NHA نے قومی شاہراہوں اور موٹرویز پر ٹول ٹیکس کے نرخ بڑھا دیے


2 اگست 2018ء سے نیشنل ہائی وے اتھارٹی (NHA) نے ملک بھر میں ٹول ٹیکس کے نرخ 10 فیصد تک بڑھا دیے ہیں؛ جس کی وجہ افراط زر کی شرح میں اضافہ اور ملک کے قومی اثاثوں کی مناسب دیکھ بھال کے لیے مزید فنڈز درکار ہونا بھی ہے۔ ہماری سڑکیں ملک کے کل سڑکوں کے جال کا صرف 4.6 فیصد ہیں، لیکن 80 فیصد سے زیادہ ٹریفک انہی پر چلتا ہے۔

ٹول ٹیکس کے نرخوں پر نظرثانی کا فیصلہ NHA اجلاس میں کیا گیا، جس کی صدارت چیئرمین جاوید رفیق نے کی۔ نئے ٹیکسز اتھارٹی کو 5 ارب روپے کی اضافی آمدنی دیں گے جو قومی شاہراہوں اور موٹرویز کی دیکھ بھال پر استعمال کی جائے گی۔ واضح رہے کہ NHA نے 2017ء اور 2018ء کے درمیان ٹول کی صورت میں 25 ارب روپے کی آمدنی حاصل کی تھی۔

مختلف راستوں پر کاروں کے لیے نیا ٹول ٹیکس کچھ یوں ہے:

خانیوال-ملتان: ٹول ٹٹیکس 80 روپے سے بڑھا کر 90 روپے کردیا گیا ہے۔ ٹول ٹیکس میں 10 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔

پنڈی بھٹیاں-فیصل آباد-گوجرہ: 180 روپے سے بڑھا کر 200 روپے کردیا گیا ہے۔

اسلام آباد-پشاور: 210 روپے سے بڑھا کر 240 روپے کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ الیکٹرانک ٹول کلیکشن کے اجراء کے بعد نقد ادائیگی کرنے والے کار، ویگن، منی بس مالکان کو  20 روپے سرچارج بھی دینا ہوں گے۔

12 نشستوں والی اور 13 سے 24 نشستیں رکھنے والی ویگنوں کے ٹیکس نرخ مندرجہ ذیل ہیں:

ویگن 12 نشستوں تک

خانیوال-ملتان: 130 روپے سے بڑھا کر 150 روپے۔

پنڈی بھٹیاں-فیصل آباد-گوجرہ: 260 روپے سے بڑھا کر 290 روپے۔

اسلام آباد-پشاور: 350 روپے سے بڑھا کر 400 روپے۔

13 سے 24 نشستوں والی ویگن/کوسٹر/منی بس

خانیوال-ملتان: ٹول 180 روپے سے 200 روپے کردیا گیا۔

پنڈی بھٹیاں-فیصل آباد-گوجرہ: 380 روپے سے بڑھا کر 430 روپے۔

اسلام آباد-پشاور: پرانے نرخ 490 روپے تھے، جنہیں بڑھا کر 550 روپے کردیا گیا ہے۔

ٹرکوں کے ٹول نرخ درج ذیل ہیں:

خانیوال-ملتان: اتھارٹی نے اس روٹ پر ٹرکوں کے لیے ٹول ٹیکس نرخ 410 روپے سے بڑھا کر 460 روپے کردیے ہیں۔

پنڈی بھٹیاں-فیصل آباد-گوجرہ: 860 روپے سے بڑھا کر 970 روپے۔

اسلام آباد-پشاور: پرانے نرخ 1120 روپے تھے، جو اب بڑھا کر 1270 روپے کردیے گئے ہیں۔

الیکٹرانک ٹول کلیکشن کے آغاز کے بعد سے ٹرکوں اور بسوں سے اضافی 50 روپے سرچارج وصول کیا جائے گا۔

اب تک کے لیے اتنا ہی، اپنے خیالات نیچے تبصروں میں پیش کیجیے۔


My name is M. Ali Laghari and I love to read and write about Cars.

Top