سوزوکی ہسلر: پاکستان میں ایک ہیرے کی مانند۔

42084

لوگ سوزوکی ہسلر کو ٹویوٹا ایف۔جے کروزر سے تشبیح دے رہے ہیں کیونکہ یہ بھی بالکل اسی طرح ڈبہ نما ڈیزائین میں دورنگوں کے ساتھ آتی ہے جو کہ ایف جے کروزر کا خاصا بھی ہے۔

گول ڈیزائن پرمشتمل ہیڈلیمپس اور پراجیکٹر لینز اس کے اگلے حصے کو مکمل اور واضح کرتے ہیں، بظاہر اگلی گرِل سوزوکی لوگو اور ہسلر کے نشان کے علاوہ اس پر کوئی اضافی کروم کا استعمال نہیں کیا گیا۔اس کے بر عکس،پلاسٹک پینل جو کہ دونوں فوگ لیمپس اور بمپر کو آپس میں ملاتا ہے اس پرایک سلیس چمکتی علامت نظر آتی ہے۔اس کی فرضی ایس۔یو۔وِی لک کو بڑھانے کے لئے، ہسٹلر پر کالے رنگ کی پلاسٹک باڈی لگائی گئی ہے:  جو کہ اگلے بمپر،  اطراف کے سکِٹس،  فینڈرز اور پچھلے بمپر پر پھیلی ہے۔

اگر کوئی اس کو ایک طرف سے دیکھے تویہ پچکی اور ڈِبہ نما لگتی ہے۔ دونوں اطراف کے شیشے اور چھت سفید رنگ میں آتی ہے، جبکہ باقی کی گاڑی کا انتخاب تیز چمکتے رنگوں میں کیا جا سکتا  ہے۔گاڑی پندرہ اِنچ کے پہئے رکھتی ہے، جو کہ گاڑی کے ساتھ آتے ہیں۔

hustler-7hustler-6hustler-5hustler-4hustler-3hustler-2hustler-1

اگر اس کی شکل و شباہت کی بات کی جائے تو اس کے پیچھے اور اطراف میں، ہسٹلر کالمی اونچی ہائی ماؤنٹ کی بریک لائیٹس ہیں۔پچھلے بمپر ڈاؤن شفٹر نوعیت کے ہیں۔علاوہ ازیں ایسی اور کوئی انوکھی چیز نہیں جو کہ سامنے آئے۔

اس گا ڑی کا انٹیریئر دورنگوں کے تصور کا پتا دیتا ہے۔اس اقدام کی وجہ گاڑی کو اور زیادہ پرکشش بنانا اور نوجوان طبقہ کو اس کی طرف مائل کرنا ہے۔

hustler-9hustler-10hustler-11hustler-12hustler-13hustler-14hustler-15hustler-16hustler-8

اس کا سارے کا سارا ڈیش بورڈڈیزائن ڈبہ نما اور بہت سے سیدھے ایلیمینٹس پر مشتمل ہے،اور کچھ سلیس سے دائرے سپیڈومیٹر ہاؤسِنگ اور اے۔سی وینٹیلیشن کی صورت میں بھی نظر آتے ہیں، یہ سب عوامل مل کر ایک بہت ہی انوکھااور خوبصورت تاثر دیتے ہیں۔ان کو ایک طرف کرتے ہوئے یہ گاڑی تین گلوز باکسز پر مشتمل ہے۔ سب سے اہم چیز اس کے ڈیش بورڈ کی خوبصورت بناوٹ اور کوالٹی ہے۔ یہ خالصتاً پلاسٹک ہے مگر جب آپ اسے مختلف جگہوں سے کھڑکاتے یا دباتے ہیں تویہ کھڑکتا یا گونج پیدا نہیں کرتا۔یہ کہنا بجا ہو گا کہ اس کی بناوٹ کمال ہے اوراپنے خریداروں کی امیدوں پر پورا اترنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

ایک ٹچ سکرین ہیڈ ہونٹ بھی اس گاڑی میں نصب کیا گیا ہے جو کہ دوسری ڈرائیونگ سہولیات جیسا کہ سیٹلائیٹ نیویگیشن،  آکس اِن،  یو۔ایس۔بی،  اور ایس۔ڈی کارڈ پورٹس رکھتا ہے۔آب وہوا پر قابو بھی ڈرائیورکی پہنچ میں اور ڈیش بورڈ میں مناسب جگہ پر رکھا گیا ہے۔ اگر آپ سگریٹ نوشی کرتے ہیں اور آپ یہ گاڑی خرید چکے ہیں تو یہ جان کر آپ کو افسوس ہوگا کہ اس گاڑی میں سگریٹ لائیٹر نہیں ہے۔اس گاڑی میں کئی بارہ والٹ طاقت کی آؤٹ لیٹس ہیں۔انسٹرومینٹ پینل سپیڈومیٹر پر مشتمل ہے جبکہ ایک چھوٹی سکرین ٹیکنومیٹر کے طور پر بھی کام کرتی ہے۔

اب اس گاڑی کی کچھ اورقابلِ ذکر خصوصیات کی طرف آتے ہیں۔جیسا کہ سٹئیرنگ وہیل پر ملٹی میڈیا کنٹرول کا ہونا اور اڈلِنگ سٹاپ سسٹم، ٹریکشن کنٹرول،  آٹومیٹک بریکنگ سسٹم،  سےِٹ وارمنگ،اور ہیڈلائیٹ ایڈجسٹمینٹ بٹن کا ہوناہیں۔

