ٹویوٹا کا منافع میں زبردست اضافے کا اعلان!

0 7 343

ٹویوٹا انڈس موٹر کمپنی (IMC) نے مالی سال ‏2020-21 کی پہلی سہ ماہی میں منافع میں زبردست اضافہ ظاہر کیا ہے۔ مالیاتی نتائج کے مطابق کمپنی نے پہلی سہ ماہی میں 1.84 ارب روپے کا منافع دکھایا ہے، جو پچھلے سال کے اسی عرصے میں 1.31 ارب روپے سے 40.50 فیصد زیادہ ہے۔

اس کے علاوہ کمپنی نے 12 روپے فی شیئر کے کیش dividend کا اعلان بھی کیا ہے۔

ڈیٹا نے ظاہر کیا ہے کہ سہ ماہی کے دوران IMC کی کمپلیٹ بلٹ اپ (CBU) اور کمپلیٹ ناکڈ ڈاؤن (CKD) یونٹس کی مشترکہ فروخت میں 73 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ کمپنی نے پچھلے سال کے اسی عرصے میں 6,839 یونٹس کے مقابلے میں اس مرتبہ 11,809 گاڑیاں فروخت کی ہیں۔ کمپنی نے مالی سال کی ‏2020-21 کی پہلی سہ ماہی کے دوران مجموعی مارکیٹ کا 27 فیصد حصہ اپنے پاس رکھا۔

ٹویوٹا کی نیٹ سیلز:

اس کےعلاوہ سہ ماہی کے لیے ٹویوٹا کی نیٹ سیلز 65 فیصد اضافے کے ساتھ 34.19 ارب روپے رہیں جو پچھلے سال کے اسی عرصے میں 20.72 ارب روپے تھیں۔

البتہ پاکستانی روپے کی قدر میں کمی اور لاگت میں اضافے کی وجہ سے کمپنی کا مجموعی مارجن پچھلے سال کے انہی مہینوں میں 9.7 فیصد سے گھٹ کر 6.7 فیصد ہو گیا۔

منافع اور سیلز میں اتنے بڑے اضافے کی وجہ ٹویوٹا یارِس کو ملنے والا زبردست ردعمل ہے۔ اس کے علاوہ IMC کووِڈ-19 پابندیوں کے نرم ہونے کے بعد بہترین انداز میں بحال بھی ہوا۔ PAMA کی ماہانہ رپورٹ کے مطابق ستمبر 2020ء میں ٹویوٹا کی سال بہ سال فروخت میں 106 فیصد اور ماہ بہ ماہ فروخت میں 32 فیصد اضافہ ہوا۔

اپنی گاڑیوں کی زبردست ڈیمانڈ کی وجہ سے کمپنی نے ڈبل شفٹ پروڈکشن کے دوبارہ آغاز کا اعلان کیا ہے۔ IMC لوکل کنزیومرز کی بڑھتی ہوئی ڈیمانڈ کو پورا کرنے کے لیے اقدامات اٹھا رہا ہے۔ اس کے علاوہ کمپنی نے اپنی سالانہ پیداوار 80,000 یونٹس تک بڑھانے کا منصوبہ بھی بنایا ہے۔ اس وقت IMC کی موجودہ پیداوار 66,000 گاڑیاں سالانہ ہے۔

 

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.