پاک سوزوکی نے گاڑیوں کی قیمت میں 1 لاکھ روپے تک اضافہ کردیا

Pak Suzuki Increases Prices of its Cars Amidst Falling Profit Margins

حکومت پنجاب کی جانب سے صوبے میں متعارف کروائی جانے والی سبز ٹیکسی اسکیم کی بدولت سوزوکی گاڑیوں کی فروخت میں زبردست اضافہ ہوا۔ اس اسکیم کے تحت سوزوکی راوی اور سوزوکی بولان جیسی گاڑیوں کو ہزاروں کی تعداد میں تیار اور فروخت کیا گیا۔ تاہم سبز ٹیکسی اسکیم کے اختتام پر پاک سوزوکی کی تیار کردہ گاڑیوں کی فروخت میں زبردست کمی آئی جس کا براہ راست اثر ادارے کو حاصل ہونے والے منافع پر پڑا ہے۔ کار ساز ادارے کے پیش کردہ اعداد و شمار کے مطابق رواں سال کی پہلی ششماہی کے دوران پاک سوزوکی کو 41 فیصد کم منافع ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں گاڑیوں کی فروخت: مالی سال 2015-16 کا جائزہ

کمپنی کے منافع میں واضح کمی کے اثرات حصص رکھنے والوں تک بھی پہنچے ہیں۔ پاکستانی بازار حصص میں سوزوکی کے حصص کی قیمت 21.78 روپے کمی کے بعد 413.99 روپے تک گرچکی ہے۔ مالی سال 2014-15 کی آخری سہ ماہی (اپریل تا جون 2015) میں حاصل ہونے والے 1.47 ارب روپے منافع کے مقابلے میں مالی سال 2015-16 کی آخری سہ ماہی (اپریل تا جون 2016) میں صرف 48.78 کروڑ منافع حاصل ہوا۔ مقامی اخبار کی رپورٹ کے مطابق مالی اخراجات 2.385 کروڑ سے بڑھ کر 8.442 کروڑ روپے تک جا پہنچے ہے۔ جبکہ مجموعی آمدنی 42.74 کروڑ روپے سے بڑھ کر 58.99 کروڑ تک ہوچکی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کیا پاکستان میں مہران کی جگہ نئی آلٹو متعارف کروائی جارہی ہے؟

Punjab-Taxi-Scheme

تازہ خبر یہ ہے کہ پاک سوزوکی نے اپنی تمام ہی گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس ضمن میں تمام ڈیلرشپس کو نئی قیمتوں پر مشتمل گاڑیوں کی فہرست بھی فراہم کردی گئی ہے۔ پاک سوزوکی کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ گاڑیوں کی نئی قیمتوں کا اطلاق یکم اگست 2016 سے ہوگا ہے۔ تاہم چلاغ تلے اندھیرے کے مترادف خود سوزوکی کی اپنی ویب سائٹ پر اب تک پرانی قیمتیں ہی دکھائی جارہی ہیں۔

پاک سوزوکی ویب سائٹ کے مطابق سی این جی اور پیٹرول انجن کی حامل سوزوکی کلٹس کی قیمت بالترتیب 10,94,000 اور 11,69,000روپے ہے جبکہ یکم اگست سے یہ گاڑیاں 11,24,000 روپے اور 11,99,000 روپے میں فروخت کی جارہی ہیں۔ اسی طرح ویب سائٹ پر سوزوکی سوِفٹ AT NV کی قیمت بھی 14,81,000 روپے درج ہے جبکہ نئے اعلامیے کہ مطابق سوزوکی سوِفٹ کا بہترین ماڈل اب 15,11,000 روپے میں فروخت کیا جا رہا ہے۔

سوزوکی ویگن آر، سوزوکی کلٹس اور سوزوکی سوِفٹ کے مختلف ماڈلز کی قیمتوں میں 30 ہزار روپے تک اضافہ کیا گیا ہے جبکہ پرانی ٹیکنالوجی کی حامل سستی سمجھی جانے والی گاڑیوں بشمول سوزوکی مہران، سوزوکی راوی اور سوزوکی بولان کی قیمتیں بھی 20 سے 25 ہزار تک بڑھا دی گئی ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان میں دستیاب سب سے سستی نئی گاڑی یعنی سوزوکی مہران بھی 6,50,000 روپے میں فروخت کی جائے گی۔

پاک سوزوکی کی تیار کردہ گاڑیوں کی نئی قیمتیں یہ ہیں:

Pak Suzuki latest price like 1st August 2016

پاک سوزوکی کی جانب سے قیمتوں میں حالیہ اضافہ کی کوئی وجہ نہیں بتائی گئی اس لیے یہ بات یقین سے نہیں کہی جاسکتی کہ آیا پاک سوزوکی نے منافع میں کمی کو پورا کرنے کے لیے یہ فیصلہ کیا ہے یا پھر اس کے پیچھے کوئی اور مقصد کار فرما ہے۔ البتہ ایک بات یقین سے کہی جاسکتی ہے کہ اس اقدام سے گاڑیوں خریدنے کے خواہش مند متوسط طبقے کے عام افراد ضرور متاثر ہوں گے۔

Top