پورشے بوکسٹر کی قیمت میں 12 لاکھ روپے کمی

Porsche Pakistan

گاڑیوں سے نکلنے والا دھواں عالمی حرارت (گلوبل وارمنگ ) میں اضافے کی بڑی وجوہات میں سے ایک ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مختلف ممالک نے عالمی درجہ حرارت پر قابو پانے کے لیے گاڑیوں کے شعبے پر مختلف قوانین لاگو کر رکھے ہیں۔ ان قوانین کے تحت بڑے انجن والی گاڑیوں (جن سے زیادہ کاربن ڈائی آکسائیڈ خارج ہوتا ہے) پر اضافی ٹیکس اور جرمانہ عائد کیا جاتا ہے نیز متبادل توانائی سے چلنے والی ہائبرڈ اور برقی گاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے۔

گاڑیوں کے شعبے سے وابستہ ماہرین کا خیال ہے کہ مستقبل ہائیڈروجن اور بجلی سے چلنے والی گاڑیاں ہی کا ہے۔ ان گاڑیوں کی افادیت بالخصوص مسافت (مائلیج) میں اضافہ اور جلد چارجنگ کی سہولت پر طویل عرصے سے کام جاری ہے جن میں ٹیسلا سمیت چند ایک اداروں کو کامیابی بھی حاصل ہوچکی ہے۔ لہٰذا یہ توقع رکھی جاسکتی ہے کہ چند سالوں بعد متبادل توانائی سے چلنے والی گاڑیاں بھی ویسے ہی عام ہوجائیں گی جیسے اس وقت پیٹرول اور ڈیزل سے چلنے والی گاڑیاں زیر استعمال نظر آتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ٹویوٹا کرولا میں متعدد خصوصیات کا اضافہ؛ قیمتیں بھی بڑھادی گئیں!

تاہم یہ بات اپنی جگہ درست ہے کہ انٹرنل کمبسشن انجن سے برقی گاڑیوں کی طرف منتقلی یکدم ممکن نہیں ۔ اس لیے کار ساز ادارے اپنی گاڑیوں کو اس وقت کے لیے تیار کر رہے ہیں کہ جب انہیں موجودہ ٹیکنالوجی کے بجائے متبادل اور جدید ٹیکنالوجی کو اپنانا ہوگا۔ اسی ضمن میں متعدد کار ساز اداروں نے گاڑیوں میں چھوٹے انجن اور ہائبرڈ ٹیکنالوجی کا استعمال بھی شروع کردیا ہے۔ حکومت پاکستان کی جانب سےہائبرڈ گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس کی چھوٹ پاکستانیوں کےلیے کافی حوصلہ افزا بھی ہے۔

porche pakistan boxter

پاکستان میں دستیاب پورشے گاڑیوں کو بیرون ملک سے مکمل تیار شدہ حالت میں درآمد کیا جاتا ہے۔ اب چونکہ ان گاڑیوں میں بھی چھوٹے انجن اور ہائبرڈ ٹیکنالوجی کا استعمال شروع ہوگیا ہے لہٰذ ان کی قیمتوں میں بھی فرق آگیا ہے۔پاکستان میں دستیاب پورشے کی ہائبرڈ گاڑیوں میں پانامیرا اور كايان شامل ہیں۔ اس کے علاوہ انجن میں قوت میں کمی اور ٹربوچارجنگ کی خصوصیت پورشے 911 اور بوکسٹر میں شامل کی گئی ہیں۔ پورشے بوکسٹر کا انجن 2700cc سے کم کر کے 2000cc کردیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ اس میں ٹربو چارجنگ کی مدد سے ہارس پاور میں اضافہ ہوگا نیز ایندھن کی بچت بھی ممکن ہوسکے گی۔ پھر چونکہ کم انجن والی گاڑیوں پر ٹیکس بھی کم عائد ہوتا ہے اس لیے ان کی قیمت میں بھی کمی ہونا تعجب کی بات نہیں۔

پورشے پاکستان کے مطابق نئی 718 بوکسٹر کی قیمت 156,400 امریکی ڈالر ہوگئی ہے جو پاکستانی روپے میں تقریباً 16,372,000 کے مساوی ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قیمت میں تقریباً 12 لاکھ روپے کمی کی گئی ہے۔اب سے چند روز قبل تک پاکستان میں دستیاب پورشے بوکسٹر S کی قیمت 20,837,400 روپے تھی تاہم دیگر گاڑیوں کی قیمتوں میں کمی کو دیکھتے ہوئے بوکسٹر S کی قیمت بھی کم کیے جانے کا امکان ہے۔

Top