نادرمگسی ایک مرتبہ پھر جیت گئے!


میر نادر مگسی نے پریپئرڈ کیٹیگری A میں فاصلہ 04:30:35 منٹوں میں طے کرکے ایک مرتبہ پھر 14 ویں چولستان ڈیزرٹ ریلی 2019ء جیت لی ہے۔ پریپئرڈ کیٹیگری B میں اویس خاکوانی نے فاصلہ 04:54:22 میں طے کرکے کامیابی حاصل کی۔ پریپئرڈ C میں سید ظہیر حسین نے 05:16:37 میں مرحلہ جیتا اور ظفر بلوچ پریپئرڈ کیٹیگری D میں 05:31:01 میں ٹریک مکمل کرکے پہلا مقام حاصل کیا۔

پریپئرڈ کیٹیگری میں جیتنے والوں کی مکمل فہرست یہ ہے:

اسٹاک کیٹیگری A میں منصور حلیم سب سے اوپر رہے اور فاصلہ صرف 02:44:29 میں مکمل کرکے جیت گئے، جبکہ اسٹاک کیٹیگری B، C اور D میں صاحبزادہ بہادر، سید مبین احمد اور عمر کانجو نے اپنے مطلوبہ ٹریکس بالترتیب 02:51:39، 03:04:09اور 03:20:02 میں مکمل کیے۔ دوسری جانب ویمن اسٹاک کیٹیگری میں تشنا پٹیل نے فاصلہ 01:41:27 میں مکمل کرکے ریس جیتی۔

پاکستان کے لیے جرمن سفیر محترم مارٹن کوبلر نے وزیر اعلیٰ تعلیم و سیاحت، حکومت پنجاب راجا یاسر کے ساتھ مل کر ریس کا افتتاح کیا۔

نتائج یہاں دیکھیں:

*یہ نتائج RASE کی ویب سائٹ سے لیے گئے ہیں۔

ماؤنٹین ڈیو کے تعاون سے ٹؤراِزم ڈیولپمنٹ کارپوریشن آف پنجاب (TDCP) نے 14 سے 17 فروری 2019ء تک جوش و جذبے سے بھرپور 14 ویں چولستان ریلی 2019ء کا انعقاد کیا۔ یہ پاکستان کی سب سے بڑی جیپ ریلی ہے کہ جو ملک بھر سے مہمانوں اور ان کے خانہ کی توجہ اپنی جانب مبذول کرواتی ہے۔

ریلی نے پنجاب کے تین اضلاع رحیم یار خان، بہاولنگر اور بہاولپور کا احاطہ کیا ۔ اس ریلی کو جو چیز سب سے زیادہ اہم بناتی ہے وہ یہ کہ ملک بھر کے تجربہ کار ریسرز اس میں حصہ لیتے ہیں۔ 100 سے زیادہ جیپوں نے، جن میں تجربہ کار میر نادر علی خان مگسی اور صاحبزادہ سلطان محمد علی اور ديگر کی جیپیں شامل تھیں، اس ریس میں شریک رہیں۔ ریلی کا پہلا مرحلہ 220 کلومیٹر کا تھا جبکہ دوسرا مرحلہ 245 کلومیٹر کا۔

PakWheels.com سے بات کرتے ہوئے فیاض احمد، مینیجر ایونٹس TDCP نے خاص طور پر اس امر پر توجہ دلائی کہ جیپ ریلی ہونے کے ساتھ ساتھ یہ جنوبی پنجاب کی مقامی ثقافت کی ترویج کے لیے بھی ایک اہم ایونٹ ہے۔ انہوں نے خاص طور پر ناچی بکری کا حوالہ دیا جسے ضرور دیکھنا چاہیے کیونکہ یہ صرف چولستان میں پائی جاتی ہے۔

اس طرح کے ایونٹس بیرونی دنیا میں پاکستان کا مثبت اور سافٹ امیج پیش کرتے ہیں اور پاکستانیوں کے سامنے جنوبی پنجاب کا اصل حسن نمایاں کرتے ہیں۔ سیاحت کے فروغ کے ساتھ ایسے ایونٹس مقامی افراد کے روزگار کو بھی بہتر بناتے ہیں۔ چولستان جیپ ریلی 2005ءمیں شروع ہوئی اور اب تک کئی نشیب و فراز سے گزر چکی ہے۔ 14ویں چولستان جیپ ریلی اپنی نوعیت کے کسی بھی دوسرے ایونٹ سے مختلف ہے کیونکہ اس کی انعامی مالیت 50 لاکھ روپے ہے جو فاتحین میں تقسیم کیے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ شرکاء سے آتش بازی کا بھی خوب لطف لیا۔

ایونٹ کی خصوصی تصاویر کے لیے PakWheels.com پر آتے رہیے۔


Google App Store App Store

My name is M. Ali Laghari and I love to read and write about Cars.

Top