ٹائروں کا شور کم کرنے کے لیے کچھ ٹپس

0 8 682

ٹائروں کا شور پریشان کرنے والا اور ناپسندیدہ ہو سکتا ہے اور آخر ہم میں سے کون ہوگا جو اسے مکمل طور پر ختم نہیں کرنا چاہے گا؟ تو آج ہم آپ کے لیے کچھ ٹپس لائے ہیں کہ اپنی گاڑی کے ٹائروں کا شورکس طرح کم کیا جائے۔

وِیل سائز

وِیل سائز جتنا بڑا ہوگا، ٹائر اتنا ہی شور پیدا کریں گے۔ اس کا مطلب ہے کہ اگر کار 18 انچ کے ویلز رکھتی ہے تو اس کے ٹائر 15 انچ کے ویلز رکھنے والی کار سے زیادہ شور پیدا کریں گے۔ ٹائر کی اونچائی کی وجہ سے بھی ایسا ہوتا ہے۔ ٹائر کی اونچائی جتنی زیادہ ہوگی شور اتنا ہی کم ہوگا اور جتنی کم شور اتنازیادہ۔ 15 انچ کے ویلز میں موٹے ٹائروں کے لیے 18 انچ والوں سے زیادہ جگہ ہوگی۔ یہ جاننا ضروری ہے کہ آپ کی گاڑی کے لیے بہترین وِیل سائز کون سا ہے؟ یہ بات آپ کو گاڑی کے یوزر مینوئل سے پتہ چل جائے گی۔ آسان الفاظ میں یہ کہ آپ کو گاڑی کی شکل و صورت اور ٹائروں سے نکلنے والے شور کے درمیان ایک بیلنس بنانا ہوگا۔ اس لیے انتخاب سوچ سمجھ کر کریں۔

ٹائر کی چوڑائی

جب ٹائر کا زیادہ حصہ سڑک کے ساتھ ملا ہوا ہوگا تواس سے اتنا ہی زیادہ شور پیدا ہوگا۔ اس سے نمٹنے کے لیے ہم آپ کو گاڑی میں جتنا ہو سکے اتنے پتلے ٹائر لگانے کا مشورہ دیں گے۔ لیکن پتلے ٹائروں کی بھی ایک حد ہوتی ہے۔ آپ ایسا نہیں کر سکتے کہ دکان پر جا کر سب سے پتے ٹائر خرید لیں، اس کے بجائے گاڑی کے مینوئل میں دیکھیں کہ جہاں آپ کو وہ dimensions درج ملیں گی جو مینوفیکچرر آپ کی کار کے لیے تجویز کرتا ہے۔ سڑک پر ٹائر جتنا کم گھسے گا، شور اتنا ہی کم پیدا ہوگا۔ ہم یہ بھی کہہ سکتے ہیں کہ کم رگڑ اور بہتر پرفارمنس۔

اسپیڈ اور وَیٹ ریٹنگ:

نئے ٹائر خریدتے ہوئے زیادہ تر لوگ یہ نہیں دیکھتے کہ مختلف اسپیڈ کے ساتھ ساتھ گاڑیوں کے وزن کے لحاظ سے مختلف ٹائرز ہوتے ہیں۔ ہم نے کئی بار ٹائروں کی description جیسا کہ ‏185/60R14 دیکھی ہوگی۔ اس میں 185 ہمیں ٹائر کی چوڑائی (ملی میٹرز) بتاتی ہے جبکہ دوسرا نمبر (60) ہمیں aspect ratio بتاتا ہے۔

