مالی سال 2018ء کی دوسری سہ ماہی میں پاک سوزوکی کے خالص منافع میں 43 فیصد کمی

Pak-Suzuki-Increases-Prices-of-its-Cars-Amidst-Falling-Profit-Margins-640x360

رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی میں سوزوکی پاکستان کا خالص منافع 43 فیصد کی زبردست کمی کے بعد 394 ملین روپے تک گر گیا ہے۔

ادارے کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق پاک سوزوکی نے گزشتہ سال کے اسی دورانیے میں 685 ملین روپے کا منافع حاصل کیا تھا لیکن اس سال کے خالص منافع میں بڑی کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

مزید برآں، یہ امر قابل ذکر ہوگا کہ آمدنی فی حصص (EPS) بھی 4.78 روپے تک گرا ہے۔ یہ EPS گزشتہ سال کے اس عرصے میں 8.32 روپے تھا۔

مزید پڑھیں: وزیر اعظم نے پاکستان مونیومنٹ میوزیم میں دو پرانی گاڑیوں کا افتتاح کیا

2018ء کی دوسری سہ ماہی میں ادارے کا نہ صرف منافع کم ہوا ہے بلکہ سال کی پوری ششماہی ہی سوزوکی کے لیے اچھی نہیں رہی۔ 2018ء کی پہلی ششماہی میں ادارے کے منافع میں سال بہ سال میں 35.18 کی کمی آئی اور یہ 1.89 ارب روپے تک پہنچا۔ گزشتہ سال کے اسی دورانیے میں اس نے 1.99 ارب روپے کا منافع حاصل کیا تھا۔ مزید برآں اس سال کے ابتدائی چھ ماہ کا EPS مقابلے میں 15.77 روپے ہے جبکہ گزشتہ سال یہ 24.20 روپے تھا۔

منافع میں اس کمی کے باوجود حیران کن طور پر سال کی دوسری سہ ماہی میں ادارے کی فروخت آمدنی میں 35 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

خالص منافع میں کمی کے باوجود ادارہ نومبر 2018ء سے مہران کے ویریئنٹ VX کی بندش کا اعلان کر چکا ہے۔

تازہ ترین خبروں کے لیے آتے رہیے PakWheels.com پر۔


Top