الیکٹرک وہیکل پالیسی (4-ویلرز) کی منظوری – تفصیلات یہ ہیں

0 4 924

وفاقی حکومت نے بالآخر 4-ویلرز کے لیے EV پالیسی کی منظوری دے دی ہے۔ پالیسی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ECC) کے ایک اجلاس کے دوران منظور کی گئی۔ یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ حکومت پہلے ہی 2 یا 3 ویلرز اور کمرشل گاڑیوں کے لیے EV پالیسی منظور کر چکی ہے۔

اجلاس کے دورنا حکومت نے کہا کہ پالیسی کو کئی پیچیدگیوں کی وجہ سے حتمی صورت دینے میں وقت لگا۔ اس کے علاوہ موجودہ اوریجنل ایکوئپمنٹ مینوفیکچررز (OEMs) کے ساتھ طویل مشاورتی عمل بھی اس تاخیر کی وجہ بنا۔

جدید پالیسی میں حکومت نے CBU، CKD، اسپیئر پارٹس کی امپورٹ، ٹول ٹیکس اور رجسٹریشن فیس پر کافی رعایتیں پیش کی ہیں۔ اس تحریر میں ہم اس پالیسی کے نمایاں نکات پر بات کریں گے تاکہ پاک ویلرز اس پالیسی کو آسانی سے سمجھ سکیں۔

‏EV پالیسی (4-ویلرز) کے اہم نکات:

‏EV پالیسی (4-ویلرز) کے اہم نکات یہ ہیں:

  • نئی پالیسی 30 جون 2026 تک لاگو رہے گی۔
  • کمپلیٹلی ناکڈ ڈاؤن (CKD) یونٹس کے لیے EV کے مخصوص پارٹس پر 1 فیصد کسٹمز ڈیوٹی (CD) ہوگی جبکہ کوئی ایڈیشنل کسٹم ڈیوٹی (ACD) یا ریگولیٹری ڈیوٹی (RD) یا ویلیو ایڈڈ ٹیکس (VAT) نہیں ہوگا۔
  • کمپلیٹلی بلٹ یونٹس (CBUs) کی امپورٹ پر 25 فیصد CD، صفر ACD اور RD ہوں گی۔
  • EV 4-ویلرز کے لیے پلانٹ اور مشینری کی ڈیوٹی فری امپورٹ۔
  • ہر کمپنی 50 فیصد CD کے ساتھ 100 عدد CBUs امپورٹ کر سکتی ہے۔
  • EV چارجرز پر 1 فیصد CD۔
  • 50kWh یا اس سے کم کی بیٹری رکھنے والی چھوٹی گاڑیوں اور اسپورٹس یوٹیلٹی گاڑیوں کی CKD صورت میں یا 150kWh بیٹری کی حامل لائٹ کمرشل گاڑیوں (LCVs) کی امپورٹ سیلز ٹیکس اور VAT سے مستثنیٰ ہوں گی، لیکن سیلز پر 1 فیصد سیلز ٹیکس ہوگا۔
  • الیکٹرک گاڑیوں پر کوئی فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی (FED) نہیں ہوگی۔
  • قومی شاہراہوں (نیشنل ہائی ویز) پر EVs کو 50 فیصد کم ٹیکس دینا ہوگا۔
  • EV کے لیے کم قیمتوں پر کار فائنانسنگ کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان (SBP) میں اسپیشل ونڈو۔
  • وفاقی حکومت صوبائی حکومتوں سے درخواست کرے گی کہ وہ EVs کی رجسٹریشن فیس اور سالانہ renewal ٹوکن معاف کر دے۔

نئی پالیسی پر تبصرہ کرتے ہوئے وزیر صنعت و پیداوار حماد اظہر نے کہا کہ «یہ پاکستان میں الیکٹرک گاڑیوں کی خریداری، مینوفیکچرنگ اور ان کے استعمال کے فروغ میں اہم ثابت ہوگی۔»

 

 

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.