اس کی فٹ آپریٹنگ پارکنگ بریک پر اس کاممنون ہونا بھی بنتا ہے، سوزوکی ایک فرنٹ پیسینجر سیٹ لگانے میں بھی کامیاب رہی ہے۔اور ہم بتا رہے ہیں کہ یہ گاڑی پاور وِنڈوز، سائیڈ مِرر ایڈجسٹمینٹ،  ریٹریکٹ ایبل مِررز بھی رکھتی ہے۔

چلیں اس میں گنجائش کی بات کرتے ہیں۔یہ گاڑی ٹانگوں اور سر کے لئیے آگے اور پیچھے دونوں طرف کھلی جگہ فراہم کرتی ہے،۔یہ کھلا پن اس کے ڈبہ نما انٹیریئرنیچے کو اور سیدھے فرش کی بدولت ہی میسر آیاہے۔جیسا کہ سیٹوں کو اور آرام دہ کیا جا سکتا تھا لیکن پھر بھی زیادہ جگہ بنانے کے لئے سب سیٹیں سلائیڈڈ،  سیدھی اور بند ہو سکتی ہیں۔ سب سے آخر میں مگر اختطامی نہیں، وہ ہے پچھلی سیٹوں پر آئی۔ایس۔او۔ایف۔آئی۔ایس اڈاپٹیشن۔

 اس کی چھوٹی خلیج میں،ہسٹلر ایک چھوٹے تین سیلنڈر والے 660سی سی انجن کے ساتھ آتی ہے۔جو کہ اسے 6000آر۔پی۔ایم میں 63بی۔ایچ۔پی کرنے کے قابل بناتا ہے۔یہ کہنا غلط نہ ہو گا کہ ہسٹلر ایک ہائی پرفارمنس کار کے بجائے ایک کے۔ای۔آئی مینوفیکچرر گاڑی ہے جو کہ آپ کوشہری ڈرائیو میں بہترین مائیلیج دیتی ہے۔ اس گاڑی کا ٹربو چارجڈ انجن سی۔وی۔ٹی گئیر باکس سے منسلک ہے اور اےِکو اےِڈل ٹیکنالوجی رکھتا ہے۔اور تو اور ہسٹلر کا ٹرننگ ریڈئیس 4.6میٹر پر مشتمل ہے۔یہ اگلے پہیوں پر چلنے والی گاڑی ہے جو کہ ستائیس لیٹر پیٹرول ٹینک رکھتی ہے۔اس گاڑی کے پہیوں کا سائیز 165/60آر 1577ایچ ہے۔

تحفظات اور حفاظت،

جی ابھی تک تو ہم اس کی شکل اور انجن کی کارکردگی پر بات کر رہے تھے، میں سمجھتا ہوں کہ یہ بالکل صحیح وقت ہے کہ ہم اب گفتگو کواس کی سیکیورٹی اور تحفظ کی جانب لے جائیں، جو کہ اس کی قیمت سے انصاف کرے گی۔

٭پارکنگ فٹ بریک۔

٭اے۔بی۔ایس۔بریکس۔

٭ائیر بیگز۔

٭اموبیلائیزر کی۔

٭ریڈار بریک اسسٹ۔

٭سمارٹ انٹری۔

٭ٹریکشن کنٹرول۔

٭ایڈجسٹ ا یبل ہیڈ لیمپس۔

٭فوگ لیمپ۔

ایک تو اس گاڑی کے آگے اور پیچھے دونوں جگہوں میں فلیٹ بیڈز ہیں جو کہ سوزوکی کو ایسی سیٹیں لگانے کے قابل بناتے ہیں جو مزید جگہ بنانے کے لئے سلائیڈ ہو سکیں، لیٹ اور بند ہو سکیں۔کمپنی نے اگلی طرف پارکنگ فٹ بریک کی انسٹالنگ سے فلیٹ بیڈ کو ممکن بنایا۔جیسا کہ یہ جے۔ڈی۔ایم کار ہے،اسی بدولت یہ اپنے اندر وسیع خصوصیات چھپائے ہے جیسے کئی ائیر بیگز،  اے۔بی۔ایس بریکس بشمول ای۔ڈی۔بی،  ایموبیلائیزر کی اور ٹریکشن کی۔وہ عوامل جو اس گاڑی کی فروخت میں اہمیت کے حامل ہیں وہ اس کے ایڈجسٹ ایبل ہیڈلیمپس،  ریڈار بریک اسسِٹ اور سمارٹ انٹری بشمول انجن اگنیشن سٹاپ بٹن ہیں۔

نتیجتاً۔

مختصراً، اس گاڑی کا شمار پاکستان میں فروخت ہونے والی اول درجہ کی جے۔ڈی۔ایم،  کے۔ای۔آئی کارز میں ہورہا ہے۔ایسا کیوں ہے؟ یہ اس کی خوبصورت اور پائیدار بناوٹ اعلیٰ ترین خصوصیات، اورتمام تر امیدوں کو یقینی طور پر پورا کرنے کی بدولت ممکن ہے۔اس کے علاوہ ہنڈا این ون کے مقابلے سستے ترین سپیئر پارٹس کی وجہ سے یہ یقینی طور پر پسندیدہ ترین گاڑی بننے جا رہی ہے۔بس ایک مسئلہ جو میرے سامنے آ سکا ہے وہ اس کی قیمت ہے،  ایک اعلیٰ میعار کی سوزوکی ہسٹلر آپ کو 12.5سے12.75لاکھ میں پڑتی ہے۔

Hanan is an avid auto enthusiast with a flair for writing and playing games. He loves traveling, deciphering political maneuvering and exploring the realms of coding & graphic designing.

Top