ٹویوٹا کیمری نے ڈرائیو کار آف دی ایئر 2018ء کا اعزاز جیت لیا


ٹویوٹا کیمری ہائبرڈ کی 8ویں جنریشن نے آسٹریلیا کا سب سے جامع، مؤقر اور صارفین پر مرتکز آٹوموٹو ایوارڈ “ڈرائیو کار آف دی ایئر 2018ء” جیت لیا۔

ٹویوٹا کیمری ہائبرڈ نے رواں سال 14 زمروں میں 48 دیگر حتمی امیدواروں کو انتہائی سخت دوڑ میں شکست دے کر ڈرائیو کار آف دی ایئر 2018ء کا اعزاز جیتا۔ گاڑی نے صرف یہ انتہائی مؤقر اعزاز ہی حاصل نہیں کیا بلکہ 7 روزہ طویل ٹیسٹنگ پروگرام کے دوران سات ماہر روڈ ٹیسٹرز کو بھی متاثر کیا کہ جو نیو ساؤتھ ویلز کے جنوبی پہاڑی علاقوں میں منعقد ہوا۔ ٹویوٹا کیمری ہائبرڈ نے بہترین فیملی کار میںتو واضح کامیابی حاصل کی، جہاں اس نے دو مرتبہ کی چیمپیئن اسکوڈا کی سپرب 162TSI کو شکست دی اور ڈرائیو کار آف دی ایئر کے لیے پیش قدمی کی۔ دوڑ میں حتمی چار امیدواروں میں ہیونڈے i30 N (60,000 ڈالرز سے کم کی بہترین پرفارمنس کار)، پورشَ کے یین S (80,000 ڈالرز سے کم کی کلاس میں بہترین لگژری SUV) اور ہیونڈے سانتا فی ایلیٹ (بہترین فیملی SUV) شامل تھیں۔

مندرجہ بالا تمام شاہکاروں کی اپنی خاصیتیں ہیں لیکن ٹویوٹا کیمری ایک مناسب قیمت پر کشادہ فیملی سیڈان کے طور پر آل اِن ون پیکیج ثابت ہوئی۔ گاڑی ایندھن کے لیے مؤثر ہائبرڈ ٹیکنالوجی کے ساتھ آتی ہے جو اسے مناسب قیمت بناتی ہے اور گاڑی سب سے اوپر آنے والی 49 حتمی گاڑیوں میں 10 ویں سب سے زیادہ مناسب قیمت گاڑی بھی قرار پائی۔

ٹویوٹا کیمری ہائبرڈ ایک نئی جنریشن کا 2.5 لیٹر فور-سلینڈر انجن رکھتی ہے جو ایک مؤثر ایٹکنسن سائیکل کمبسشن سیٹ اپ سے لیس ہے۔ انجن 131 Kw الیکٹرک موٹر کے بھی ساتھ ہے جو ایک ہموار کارکردگی کو یقینی بنانے کے لیے 221 Nm ٹارک پیدا کرتا ہے۔ مزید برآں، گاڑی جدید سیفٹی فیچرز سے لیس ہے جن میں ایڈاپٹِو کروز کنٹرول، لین کیپنگ اسسٹنٹ اور آٹومیٹڈ ایمرجنسی بریکنگ سسٹم کے ساتھ ریورس موڈ میں بہترین مدد دینے والا ریئر کیمرا شامل ہیں۔ سیفٹی آلات کے علاوہ یہ گاڑی کئی کارآمد سہولیات سے لیس ہے جیسا کہ ڈوئل-زون کلائمٹ کنٹرول اور سیٹیلائٹ نیوی گیشن سسٹم جو کشادہ اور آرام دہ کیبن اسپیس کے اندر ہیں۔

