سوزوکی آلٹو VXR 2019 – ایک مالک کی نگاہ سے


سوزوکی آلٹو کی نئی جنریشن رواں سال پاکستان میں لانچ کی گئی تھی۔ مشہورِ زمانہ مہران کی جگہ لیتے ہوئے یہ آلٹو اس وقت پاکستان میں دستیاب سستی ترین گاڑیوں میں سے ایک ہے ۔ اپنی لانچ سے پہلے ہی نئی آلٹو سے بہت سی امیدیں وابستہ ہو گئیں۔ نئی آلٹو خریدنے کے فیصلے پر آپ کی مدد کے لیے ہم نے ایک مالک کی نظر سے اس گاڑی کا تجزیہ کیا ہے۔ جس گاڑی کا جائزہ لیا گیا ہے وہ آلٹو کا VXR ویرینٹ ہے کہ جو 224 کلومیٹر چلا ہوا ہے۔ 

نئی آلٹو کے تین ویرینٹس ہیں: VX، VXR اور VXL۔ VXR نئی آلٹو کا درمیانے درجے کا ویرینٹ ہے۔ یہ گاڑی اپریل 2019ء کے اوائل میں بُک کروائی گئی تھی اور جون 2019ء میں یہ گاڑی اپنے مالک کو مل گئی۔ اس وقت اُنہیں تعارفی قیمت کا فائدہ حاصل ہوا کہ جو 10,67,000 روپے تھی۔ مالک نے نئی آلٹو اس لیے خریدی کیونکہ یہ ملک میں بننے والی پہلی 660cc گاڑی ہے۔ انہوں نے شکل و صورت کی وجہ سے نئی آلٹو کو ویگن آر پر ترجیح دی ۔ مالک نے امپورٹ کی گئی اس آلٹو کو جاپانی 660cc گاڑیوں پر بھی ترجیح دی کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ ذہنی سکون کے لیے اس گاڑی کا انتخاب کرنا چاہیے۔ 

ایکسٹیریئر، انٹیریئر اور فیچرز: 

جہاں تک ایکسٹیریئر کا معاملہ ہے تو مالک کا خیال ہے کہ یہ گاڑی سامنے والے حصے سے تو اچھی لگتی ہے۔ البتہ اس کا پچھلا حصہ اُن کے مزاج کے مطابق نہیں۔ لوگ وقت گزرنے کے ساتھ ہی نئی آلٹو کے ڈیزائن سے مانوس ہوں گے۔ مالک کا خیال ہے کہ انٹیریئر ڈیزائن اچھا ہے اور چھوٹی ہیچ بیک کے حساب سے کشادہ ہے۔ VXR ویرینٹ کے کچھ اہم فیچرز میں ڈوئل ایئر بیگز، پاور اسٹیئرنگ اور پریمیم اسٹیریو سسٹم مع بلوٹوتھ کنیکٹیوٹی ہیں۔ اس گاڑی کی بریکنگ مہران سے بہتر ہے اور حالانکہ یہ ABS نہیں لیکن پھر بھی بریکنگ اچھی ہے۔ 

آگے اور پیچھے بیٹھے مسافروں کے لیے چار کپ ہولڈرز بھی لگے ہوئے ہیں۔ انٹیریئر اسٹوریج بھی کافی ہے کہ جس میں چیزیں رکھنے کے لیے مختلف کمپارٹمنٹس بنائے گئے ہیں۔ آگے اور پیچھے بیٹھے مسافروں کے لیے کافی کشادہ لیگ اسپیس موجود ہے اور لمبے سفر پر بھی چار افراد باآسانی اس گاڑی میں بیٹھ سکتے ہیں۔ انٹیریئر میں گنجائش کو ڈِگی سے اضافی ٹائر نکال کر بہتر بنایا گیا ہے۔ اسپیئر ویل کی جگہ ایک پنکچر رپیئر کٹ دی گئی ہے جو پاک سوزوکی کا ایک متنازع فیصلہ ہے۔ آگے بیٹھے مسافروں کے لیے آرام کا لیول ویگن آر اور کلٹس جتنا یا اس سے بھی بہتر ہے۔ نئی آلٹو کی بلڈ کوالٹی دیگر لوکل حریف گاڑیوں جیسا کہ یونائیٹڈ براوو سے بہتر ہے۔ البتہ ایکسٹیریئر کی پینٹ کوالٹی بہت خراب ہے۔ 

انجن اور ٹرانسمیشن: 

VXR آلٹو 660cc R068 انجن میں 5-اسپیڈ مینوئل ٹرانسمیشن کے ساتھ آتی ہے۔ یہ چھوٹا ہونے کے باوجود طاقتو راور رواں انجن ہے۔ گیئر شفٹ بھی مہران سے زیادہ ہموار ہیں۔ A/C آن ہو تو یہ انجن شہر کے اندر 17 سے 18 کلومیٹر فی لیٹر دیتا ہے جبکہ ہائی وے پر نئی آلٹو 20 کلومیٹر فی لیٹر چلتی ہے۔ 

آلٹو کے ویرینٹس کے درمیان فرق: 

VX ویرینٹ میں ایئر بیگز اور ایئرکنڈیشننگ نہیں ہے کہ جو VXR اور VXL دونوں ویرینٹس میں موجود ہیں۔ آڈیو سسٹم بھی VXR اور VXL ویرینٹس کے مقابلے میں ذرا کم معیار کا ہے۔ VXL ویرینٹ میں آٹو گیئر شفٹ (AGS) ٹیکنالوجی ہے جو VXR اور VX ویرینٹس میں موجود نہیں۔ مزید یہ کہ VXL ویرینٹ میں پاور ونڈوز اور پاور اینڈ ری ٹریکٹ ایبل سائیڈ مررز ہیں۔ VXL ویرینٹ میں دروازوں کے ہینڈلز اور سائیڈ مررز باڈی کی رنگت کے ہی ہیں۔ اس میں پریمیم احساس کے لیے دو رنگوں کا ڈیش بورڈ اور ایک اسکرین مررنگ رکھنے والی ٹچ اسکرین ہے جبکہ VX اور VXR یونٹس میں یہ محض ایک آڈیو یونٹ ہے۔ 

نئی آلٹو کے بارے میں اس بارے میں اپنی رائے نیچے تبصروں میں پیش کریں کہ آپ اس گاڑی کے مختلف پہلوؤں کو کیسے بہتر دیکھناچاہیں گے۔ مزید معلوماتی تحاریر کے لیے پاک ویلز پر آتے رہیے۔


Google App Store App Store

Top