈ پر راج کرنے والے کرداروں میں کیا جاتا ہے۔ یہ نہ صرف مغرب بلکہ مشرقی ممالک جیسے پاکستان اور بھارت میں بھی یکساں مقبول ہیں۔

جیمز بونڈ فلموں کو گاڑیوں کے شوقین افراد میں خاص مقبولیت حاصل ہے ۔ اس کی وجہ فلم میں برطانو ی کارساز ادارے آسٹن مارٹن کی جدید ترین اور منفرد گاڑیاں ہیں۔ نئی فلم اسپیکٹر (Spectre) میں بھی جیمز بونڈ کے زیر استعمال اسی ادارے کی گاڑیاں دکھائی گئی ہیں جنہیں آسٹن مارٹن DB10 کا نام دیا گیا ہے۔ یہ گاڑی آسٹن مارٹن4700 سی سی V8 انجن کی حامل ہے۔ گو کہ جیمز بونڈ کی نئی گاڑی کا انجن اپنی گھن گرج کی وجہ سے مشہور ہے لیکن رفتار میں بھی یہ کسی سے کم نہیں۔ صرف 4.7 سیکنڈز میں یہ انجن 0 سے 60 میل فی گھنٹہ کی رفتار پر پہنچا سکتا ہے جبکہ اس کی حد 190 میل فی گھنٹہ ہے۔ اس سے آپ بخوبی اندازہ لگا سکتے ہیں کہ گاڑی کی قیمت کیا ہوگی۔

حیرت انگیز بات یہ ہے کہ اسپیکٹر کے ہدایتکار نے محض ایک سین فلمانے کے لیے دیگر گاڑیوں کے ساتھ دس آسٹن مارٹن DB10 کو بھی دھماکے سے اڑا دیا۔ ان گاڑیوں کی کُل مالیت 37 ملین امریکی ڈالرز ہے جو پاکستانی روپے میں 3 ارب 86 کروڑ 53 لاکھ 90 ہزار بنتی ہے۔ فلم کے معاون ہدایتکار گیری پاؤل نے کہا کہ

ہم نے اطالیہ کے دارالحکومت روم میں لاکھوں ڈالر مالیت کی گاڑیاں پھونک دیں جو ایک ریکارڈ ہے۔ یہ گاڑیاں 110 میل فی گھنٹی کی رفتار سے روم میں جا رہی تھیں تبھی انہیں حقیقت میں اڑا دیا گیا۔ چار سیکنڈز پر مشتمل اس سین کے لیے ہمیں پوری رات کام کرنا پڑا۔

جیمز بونڈ کی نئی فلم آئندہ ماہ آنے والی ہے جس میں یہ کردار ڈینیل کریگ نے ادا کیا ہے۔ امید کی جا رہی ہے کہ ماضی کی طرح اس بار بھی جیمز بونڈ باکس آفس میں اتھل پتھل مچا دے گا۔جیمز بونڈ سیریز کی یہ فلم برطانیہ میں رواں ماہ کی 26 تاریخ کو پیش کی جائے گی جبکہ امریکا سمیت دیگر ممالک میں 6 نومبر کو ریلیز کی جائے گی۔

DB10

Silver_jaguar_c-x75

landscape-1430746153-bond

Top