کیا پاکستان کار سبسکرپشن ماڈلز کے لیے تیار ہے؟


رائیڈ-شیئرنگ اکانمی کے عام ہونے کے ساتھ دنیا بھر میں نوجوان شہری نسل گاڑی رکھنے کی ضرورت پر بحث کر رہی ہے، جس نے کار-شیئرنگ پروگراموں کے فروغ اور ایک نسبتاً نئے رحجان کی طرف رہنمائی کی ہے یعنی: لچکدار کار-سبسکرپشن ماڈلز۔ اگر آپ نے ہر مہینے ایک نئی گاڑی ڈرائیو کرنے کا خواب دیکھا ہو تو اب تصور سے بھی پہلے اس خواب کو حقیقت کا روپ دھارتے دیکھ سکتے ہیں۔

کار-سبسکرپشن ماڈل کی افادیت ہے اپنی روزمرہ تبدیل ہوتی ڈرائیونگ ضرویات کے مطابق اپنی گاڑی کو بارہا تبدیل کرنے کی گنجائش۔ خاندان کے ساتھ سفر کے لیے ایک زیادہ کشادہ گاڑی، مضافاتی علاقے میں جانے کے لیے ایک سپر کار، یا شہر کے اندر روزمرہ ڈرائیونگ کا لطف اٹھانے کے لیے ایک چھوٹی کنورٹیبل، یہ ان پروگراموں کے محض چند فائدے ہیں۔ دیگر بڑے فوائد میں شامل ہیں مہنگی مرمت اور پیچیدہ انشورنس پالیسیوں کے جھنجھٹ سے آزادی۔

وولو، بی ایم ڈبلیو، مرسڈیز-بینز اور پورشا جیسے بڑے اداروں کی جانب سے 1100 ڈالرز یعنی 140,000 پاکستانی روپے سے شروع ہونے والے ماہانہ پلانز کے ساتھ یہ ماڈل ترقی یافتہ مارکیٹوں میں آگے بڑھنے کی زبردست صلاحیت رکھتا ہے۔ البتہ پاکستان میں اسے مواقع اور چیلنجز دونوں کے ایک انوکھے ملاپ کا سامنا ہوگا۔

how-schedule

ایسے کسی ماڈل کو پاکستان میں درپیش سب سے بڑا چیلنج ہوگا مارکیٹ کا موجودہ رحجان جو کار ملکیت کو ایک مستحکم اور آسان اثاثے کے طور پر اہمیت دیتا ہے۔ ایسے ماڈلز کی قیمت بیرون ملک آٹومیکرز کے پیش کردہ موجودہ پلانز کے مقابلے میں پاکستان کے حساب سے مہنگی بھی ہوگی، کیونکہ پاکستان میں انشورنس اور درآمد شدہ لگژری گاڑیوں کی درآمد کی لاگت زیادہ ہے۔ ملک میں گاڑیوں کا استعمال زیادہ ترقی یافتہ معیشتوں کے مقابلے میں اتنا زیادہ تبدیل نہیں ہوتا، کسی حد تک روزمرہ استعمال کے رحجانات اور گاڑی میں بٹھانے کے لیے اہل خانہ کی اوسط تعداد کی وجہ سے۔ یہ پاکستان میں اس ماڈل کی طلب کو صرف چند زیادہ کمانے والے گاڑیوں کے شائقین تک ہی محدود کرتا ہے۔

اس ماڈل کا واضح فائدہ لگژری تجربات کی زبردست طلب ہے، جس میں مارکیٹ کا بڑا حصہ ایک ایسی لگژری کار چلانا چاہے گا جو ویسے ان کی دسترس سے باہر ہوتی۔ لگژری کاروں پر بڑی درآمدی ڈیوٹیز کا نتیجے میں گاڑیوں کے مالکان کی بڑی تعداد ایسی گاڑیاں نہیں خریدنے کا ارادہ نہیں رکھتی، لیکن کار سبسکرپشن ماڈل ان کے لیے حالات کو تبدیل کر سکتا ہے۔

porsche-passport-subscription-membership-hero2@2x

لیکن ایک زیادہ قابل عمل پیشکش پابندی نہ رکھنے والی ماہانہ کار سبسکرپشن پروگرام ہو سکتا ہے جس کا ہدف تفریحی استعمال ہو جو ملک کے شہری نوجوانوں کے لیے ایک مقبول آپشن ثابت ہو سکتا ہے۔ دوسرے الفاظ ممیں ایک لچکدار، مکمل کار رینٹل ماڈل۔ البتہ لگتا ایسا ہے ہے کہ پاکستانی مارکیٹ اس کے لیے تیار نہیں اور نہ ہی زیادہ ترقی یافتہ مارکیٹوں میں قابل عمل لگژری گاڑیوں کے کسی سبسکرپشن ماڈل کے لیے موزوں ہے۔

کیا آپپ ہر روز نئی گاڑی چلانا چاہتے ہیں؟ پیر کو کینے اور جمعے کو 911 کے بارے میں کیا خیال ہے؟

اپنی رائے نیچے تبصروں میں ضرور پیش کیجیے۔


Top