مسافر گاڑیوں کی فروخت میں 18 فیصد کی بدترین ماہ بہ ماہ کمی


جولائی میں فروخت میں 20 فیصد کے زبردست اضافے کے بعد گاڑیوں کی فروخت نے اگست 2018ء میں زوال کا رحجان دیکھا۔

PAMA کی جانب سے جاری کردہ اگست کے اعداد و شمار کے مطابق گاڑیوں کی فروخت ماہ بہ ماہ میں 18 فیصد کم ہوکر 15,389 تک گرگئی ہے۔ مزید برآں، سال بہ سال میں جائزہ لیں، تو مسافر گاڑیوں میں 17 فیصد کمی آئی ہے جو اگست 2017ء میں 18,664 سے کم ہوکر رواں سال اگست میں 15,389 ہوگئی ہیں۔ دوسری جانب، موٹر سائیکلوں اور تین پہیوں والی سواریوں کی فروخت بھی اگست 2018ء میں 6 فیصد کمی کے ساتھ 1,40,243 ہوئی۔

جولائی 2018ء میں 4 سے 5 ماہ کے زوال کے بعد فروخت میں 20 فیصد کا اضافہ ہوا تھا۔

اس بار کمی کی وجوہات کئی ہو سکتی ہیں، جیسا کہ مقامی مینوفیکچررز کی جانب سے قیمتوں میں مسلسل اضافہ، جس نے درمیانی آمدنی رکھنے والے افرادکے لیے باآسانی گاڑی خریدنا مشکل بنا دیا ہے، حج اور عید الاضحیٰ کی طویل تعطیلات، جنہوں نے کاروباری سرگرمی کو دھیما کیا یا پھر نان-فائلرز کے گاڑیاں خریدنے پر پابندی وغیرہ۔ البتہ ہمارے تجزیے کے مطابق کئی نئی گاڑیاں مارکیٹ میں آنے والی ہیں، لوگ کم قیمت میں دیگر آپشنز کا بھی استعمال کر رہے ہوں گے۔

PAMA Stats

1300cc اور اس سے زیادہ میں ٹویوٹا اگست 2018ء میں کرولا کے 4,204 یونٹس کے ساتھ سب سے آگے رہا۔ ہونڈا نے سٹی اور سوک کے مجموعی طور پر 3,469 یونٹس فروخت کیے جبکہ سوزوکی 355 سوئفٹ فروخت کر پایا۔

1000cc کیٹیگری میں سوزوکی کلٹس کی فروخت میں 16 فیصد کی ماہ بہ ماہ کمی آئی جس کے 1380 یونٹس فروخت ہوئے، دوسری جانب ویگن آر کی فروخت اگست 2018ء میں 11 فیصد کمی کے ساتھ 2450 یونٹس تک آن پہنچی۔

پاک سوزوکی نے مہران کی فروخت میں 32 فیصد کی زبردست کمی دیکھی جس کے اگست 2018ء میں 2318 یونٹس فروخت ہوئے۔ یہ گاڑی اپنے ایک مقاصد یونائیٹڈ براوو کے سامنے آنے کی وجہ سے اس وقت خبروں میں ہے، جو خود بھی 800cc کے زمرے میں مقامی سطح پر تیار کردہ ہیچ بیک ہے۔

مسلسل زوال کے رحجان کو توڑتے ہوئے 4×4 اور 4×2 کیٹیگریز 17 فیصد ماہ بہ ماہ اضافے کے ساتھ 696 یونٹس تک جا پہنچیں۔ البتہ انفرادی طور پر ٹویوٹا فورچیونر کے 7 فیصد کمی کے ساتھ 204 یونٹس فروخت ہوئے اور BR-V کی فروخت 32 فیصد اضافے کے ساتھ اگست 2018ء میں 492 یونٹس تک پہنچی۔

passenger cars

جیسا کہ اوپر بتایا گیا کہ موٹر سائیکل کے شعبے نے ایک مرتبہ پھر زوال دیکھا کہ جس میں تمام چاروں موٹر سائیکل بنانے والوں نے کم فروخت دیکھیں۔ ہونڈا موٹر سائیکلوں کی فروخت 80,012 یونٹس کے ساتھ 11 فیصد کم ہوئی، سوزوکی موٹر سائیکلوں کی فروخت 3 فیصد کمی کے ساتھ 1837 یونٹس رہیں، یاماہا نے 2123 یونٹس فروخت کیے اور یونائیٹڈ موٹر سائیکلوں کی فروخت اگست 2018ء میں 6 فیصد کمی کے ساتھ 33,350 تک پہنچی اگر گزشتہ سال کے اسی مہینے کا مقابلہ کریں تو فروخت میں 13 فیصد کمی آئی ہے جو 1,35,133 یونٹس سے کم ہوکر اس سال 1,17,322 یونٹس تک پہنچ گئی ہے۔

اطلاع: یہ اعداد و شمار PAMA کی ویب سائٹ سے لیے گئے ہیں اور PakWheels ان اعداد و شمار میں کسی بھی تضاد کا ذمہ دار نہیں ہوگا۔


Top