پاکستان میں تیار شدہ ہونڈا سوک 2016 کو آگ لگ گئی

Honda Civic On Fire 2

پاکستان میں تیار کی جانے والی سیڈان ہونڈا سوک 2016 بھی غیر تربیت یافتہ مقامی میکینک کے ہاتھوں تباہ ہونے والی گاڑیوں میں شامل ہوگئی۔ ابتدائی رپورٹ کے مطابق ہونڈا سوک میں آگ لگنے کی مختلف وجوہات بتائی جارہی ہیں جن میں ناقص وائرنگ، بیٹری میں دھماکا اور گاڑی کا حادثے سے شکار ہونا بتایا جارہا ہے۔

مختلف ذرائع سے حاصل ہونے والی تازہ ترین اطلاعات کے مطابق ہونڈا سوک میں آگ لگ جانے کی وجہ ناقص وائرنگ اور غیر معیاری HIDs کا استعمال ہے۔ بونٹ کے اندر موجود HID کی ناقص وائرنگ کے سبب لگنے والی آگ نے چند ہی لمحوں میں گاڑی کے دیگر پرزوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ شدید تپش اور درجہ حرارت میں اضافے سے بیٹری بھی دھماکے سے پھٹ گئی جس سے گاڑی کے انجن کو شدید نقصان پہنچا۔ علاوہ ازیں بیٹری سے نکلنے والے تیزاب نے گاڑی کے چیسز کو بھی شدید متاثر کیا ہے۔

اس سے قبل پاکستان میں گاڑی نظر آتش ہونے کا ایک واقعہ نسان بلوبرڈ کے ساتھ بھی پیش آچکا ہے۔ نسان بلوبرڈ میں لگنے والے آگ کی وجہ بھی غیر تربیت یافتہ افراد کی جانب سے آڈیا سسٹم کی غلط تنصیب رہی تھی۔ آڈیو سسٹم کی ناقص وائرنگ سے لگنے والی آگ نے نسان بلو برڈ کو مکمل طور پر تباہ کردیا تھا۔

مزید پڑھیں: ناقص وائرنگ کے باعث نسان بلوبرڈ کی تباہی

اب پاکستانی ہونڈا سوک 2016 کے ساتھ پیش آنے واقعے نے اس بات کی اہمیت کو مزید اجاگر کیا ہے کہ گاڑی میں کسی بھی قسم کا تکنیکی کام کروانے کے لیے ہمیشہ نامور اور تربیت یافتہ افراد اور اداروں ہی کی خدمات حاصل کرنی چاہیئں۔ علاوہ ازیں استعمال شدہ گاڑی خریدنے سے قبل بھی تکنیکی نوعیت کا جائزہ لیا جانا ضروری ہے تاکہ مستقبل میں کسی بھی بڑی پریشانی سے محفوظ رہا جاسکے۔

Top