زاروق سینڈ ریسر– دبئی میں تیار ہونے والی صحرائی گاڑی

zarooq-sand-racer-12

ڈبلیو موٹرز Fenyr سوپر اسپورٹ پیش کرنے والا اسٹوڈیو مزید بہتر گاڑی پیش کرنے والا ہے۔ اس بار زاروق موٹرز انتہائی پُر حجم گاڑی کے ساتھ سامنے آیا ہے جس کا نام ‘سینڈ ریسر’ ہے۔ گو کہ اس وقت ہمارے پاس زاروق موٹرز سے حاصل ہونے والی گاڑی کے خاکے ہی ہیں لیکن ساتھ ہی اطلاع بھی ہے کہ سینڈ ریسر تکمیل کے مراحل میں ہیں اور ہم بہت جلد اسے صحراؤں میں اچھلتے کودتے اور تفریح کرتے دیکھ سکیں گے۔ لیکن یہ گاڑی صرف صحراؤں میں تفریح کی غرض سے نہیں بنائی گئی بلکہ اسے عام سڑکوں پر دوڑانے کے لیے بھی خصوصی طور پر ڈیزائن کیا گیا ہے۔

zarooq-sand-racer-9

زاروق کے ڈائریکٹر محمد القادی نے سینڈ ریسر سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ

متحدہ عرب امارات دنیا بھر میں عظیم صحراؤں، شکار گاہوں اور ریتیلے علاقوں میں ہونے والی دوڑ کے مقابلوں کی وجہ سے مشہور ہے۔ تاہم امریکی اور جاپانی گاڑیاں اس قابل نہیں کہ عرب امارات کی نامور جگہوں کا مکمل لطف اٹھایا جاسکے۔ یہی وجہ ہے کہ ہم نے ایک ایسی گاڑی تخلیق کی جس کے خواب ہم ایک عرصے سے دیکھ رہے تھے۔ یہ گاڑی صحرائی دوڑ میں حصہ لینے کی بھی خصوصی اہلیت رکھتی ہے۔”

گاڑی کے خاکے دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ اسے صرف صحراؤں ہی میں چلانے کے لیے تیار کیا گیا ہے اور اس کا شہری سڑک سے کوئی میل نہیں۔ بڑے بڑے پہیے ااور ان پر چڑھے ہوئے ٹائر دیکھ کر کوئی بھی یہ نہیں کہے گا اسے شہر میں چلایا جاسکتا ہے۔ سینڈ ریسر کے ڈیزائنر اینتھونی جیناریلی، جو لائیکن ہائپر اسپورٹ منصوبے کے لیے بھی رہنما ڈیزائنر تھے، نے گاڑی کے ڈیزائن سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ

“بلاشبہ اسے بامقصد ہونا چاہیے یہی وجہ ہے کہ اس کی اونچائی، اس کا وزن اور اندر بیٹھنے کی جگہ کو خصوصی طور پر ڈیزائن کیا ہے۔ اس میں شہر کی عام سڑک پر چلنے کی بھی اہلیت ہے۔ اس وقت ہماری نظریں ایک ایسی گاڑی تیار کرنے پر مرکوز ہیں جو منفرد اور اپنی مثال آپ ہو۔ ہمیں امید ہے کہ یہ خواب جلد شدمندہ تعبیر ہوگا۔

سینڈ ریسر صرف ایک ادارے کی پیش کش نہیں بلکہ زاروق موٹرز کے ساتھ جینریلیل اینڈ جولیٹ اسپیشل این کیمپوز ریسنگ نے بھی اس کے ڈیزائن، تخلیق، مہارت اور تیاری میں اپنا کردار ادا کیا ہے۔

3500 سی سی V6 انجن کی حامل سینڈ ریسر کو 6 اسپیڈ آٹو گیئرباکس سے آراستہ کیا گیا ہے جس کی مدد سے 300 بریک ہارس پاور اور 371 نوٹن میٹر ٹارک پیدا ہوتا ہے۔ انجن کو گاڑی کے پچھلے حصے میں لگایا گیا ہے جس کا وزن 60 آگے /40 پیچھے کے اعتبار سے تقسیم کیا گیا ہے۔ گاڑی کا مجموعی وزن 1 ہزار کلو گرام ہے۔ اس وزن کے ساتھ گاڑی کو پچھلے پہیوں پر چلنے کے لیے تیار کیا جا رہا ہے اس لیے ہمارا نہیں خیال کہ ریت میں اسے کسی قسم کی مشکل پیش آئے گی۔ سینڈ ریسر کی اونچائی ایک فٹ سے زیادہ رکھا گیا ہے جس سے گاڑی اونچے نیچے راستوں پر رگڑ نہیں کھائے گی۔

zarooq-sand-racer-6

اگر آپ مزید جذباتی انداز اور برق رفتاری کے خواہش مند ہیں تو تھوڑا خرچہ کر کے انجن کو 500 بریک ہارس پاور تک پہنچانے، بریکس کی قوت بڑھانے یا پہیوں اور سسپنشن کو مزید بہتر بنا سکتے ہیں۔

گوکہ اسے بنانے کا مقصد عام مسافروں کے آرامدہ سفر کے ساتھ دوڑ کے مقابلوں میں شرکت کرنے والی گاڑی کا اختلاط تھا تاہم یہ دراصل ریت میں چلائی جانے والی گاڑی ہے اس لیے آپ زیادہ آرامدے سفر کی توقع نہ رکھیں تو بہتر ہے۔ اس کی نشستیں کپڑے سے بنائی گئی ہیں اور ان پر مضبوط سیٹ بیلٹس بھی لگائی گئی ہیں۔ متحدہ عرب امارات کے موسم کو دیکھتے ہوئے طاقتور ایئرکینڈیشن بھی لگایا گیا ہے۔ اگر آپ شہر میں بھی گاڑی چلانا چاہتے ہیں تو اس میں اضافی سہولیات شامل کرنے کا بھی انتخاب موجود ہے۔

مختلف انداز اور پیکجز کے ساتھ سینڈ ریسر کی قیمت 80 ہزار امریکی ڈالر سے 1 لاکھ 60 ہزار امریکی ڈالر تک ہوگی۔ متحدہ عرب امارات میں مہنگی گاڑیوں کا شوق صرف امراء ہی کو نہیں بلکہ وہاں کی پولیس بھی تمام اقسام کی جدید اور برق رفتار گاڑیاں استعمال کرنا پسند کرتی ہے۔ اس لیے ہم توقع رکھ سکتے ہیں کہ چند سینڈ ریسر تو پولیس کی نفری میں بھی جلد شامل کی جائیں گی۔ اس گاڑی کی تخلیق کے پیچھے خطے میں موجود ریگستانوں میں گاڑیوں کے دوڑ کے مختلف مقابلوں کی تیاری کرنا بھی ہے۔ اس منصوبے میں شامل تمام نمایاں شخصیات کا پس منظر گاڑیوں کی دوڑ سے جڑا ہوا ہے۔

یہ کہنا قبل از وقت ہے کہ سینڈ ریسر کامیاب ہوگی یا اسے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے گا لیکن ایک بات واضح ہے کہ زاروق سینڈ ریسر کی آمد سے متحدہ عرب امارات میں کار سازی کی صنعت کو فروغ دینے میں مدد ملے گی۔

Top