سبز ٹیکسی اسکیم کی بدولت گاڑیوں کی فروخت میں 72 فیصد اضافہ

Punjab-Taxi-Scheme

پاکستان میں تیار ہونے والی گاڑیوں کی فروخت میں زبردست اضافہ نظر آ رہا ہے جس کی بنیادی وجہ ملک میں امن و امان کی بہتر صورتحال کے بعد کاروباری حالات میں بہتری کے ساتھ ساتھ مختلف اسکیمز بھی شامل ہیں۔ ایک طرف مختلف ادارے اور بینک کم اقساط پر گاڑیاں فراہم کر رہے ہیں تو دوسری جانب پنجاب کی صوبائی حکومت بھی بیروزگار افراد کے لیے سبز ٹیکسی اسکیم پیش کرچکی ہے۔ جس کے بعد مالی سال 2015-16 کی پہلی سہہ ماہی میں فروخت کی گئی گاڑیوں کی تعداد 60 بڑھ گئی ہے۔

car-sales

پاکستان آٹوموبائل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پاما) کی جانب سے جاری ہونے والے اعداد و شمار کے مطابق مقامی مارکیٹ میں تیار ہونے والی 44,372 گاڑیاں فروخت ہوئیں گذشتہ سال اسی عرصے میں 27,630 گاڑیاں فروخت ہوئی تھیں۔ باوجودیکہ کہ گاڑیوں کی درآمدات میں اضافے کی وجہ سے مقامی مارکیٹ کو شدید مسابقت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور وقت کے ساتھ اس میں اضافہ متوقع ہے۔

پاک سوزوکی
پاک سوزوکی موٹرز کی تیار شدہ گاڑیوں کی فروخت میں 98 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ حکومتِ پنجاب کی سبز ٹیکسی اسکیم میں سوزوکی مہران اور سوزوکی بولان کی تقسیم ہے۔ جولائی سے ستمبر 2015 تک پاک سوزوکی نے 33,770 مہران فروخت کی ہیں۔ اس کے علاوہ سوزوکی بولان کی فروخت بھی 8,482 تک پہنچی جو گزشتہ سال اسی عرصے میں 6,241 رہی تھی۔

ٹیکسی اسکیم کو ایک طرف رکھ کر اگر اعداد و شمار پر نظر ڈالیں تو بھی سوزوکی مہران کی فروخت میں واضح اضافہ نظر آیا ہے جو 9,896 کی تعداد میں فروخت ہوئی جبکہ سال 2014 کی تیسری سہ ماہی میں یہ تعداد صرف 3,020 تھی۔

ٹویوٹا انڈس موٹرز
بلاشبہ نئی ٹویوٹا کرولا نے اپنی مسابقت برقرار رکھتے ہوئے میلا لوٹنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ اگر یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ نئی ٹویوٹا کرولا نے پاکستان میں گاڑیوں کے شعبے کی ترقی میں زبردست کردار ادا کیا ہے۔ گزشتہ مالی سال کی پہلی سہہ ماہی میں یہ 8,546 کی تعداد میں فروخت ہوئی تاہم موجودہ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں 13,512 فروخت کی جاچکی ہیں۔

ہونڈا ایٹلس
ٹویوٹا کا روایتی حریف ہونڈا بھی اپنی سِوک اور سِٹی کی مدد سے مثبت پیش رفت کر رہا ہے۔ موجودہ مالی سال میں مذکورہ برانڈز کی 6,184 گاڑیاں فروخت کی جاچکی ہیں جبکہ پچھلے سال اسی عرصے میں فروخت ہونے والی ہونڈا سِوک اور ہونڈا سِٹی کی مجموعی تعداد 4,887 رہی تھی۔

companies-chart

اعداد و شمار سے صاف ظاہر ہے کہ ٹویوٹا کرولا نے سرِفہرست رہنے کی روایت برقرار رکھی ہے اور کوئی اور برانڈ اس کا مقابلہ کرتی نظر نہیں آرہی۔ سوزوکی کی دو گاڑیاں مہران اور بولان بالترتیب دوسرے اور تیسرے نمبر ہر ہیں جبکہ ہونڈا اپنی دو معروف برانڈز کی مجموعی فروخت کے ساتھ چوتھے نمبر ہے۔
ستمبر کے مہینے میں گاڑیوں کی فروخت اگست 2015 کے مقابلے میں 5 فیصد کم رہی جس کی وجہ عید الاضحی کی چھٹیاں ہوسکتی ہیں تاہم مجموعی صورتحال سبز ٹیکسی اسکیم کی بدولت بہتری کی جانب گامزن ہے۔

Car-Sales-July14-15-chart1
* دیگر گاڑیوں میں سوزوکی لیانا اور ہونڈائی سانترو شامل ہیں

Yasir Ameen

I am a journalist and blogger who loves to write on the subjects of technology, telecom, economy and automobile.

Top