آسان الفاظ میں کہیں تو زیادہ aspect ratio کا مطلب ہے ربڑ کی زیادہ موٹی تہہ۔ R کا مطلب ہے ریڈیل، اور آخری نمبر 14 ہمیں رِم کے ڈایامیٹر کے بارے میں بتاتا ہے، یعنی وِیل سائز 14 انچ کا ہے۔ آپ کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ لوڈ انڈیکس اور زیادہ سے زیادہ اسپیڈ کے چارٹ پر ایک نظر ڈالیں اور ایسے ٹائر کا انتخاب کریں جو آپ کے خاص لوڈ سائز اور آپ کی ڈرائیونگ کے انداز کے مطابق ہو کیونکہ زیادہ لوڈ کے لیے بنائے گئے ٹائر زیادہ شور کرتے ہیں کیونکہ ان کو بنانے میں زیادہ سخت مٹیریلز کا استعمال کیا جاتا ہے۔

موسمی حالات

یہ ٹائروں کے شور کرنے کا سبب بننے والا ایک اور بڑا عنصرہے۔ جس ماحول میں آپ ڈرائیو کر رہے ہیں اس کے لیے مناسب ٹائر کا استعمال ضروری ہے۔ سردیوں کے لیے آپ studless ٹائر خریدیں جو زیادہ خاموش ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ بھی ضروری ہے کہ سیفٹی کو بھی اتنا ہی ذہن میں رکھیں کیونکہ صرف شور کم کرنا ہی واحد مقصد نہیں ہے۔ studless ٹائر ایسی ربڑ کمپوزیشن کے بنے ہوتے ہیں جو گرمیوں کے ٹائروں سے نرم ہوتی ہے، جو انہیں کم شور کرنے والا بھی بناتی ہے۔ یوں ان ٹائروں کے ساتھ سال بھر گاڑی چلانا اچھا تو لگتا ہے لیکن زیادہ خوش مت ہوں کیونکہ non-studded ٹائرز بہت خطرناک بھی ہو سکتے ہیں۔ گرمیوں میں انہیں لگا کر کبھی گاڑی مت چلائیں اور اس موسم میں studded ٹائر ہی استعمال کریں۔

ٹائر مٹیریل اور پیٹرنز:

ہمارے لیے یہ خوش قسمتی ہے کہ ٹائر مینوفیکچررز بھی اپنے ٹائر noise ٹیسٹ کر رہے ہیں اور ریٹنگز شیئر بھی کر رہے ہیں۔ آپ کے لیے مختلف ربڑ کمپوزیشن اور ٹائر tread پیٹرنز کی بڑی سلیکشن موجود ہے۔ مینوفیکچرر کی سپورٹ سے رابطہ کرنے کی کوشش کریں تاکہ آپ کو معلوم ہو کہ آپ کی ڈرائیونگ کنڈیشنز کے حساب سے کون سے ٹائرز موجود ہیں۔ ایسا ممکن نہ ہو تو کسی قابلِ بھروسہ ڈیلر سے رابطہ کریں جو ٹائروں کے بارے میں کچھ جانتا ہو۔ عام طور پر ٹائر مینوفیکچرر کسی مخصوص ٹائر کے لیے dB ریٹنگ دیتے ہیں جو آپ کو کچھ معلومات ضرور دے دیتی ہے۔ اس کے علاوہ اپنی لوکل مارکیٹ میں ٹائر ریویوز ضرور دیکھیں تاکہ آپ بہترین noise ریٹنگ رکھنے والے ٹائروں کے بارے میں جان سکیں۔ بہتر معلومات کے لیے لوکل کار اور ٹائر ڈیلروں سے بات کریں۔

جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ دنیا کے مختلف علاقوں میں روڈ کی کنڈیشن اور سڑکوں کے خراب/ہموار ہونے کی صورت مختلف ہے۔ اس لیے یہ کہا جا سکتا ہے کہ نرم ربڑ کمپوزیشن رکھنے والے ٹائر عام طور پر ذرا خاموش ہوتے ہیں اور ٹائر پیٹرنز کے حوالے سے بھی یہی کہا جا سکتا ہے۔

البتہ آپ کو بہتر فیصلے کے لیے کچھ ٹائروں کو پہلے سے ٹیسٹ کرنا چاہیے کیونکہ اصل چیز تجربہ ہے۔

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.