نیشنل ہائی وے اتھارٹی نے اپنی گاڑیاں نیلام کرکے 213 ملین روپے کما لیے


نیشنل ہائی وے اتھارٹی (NHA) نے اپنی 201 گاڑیاں نیلام کردی ہیں اور اس عمل کے ذریعے 213 ملین روپے کمائے ہیں۔

وزیر اعظم کی جانب سے ایوانِ وزیر اعظم کی عمدہ لگژری گاڑیوں کی نلامی کے اعلان کے بعد NHA سمیت ملک بھر کے کئی سرکاری محکموں نے اپنی گاڑیاں نیلام کرنے کا فیصلہ کیا۔ اتھارٹی نے نیلامی کا آغاز 15 اکتوبر کو کیا اور پورا عمل سوموار 5 نومبر 2018ء کو مکمل ہوا۔

حکومت کی جانب سے اقتدار سنبھالتے ہیں قومی خزانے پر بوجھ کم کرنے اور حکومت کی زیر استعمال اضافی گاڑیوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ وزیر اعظم نے ایوانِ وزیر اعظم کی گاڑیاں نیلام کرکے سادگی مہم کا آغاز کیا، ایوانِ وزیر اعظم کی گاڑیوں کی نیلامی کا حتمی مرحلہ اسلام آباد ڈرائی پورٹ، آئی-9، میں ماڈل کسٹمز کلیکٹوریٹ میں ہوگا۔ واضح رہے کہ ان سادگي مہمات سے حاصل ہونے والی قومی خزانے میں جا رہی ہے تاکہ عوام کے لیے فائدہ مند ہو۔

مزید یہ کہ حکومت قومی اسمبلی کی سات گاڑیاں نیلام کر چکی ہیں جن میں ایک موٹر سائیکل بھی شامل ہے اور اس سے 7,816,000 روپے بھی حاصل کر چکی ہے۔ تفصیلات کے مطابق نیلام کی گئی گاڑیوں میں مرسڈیز بینز، سوزوکی اور کرولا گاڑیاں اور ہونڈا 125 شامل ہیں۔

حکومت سندھ نے وہ گاڑیاں نیلام کرنے کا فیصلہ کیا جو 10 سال سے پرانی ہیں۔ مزید برآں، حکومت پنجاب نے بھی صوبائی حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ مختلف محکموں سے گاڑیوں کو قواعد و ضوابط کے تحت نیلام کرے۔ وفاقی حکومت سادگی مہم کے دوران 8 بھینسیں بھی نیلام کر چکی ہے اور 2.3 ملین روپے حاصل کیے۔

ان نیلامیوں کے بارے میں آپ کی کیا رائے ہے؛ کیا یہ ملکی معیشت کے لیے فائدہ مند ہے یا نہیں؟ اپنے خیالات نیچے تبصروں میں پیش کیجیے۔


My name is M. Ali Laghari and I love to read and write about Cars.

Top