ٹویوٹا کرولا ایگزیو: گاڑی خریدنے والوں کے لیے اہم معلومات

2006_Toyota_Corolla-Axio

میں اور آپ بخوبی جانتے ہیں کہ پاکستان میں سب سے زیادہ کونسی گاڑی فروخت ہوتی ہے؟ جی ہاں ٹویوٹا کرولا۔ پاکستان میں دستیاب ٹویوٹا کرولا کا انداز مشرقی وسطی میں پیش کردہ کرولا سے لیا گیا ہے۔ ٹویوٹا نے مقامی مارکیٹ کے لیے خصوصی طور پر کرولا برانڈ کو وسعت دی اور آج جاپان میں کرولا صرف کرولا نہیں رہی۔ ٹویوٹا نے سال 2006 میں کرولا کی دسویں جنریشن متعارف کروائی تو سیڈان طرز کی گاڑی کا نام ایگزیو جبکہ اسٹیشن ویگن کا نام فیلڈر رکھا گیا۔ جس گاڑی سے متعلق ہم آج بات کرنے جا رہے ہیں وہ پاکستانی کرولا (2008-2014) سے زیادہ مختلف نہیں ہے۔

2007 Toyota Corolla Axio

2007 Toyota Corolla Axio

ٹویوٹا نے جاپان کی مقامی مارکیٹ کے لیے پیش کی جانے والی کرولا ایگزیو میں تمام جدید سہولیات شامل کیں۔ ان میں سے ایک پارکنگ اسسٹ بھی ہے جو پیچیدہ جگہوں پر گاڑی کھڑی کرنے میں ڈرائیور کی رہنمائی کرتا ہے۔ اس کے علاوہ کرولا ایگزیو میں ریورسنگ کیمرہ بھی لگایا گیا ہے۔ مزید برآں ایگزیو میں شامل پری کریش بریک اسسٹ کے ذریعے گاڑی کو خطرناک حادثات سے بھی بچایا جاسکتا ہے۔ ایک عام ڈرائیور کے لیے کسی بھی ہنگامی صورتحال میں اپنا پیر پیڈل سے اٹھا کر بریک پر رکھنے میں چند لمحات خرچ ہوجاتے ہیں جبکہ گاڑی میں شامل کمپیوٹر ٹیکنالوجی کی مدد سے یہی کام بغیر کسی توقف ہوجاتا ہے۔ اور پھر ایگزیو کے جی ٹی ورژن کی تو کیا ہی بات ہے۔ اس میں ٹربو چارجڈ انجن لگایا گیا ہے جو 150 بریک ہارس پاور فراہم کرتا ہے۔ گاڑی کے باہری حصے میں بھی کئی ایک تبدیلیاں کی گئی ہیں جن میں بڑے پہیے بھی شامل ہیں۔ ذیل میں ٹویوٹا ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ کی تیار کردہ ایگزیو اور فیلڈر ملاحظہ کرسکتے ہیں۔

corolla axio trd gtcorolla fielder trd gt

ٹویوٹا کرولا 2 انجن کے ساتھ دستیاب ہے جن میں 1500 سی سی 1NZ-FE (108 بریک ہارس پاور) اور 1800 سی سی 2ZR-FE (130 بریک ہارس پاور) شامل ہیں۔ سال 2010 کے بعد 1800 سی سی کو بہتر کر کے 2ZR-FAE کے نام سے پیش کیا گیا جو ایندھن کے باکفایت استعمال کی صلاحیت رکھتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ٹویوٹا وِٹز: پہلی سے تیسری جنریشن تک کی مکمل معلومات

یہ گاڑی 5 اسپیڈ مینوئل اور CVT دونوں طرز کی ٹرانسمیشن کے ساتھ پیش کی جاتی ہے۔

پاکستان میں کرولا ایگزیو کی درآمد سال 2009-2010 سے شروع ہوئی۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ مارکیٹ میں سال 2006 سے پہلے تیار ہونے والی ایگزیو بھی موجود ہیں جو بالکل غلط اور جعلی ٹیگز ےکے ساتھ فروخت کرنے کی کوشش کی جارہی ہیں۔ دسویں جنریشن ٹویوٹا کرولا سال 2006 میں پیش کی گئی تو یہ کیسے ممکن ہے کہ 2003 یا 2004 کا ماڈل بھی ایگزیو ہو۔ بہرحال، پاکستان میں دستیاب کرولا ایگزیو کے ویریئنٹس درج ذیل ہیں:
ایگزیو جی 1.5
لیوکزل 1.5
ایگزیو ایکس 1.5
X اسپیشل ایڈیشن 1.5
X ایچ آئی ڈی ایکسٹرا لمیٹڈ 1.5
ہائبرڈ 1.5
لیوکزل 1.8
لیوکزل ایلفا ایڈیشن 1.8

