سوزوکی ویگن آر کی نئی اشتہاری مہم پر عوامی ردعمل

suzuki-wagon-r

گذشتہ دنوں کچھ دوستوں نے شکایت کی کہ آپ پاک سوزوکی سے متعلق کچھ زیادہ ہی منفی باتیں لکھتے ہیں۔ شاید یہ بات درست بھی ہو لیکن پاک سوزوکی اور اس کی گاڑیوں پر لکھی گئیں تحاریر کا مقصد تنقید برائے تنقید نہیں بلکہ تنقید برائے اصلاح ہوتا ہے ۔ ہمیں خوشی ہے کہ پاک سوزوکی کا شمار مقامی سطح پر گاڑیاں تیار کرنے والے تین سرفہرست اداروں میں ہوتا ہےلیکن یہ دیکھ کر بہت افسوس ہوتا ہے کہ جب یہی ادارہ انتہائی غیر معیاری گاڑیوں کو اعلی و ارفع بتا کر سادہ لوح پاکستانیوں کو بے وقوف بنانے کی کوشش کرتا ہے۔ کیا ہی اچھا ہو کہ پاک سوزوکی 25 سال پرانی مہران اور اس کی ہم عصر گاڑیوں کے ساتھ ان گاڑیوں کو بھی پاکستانی مارکیٹ میں متعارف کروائے جو عالمی سطح پر جاپانی کار ساز ادارہ سوزوکی پیش کر تا آرہا ہے۔ اپنے پڑوسی ممالک کے شہریوں کی طرح ہمیں بھی حق حاصل ہے کہ جدید اور بہترین گاڑیاں استعمال کریں!

حال ہی میں پاک سوزوکی نے بڑے پیمانے پر ‘practically perfect’ ویگن آر کی تشہیری مہم کا آغاز کیا ہے۔ ٹیلی ویژن پر جب سوزوکی ویگن آر کا اشتہار پہلی بار دیکھا تو شک ہوا کہ شاید اب بھی ہم بیسویں صدی میں موجود ہیں کہ جب ABS ، حفاظتی ایئر بیگز، سینٹرل لاک سسٹم اور پاور ونڈوز نہیں تھے اور دروزوں کے شیشے نیچے اور اوپر کرنے کے لیے چرخی گھمانہ پڑتی تھی۔

کاش یہ بیسویں ہی صدی ہوتی تو ہم اس پریکٹیکلی پرفیکٹ سوزوکی ویگن آر کو دیکھ کر خوش ہولیتے ہیں لیکن جناب! یہ تو اکیسویں صدی ہے جسے ٹیکنالوجی کا عہد قرار دیا جاتا اور سوائے پاک-سوزوکی کے باقی تمام دنیا جدید سے جدید ٹیکنالوجی کو اپنا رہی ہے۔ہم مزید کچھ عرض کریں گے تو شکایت ہوگی لیکن کیا کیجیے کہ سوشل میڈیا پر بھی لوگ اس بارے میں اپنی رائے کا برملا اظہار کر رہے ہیں اور یہی کچھ پاک سوزوکی کے فیس بک صفحے پر ویگن آر کے ایک اشتہار پر بھی ہو رہا ہے۔

image01

فیس بک پر ویگن آر کی اشتہاری ویڈیو پر اب تک ڈھائی سو سے زائد تبصرے ہوچکے ہیں جن میں سے زیادہ تر منفی ہی ہیں۔ اس سے آپ کو اندازہ ہوگیا ہوگا کہ پاک سوزوکی کے صرف ہم ہی ناقد نہیں بلکہ گاڑیوں کے شوقین افراد کا ایک بڑا حلقہ بھی ناقدین شامل ہے۔ ویڈیو پر سب سے زیادہ تنقید ویگن آر میں شامل ہونے والی بیس سالی پرانی سہولیات، غیر معیاری پرزوں کے استعمال اور بہت زیادہ قیمت پر کی گئی ہے۔

کراچی سے تعلق رکھنے والے یحیٰ اسماعیل صاحب کا کہنا ہے کہ سوزوکی ویگن آر کے معیار کو دیکھتے ہوئے میں پاک سوزوکی کو مشورہ دوں گا کہ اس کی قیمت ساڑھے تین لاکھ روپے کردے کیوں کہ یہی اس کی اصل اوقات ہے۔ سوات سے تبصرہ کرنے والے اہاب محب نے بتایا کہ ان کے پاس پندرہ سال پرانی جاپانی سوزوکی VXR 2001 ہے جس میں پاور اسٹیئرنگ، ABS، پاور ڈورز، سینٹرل لاک سسٹم، ریموٹ کنٹرول اور بہت سی خصوصیات ہیں جبکہ پاک سوزوکی اب بھی صرف پاور اسٹیئرنگ تک ہی محدود ہے۔ لاہور میں رہائش پذیر عثمان خالد نے لکھا ہے کہ اگر پاک سوزوکی کی زیادہ تر گاڑیاں بشمول مہران اور بولان کسی اور ملک میں پیش کی جاتیں تو یہ کبھی بھی روڈ کی شکل نہیں دیکھ سکتی تھیں۔

image02

علاوہ ازیں دیگر تبصرہ نگاروں کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان میں پہلی بار ‘پاور اسٹیئرنگ’ متعارف کروانے کی دعویدار سوزوکی ویگن آر کے بجائے ٹویوٹا پاسو اور FAW v2 خریدنے کو ترجیح دیں گے کیوں کہ ان گاڑیوں میں پاور اسٹیئرنگ کے علاوہ بھی بہت سی جدید سہولیات شامل ہیں۔

ہو سکتا ہے کہ پاک سوزوکی میں کام کرنے والے ہمارے دوست بھی ان شکایات سے نالاں ہوں لیکن یقین جانیئے، ہم پاکستان میں دستیاب گاڑیوں میں موجود مسائل پر صرف اس لیے روشنی ڈالتے ہیں تاکہ آپ اسے دور کر کے بہتر اور جدید گاڑیاں پیش کریں۔ لیکن کیا پاک سوزوکی میں کوئی ایسا ذمہ دار موجود ہے جو زبان خلق کو نقارہ خدا سمجھے؟

The feature packed Suzuki WagonR is practically perfect. #SuzukiPakistan #WagonR

Posted by Suzuki Pakistan on Monday, 12 October 2015

Asad Aslam

A PakWheeler with a degree in mass communication. He tweets as @masadaslam

Top