ستمبر 2018ء میں گاڑیوں کی ماہ بہ ماہ فروخت میں 10 فیصد اضافہ


امریکی ڈالر کی طرح ملک میں گاڑیوں کی فروخت بھی اوپر نیچے ہو رہی ہے۔ گزشتہ ماہ کی طرح ستمبر 2018ء میں مسافر گاڑیوں کی فروخت میں ماہ بہ ماہ میں 8 فیصد اور گزشتہ سال کے اسی مہینے کے مقابلے میں 10 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

ہمارے تجزیے کے مطابق ستمبر میں فروخت ہونے والی گاڑیاں لازماً مارچ اور مئی 2018ء کے درمیان فروخت ہوئی ہوں گی (اگر ہم 3 سے 6 ماہ کے ڈلیوری ٹائم کو ذہن میں رکھیں) اور تب ایک امریکی ڈالر 115 روپے کا تھا، اس لیے بہت سارے افراد نے آئندہ مہینوں میں ڈالر کی قیمت میں اضافے کی توقع پر گاڑیاں بک کروائی ہوں گی۔

1300cc کی گاڑیوں کے زمرے میں سوزوکی اپنی سوئفٹ کے 454 یونٹوں کی فروخت کے ذریعے ماہ بہ ماہ 27 فیصد اضافے کے ساتھ سب سے آگے رہا۔ اس کے بعد ہونڈا ہے جس نے اپنی سٹی اور سوک کی فروخت میں 17 فیصد اضافہ کیا اور کل 4083 یونٹس فروخت کیے۔ ٹویوٹا کرول کی فروخت صرف 5 فیصد بڑھ کر ستمبر 2018ء میں 4426 یونٹوں تک پہنچی۔

1000cc کے زمرے میں سوزوکی کلٹس کی فروخت 29 فیصد ماہ بہ ماہ اضافے کے ساتھ 1788 یونٹوں کی فروخت تک پہنچی۔ دوسری جانب سوزوکی ویگن آر کے 2667 یونٹ ستمبر میں 8 فیصد اضافے کے ساتھ فروخت ہوئے۔

مزید برآں سوزوکی مہران کی فروخت 2320 یونٹوں کی فروخت کے ساتھ سال بہ سال میں کم ہوئی ہے جس کے ستمبر 2017ء میں 3690 یونٹس فروخت ہوئے تھے بلکہ ماہ بہ ماہ میں بھی اس میں زوال ہی آیا ہے کیونکہ مہران کی فروخت ستمبر 2018ء میں مجموعی فروخت میں صرف 0.8 فیصد اضافہ کر سکی۔

دوسری جانب، ٹرکوں اور بسوں کی فروخت میں بالترتیب -12 فیصد اور -53 فیصد ماہ بہ ماہ کمی آئی ہے۔ اور پک اپس اور ٹریکٹروں کی فروخت میں بالترتیب 12 اور 43 فیصد ماہ بہ ماہ کمی آئی ہے۔

آگے دیکھیں تو 4×4 اور 4×2 کیٹیگری میں ٹویوٹا فورچیونر اور ہونڈا BR-V نے ماہ بہ ماہ اور سال بہ سال دونوں میں بڑی کمی دیکھی ہے۔

مسافر گاڑیوں کی طرح موٹر سائیکلوں کی فروخت میں بھی زبردست اضافہ ہوا ہے۔ اٹلس ہونڈا نے ماہ بہ ماہ میں 19 فیصد اضافے کے ساتھ 95,224 یونٹس فروخت کیے۔ سوزوکی موٹر سائیکلوں کی فروخت میں صرف 2.6 فیصد اضافہ ہوا جس کے ساتھ ستمبر 2018ء میں 1922 یونٹس فروخت ہوئے۔ دوسری جانب یاماہا کی فروخت 5 فیصد کمی کے ساتھ 2003 یونٹس کی فروخت تک رہ گئی۔ یونائیٹڈ آٹوز کی فروخت ماہ بہ ماہ 21 فیصد اضافے کے ساتھ 40,654 یونٹس تک جا پہنچی۔

**اطلاع: یہ ڈیٹا PAMA کی ویب سائٹ سے لیا گیا ہے اور پاک ویلز اس ڈیٹا میں کسی بھی فرق کا ذمہ دار نہیں ہوگا۔


Notable Replies

  1. soka6 says:

    Kyonkae kutch din kae lia non filers per gari ki pabandi khatam ho gai thi .us waqt non filers nae huge amount main cars lain li aurregister karwa li . October main ab phir jhatqa lagae ga automobile industry ya shaid na lagae .prices 3 lakh tak increase ho rahi ha

Post a Comment

Participants

Top