کرولا ایگزیو 2007 عام طور پر 11 لاکھ روپے سے 19 لاکھ روپے تک دستیاب ہے۔ کرولا ایگزیو 2007 لیکوسل 1800 سی سی کی زیادہ سے زیادہ قیمت 21 لاکھ روپے ہے۔ اگر آپ کا بجٹ اور بھی زیادہ ہے تو نئے ماڈل کی 1500 سی سی ہائبرڈ ایگزیو 2015 بھی خرید سکتے ہیں جس کی قیمت 35 لاکھ روپے کے لگ بھگ ہے۔ البتہ ایگزیو 2012-14 تقریباً 28 سے 32 لاکھ روپے میں بھی مل جائے گی۔ 1800 سی سی انجن والی ایگزیو بہرحال 1500 سی سی قیمت میں زیادہ ہی ہے۔ نئی 1800 سی سی ایگزیو 2007 کی قیمت 15 لاکھ روپے سے 20 لاکھ روپے تک ہے۔

2012 Toyota Corolla Axio 1.5 Luxel

2012 Toyota Corolla Axio 1.5 Luxel

مقامی کرولا 1300 سی سی (XLi یا GLi) میں 2NZ-FE انجن استعمال کیا گیا ہے جبکہ اسی NZ جنریشن کا 1NZ انجن ایگزیو میں استعمال کیا گیا ہے۔ جبکہ سال 2010 سے قبل پیش کی جانے والی ایگزیو اور پاکستان میں تیار ہونے والی کرولا آلٹِس گرانڈے میں استعمال ہونے والا 1800 سی سی 2ZR-FE بھی یکساں ہے۔

یہ بھی دیکھیں: ہونڈا سِوک اوریئل پروسمیٹک بمقابلہ ٹویوٹا کرولا آلٹس گرانڈے

عام کرولا اور اگزیو کا انجن اور ٹرانسمیشن تقریباً ایک جیسے ہی ہیں۔ اس لیے اگر آپ کرولا ایگزیو کا ارادہ رکھتے ہیں اور انجن یا ٹرانسمیشن کی وجہ سے پریشان ہیں تو اپنی پریشانی ترک کریں اور پاکستان میں موجود ٹویوٹا 3S ڈیلر شپ سے رابطہ کریں۔ البتہ اس کے اسپیئر پارٹس کی دستیابی مسئلہ بن سکتی ہے۔ بڑے شہروں میں ایگزیو کے اسپیئر پارٹس مہنگے داموں دستیاب ہیں۔

2014 Corolla Altis

2014 Toyota Corolla Altis

گاڑی کے ساتھ ویسے تو کوئی مسئلہ نہیں البتہ کار چوروں کی یہ محبوب ترین گاڑی ہے اور یہی بات پریشانی کا باعث بن سکتی ہے۔ سال 2010 سے پہلے کی کرولا ایگزیو چٹکی بجاتے غائب ہوجاتی ہے۔ اسپیئر پارٹس کی اضافی مانگ بھی چوروں کی کمائی میں اضافے کا باعث بن رہی ہے۔ پاکستان میں اس گاڑی کو پسند نہ کیے جانے کی اگر کوئی وجہ ہے تو وہ یہی چوری ہونے کا ڈر ہے۔

مختصر یہ کہ کرولا ایگزیو ایک بہترین گاڑی ہے۔ نہ صرف اپنے انداز بلکہ سفری تجربے میں بھی اپنی مثال آپ ہے۔ اگلی بار آپ سیڈان گاڑی لینے کے لیے نکلیں تو کرولا ایگزیو پر نظر ڈالنا ہر گز مت بھولیے گا۔

Top