مارک مارکیز کا دلچسپ کارنامہ؛ ادھار کی موٹر سائیکل سے ریس ٹریک پر واپسی

Marc Marquez Crash Steals a scooter

کیا آپ نے کسی موٹو جی پی میں شریک موٹرسائیکل سوار کو عام گھریلو بائیک پر ریس کے لیے دوڑتا ہوا دیکھا ہے؟ اگر اب تک ایسا نہیں دیکھا تو مارک مارکیز کا نیا کارنامہ ملاحظہ فرمائیں۔ یہ وہی مارک مارکیز ہیں جو 2015 موٹو جی پی ورلڈ چیمپین میں تیسرے نمبر پر آئے تھے۔ یہ واقعہ ہفتے کے روز اس وقت پیش آیا کہ جب مارک مارکیز نے فری پریکٹس 3 میں دوسرے اور فری پریکٹس 4 میں پہلے نمبر پر آنے کے بعد اگلی ریس میں موٹر سائیکل دوڑا رہے تھے۔ اس دوران برسات کے باعث ریس ٹریک پر موٹر سائیکل چلانے میں شدید مشکلات پیش آئیں اور پھر وہ ہوا جس کی کسی کو توقع نہ تھی۔

فلائینگ لیپ کے دوران مارک مارکیز آٹھویں نمبر پر اپنی منزل کی جانب رواں دواں تھے کہ اچانک موٹر سائیکل پر ان کی گرفت کمزور ہوگئی اور وہ اپنا توازن برقرار نہ رکھ سکے۔ لیکن دلچسپ اور مضحکہ خیز مناظر اس وقت دیکھنے کو ملا کہ جب موٹر سائیکل سمیت زمین پر گرنے کے بعد مار مارکیز نے ریس ٹریک کے ساتھ موجود سروس روڈ کی طرف دوڑ لگا دی اور وہاں کھڑی موٹر سائیکل میں چابی گھما کر یہ جا وہ جا۔ مارک مختلف گلیوں اور نکڑوں سے ہوتے ہوئے اسی موٹر سائیکل پر دوبارہ اپنے کیمپ پہنچے تاکہ ریس میں دوبارہ حصہ لے سکیں۔

یہ بھی دیکھیں: ڈرائیور اپنی گاڑی آٹو پائلٹ پر منتقل کر کے سو گیا

مارک مارکیز نے اس واقعے کو بیان کرتے ہوئے کہا کہ جہاں میں اور میری موٹر سائیکل گرے خوش قسمتی سے وہاں سے کچھ فاصلے پر مجھے ایک موٹر سائیکل نظر آگئی۔ اس موٹر سائیکل کے آس پاس کوئی موجود نہ تھا لیکن چابی اپنی جگہ لگی ہوئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ وہ فوراً اس جانب دوڑ پڑے اور قریب جا کر علم ہوا کہ وہ ایک موٹر سائیکل ایک فوٹو گرافر کی ہے۔ مارک نے وہاں موجود فوٹو گرافر سے اجازت لی اور اپنا ہیلمٹ درست کر کے روانہ ہوگئے۔ اس حوالے سے مارک نے یہ بھی کہا کہ اگر وہ فوٹو گرافر اجازت نہ بھی دیتا تو وہ موٹر سائیکل بھگا لے جاتے کیوں کہ اپنے کیمپ تک پہنچنا ان کے لیے ازحد ضروری تھا۔

اپنے کیمپ میں واپسی کے بعد مارک نے ایک بار پھر ریس میں حصہ لیا اور چوتھے نمبر پر آئے۔ اس دلچسپ واقعے کی ریکارڈنگ ذیل میں دیکھی جاسکتی ہے:


Google App Store App Store
Adan Ali

Adan is a Rising Journalism Sophomore at Northwestern University, with an inclination towards non-political investigative journalism and advertising. He is currently serving as a Research Assistant for the Arab World’s first media museum, The Media Majlis and an Admissions Diplomat at NU-Q. Adan comes with an experience of almost three years in the field of media creation, alongside Dawn, Parhlo, PakWheels, and The Daily Q occupying the roles of an Intern, Guest Writer, and Staff Reporter. Formerly, Adan has served as a Founder and CEO of The Nixor Times, a media and advertising company, besides which, he has offered his services as a Member of Board at Nixor Corporate. He tweets @adanali12 and runs a channel on YouTube.

Top