اس کے علاوہ ہیونڈے چار کیٹیگریز میں جیت کر 2018ء میں سب سے کامیاب برانڈ بھی بن گیا۔ کمپنی کے لگژری برانڈ جینیسس نے اپنی اسینشیا الیکٹرک کوپ کے لیے بیسٹ کونسیپٹ کار ایوارڈ حاصل کیا۔ ہیونڈے i30 SR، گزشتہ سال کی ڈرائیو کار آف دی ایئر کی فاتح نے اس سال بیسٹ اسمال کار میں اپنا اعزاز برقرار رکھا۔ مزدا بھی بیسٹ سٹی SUV ایوارڈ جیتنے والی اپنی اپڈیٹڈ CX-3 اور بیسٹ کنورٹیبل کیٹیگری میں شاندار MX-5 روڈسٹری کے ساتھ متعدد اعزاز جیت کر شو میں نمایاں رہا۔ BMW نے اپنی ہائبرڈ-پاورڈ 530e کے ساتھ متعدد اعزاز ہتھیائے جس نے لیکسس LS500h، آڈی A8L اور مرسڈیز-بینز CLS 450 جیسے مضبوط امیدواروں کے مقابلے پر 80,000 ڈالرز سے اوپر کی بیسٹ لگژری کار کلاس میں اپنے اعزاز کا دفاع کیا۔ دوسرا ایوارڈ نئی جنریشن کی M5 سے آیا کہ جس نے 60,000 ڈالرز سے زیادہ کی بیسٹ پرفارمنس کار میں مرسڈیز AMG E63 S اور آؤڈی RS5 کوپ کے خلاف سنسنی خیز مقابلے کے بعد کامیابی حاصل کی۔ مرسڈیز نے 80,000 ڈالرز سے کم کی بیسٹ لگژری کار کے لیے اپنی جدید C200 کے ساتھ بھی کامیابی حاصل کی۔ مقابلے کے دیگر مختلف فاتحین میں سبارو فورسٹر بھی شامل ہے کہ جس نے اسکواڈ کاروک اور مٹسوبشی ایکلپس کراس کے مقابلے میں بیسٹ اسمال SUV ایوارڈ جیتا۔ مزید برآں، فوکس ویگن کی نئی پولو نے مزدا2 میکس اور سوزوکی سوئفٹ GLX کو شکست دے کر بیسٹ سٹی کار ایوارڈ حاصل کیا۔ 80,000 ڈالرز سے کم کی کیٹیگری میں بیسٹ لگژری SUV کا اعزاز وولو کی XC60 D5 آر-ڈیزائن کو ملا۔

سیفٹی اور ماحولیاتی تحفظ میں جدت کو تسلیم کرتے ہوئے تمام 14 زمروں میں بہترین گاڑیوں کو ایوارڈز دینے کے ساتھ ساتھ سیفٹی انوویشن ایوارڈ اور گرین انوویشن ایوارڈ کے نام سے دو اعزازات بھی پیش کیے گئے۔ سیفٹی انوویشن ایوارڈ ساؤتھ آسٹریلیا کی حکومت کو پیش کیا گیا جو ممکنہ طور پر خطرناک تاکاتا ایئربیگز سے لیس تمام گاڑیوں کی ری-رجسٹریشن پر پابندی لگانے کے زبردست اقدام کی وجہ سے دیا گیا۔ البتہ گرین انوویشن ایوارڈ یکساں ووٹس کی وجہ سے مشترکہ طور پر نسان اور NRMA کو پیش کیا گیا۔ نسان کو اپنی آنے والی لیف کار کی وجہ سے اعزاز دیا گیا کہ جسے بجلی واپس گھرانوں کو فراہم کرنے کی صلاحیت کی وجہ سے سراہا گیا۔ یہ ریورس انرجی گاڑی کے ممکنہ مالکان کو ہزاروں ڈالرز کی بچت کی سہولت فراہم کر رہی ہے۔ دوسری جانب NRMA کو 10 ملین ڈالرز کی سرمایہ کاری سے EV چارجنگ اسٹیشنز کا زبردست جال پھیلانے پر مانا گیا۔

دنیا بھر سے تازہ ترین خبروں کے لیے پاک ویلز پر آتے رہیے۔ اگر آپ کوئی تجویز رکھتے ہیں تو ہمیں نیچے تبصروں میں آگاہ کیجیے۔


Ahmad Shehryar

An Electrical Engineer by profession who writes automotive content at Pakwheels and a photographer.

Top