مرسڈیز بھی برقی گاڑیوں کے میدان میں؛ ٹیسلا کا مقابلہ کرنے کے لیے پُرعزم

mercedes-benz-electric-concept

برقی گاڑی کا ذکر آتے ہی ذہن میں آنے والا پہلا نام ٹیسلا موٹرز کا ہوتا ہے۔ گو کہ گزشتہ دنوں ہونے والے چند افسوسناک واقعات کی وجہ سے امریکی ادارہ اور اس کے سربراہ ایلون مُسک کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے تاہم اس بات میں کوئی دو رائے نہیں کہ ٹیسلا موٹرز نے گاڑیوں کے شعبے میں ایک نئی جہت کی بنیاد رکھنے میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج نہ صرف مغرب بلکہ مشرقی ممالک میں بھی ٹیسلا موٹرز کو ایک معتبر مقام حاصل ہے۔ اس وقت بہت سے دیگر کار ساز ادارے بشمول شیورلیٹ، نسان اور ہیونڈائی بھی بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کی تیاری میں مصروف ہیں لیکن اس کے باوجود یہ ٹیسلا کی جدت اور صلاحیت کے عشر عشیر بھی نہیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ٹیسلا ماڈل 3 کی بھارت آمد کی تصدیق؛ قیمت کا بھی اعلان کردیا گیا

برقی گاڑیوں میں لوگوں کی بڑھتی ہوئی دلچسپی دیکھتے ہوئے اب جرمن کار ساز ادارے مرسڈیز – بینز نے بھی اس میدان میں قدم جمانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ اس ضمن میں جرمن ادارے کی نئی کاوش رواں سال ستمبر میں ہونے والے پیرس موٹر شو 2016 میں دکھائی جائے گی۔گاڑیوں کے شعبے میں گردش کرنے والی مختلف اطلاعات کے مطابق مرسڈیز 4 پہیوں کی قوت سے چلنے والی برقی سیڈان متعارف کروانے کی تیاری کرچکا ہے۔ ایسی بھی خبریں ہیں کہ بجلی سے چلنے والی یہ مرسڈیز سیڈان ایک بار مکمل چارجنگ کے بعد 300 میل تک سفر کرسکے گی جو ٹیسلا ماڈل S سے بھی زیادہ ہے۔ ایک اندازے کے مطابق مرسڈیز کی پہلی برقی سیڈان سال 2018 میں فروخت کے لیے پیش کی جائے گی اور اس کی قیمت 2 لاکھ ڈالر ہوگی۔

یاد رہے کہ اس وقت مرسڈیز (Mercedes-Benz) بی-کلاس EV اور دو نشستوں والی فورٹو ED کے نام سے 2 برقی گاڑیاں پیش کر رہا ہے۔ تاہم یہ دونوں چھوٹی گاڑیاں ٹیسلا کی پُرتعیش گاڑیوں مثلاً ماڈل S سے مسابقت کے قابل نہیں سمجھی جاتیں۔ یہی وجہ ہے کہ مرسڈیز-بینز برقی گاڑیوں کی فہرست میں 2 نئی سیڈان اور 2 نئی SUVs کی مدد سے پیش رفت کرنا چاہتا ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ امریکی ادارہ ٹیسلا موٹرز اپنے نئے حریف سے نمٹنے کے لیے کیا حکمت عملی اپناتا ہے۔

Top