کیا پاکستان کو اِس سال الیکٹرک بسیں ملیں گی؟

0 1 817

حکومتِ پاکستان اِس سال ملک میں الیکٹرک بسیں چلانے کی تیاریاں کر رہی ہے۔ وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے آج اسکائی ویل آٹوموبائل چین اور ڈائیوو ایکسپریس کے درمیان ایک اسٹریٹجک الائنس کا اعلان کیا ہے۔

اس معاہدے کے تحت دونوں پارٹیاں ملک میں الیکٹرک وہیکل ویلیو چَین بنائیں گی۔

پاکستان میں الیکٹرک بسوں کی مینوفیکچرنگ:

ایک ٹوئٹ میں وفاقی وزیر نے کہا ہے کہ الیکٹرک بسیں اِسی سال سڑکوں پر آ جائیں گی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ «تین سالوں میں یہ بسیں مکمل طور پر پاکستان میں بننا بھی شروع ہو جائیں گی۔»

معاہدے پر دستخط کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ حکومت الیکٹرانک ایجادات پر اپنی نظریں جمائے ہوئے ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیٹری بسیں جلد ہی پاکستان میں چلتی نظر آئیں گی۔ «اسکائی ویل اور ڈائیوو کا معاہدہ ملک کے لیے ایک بڑی کامیابی ہے۔»


وزير نے یہ بھی کہا کہ پاکستان الیکٹرک بسیں رکھنے والا جنوبی ایشیا کا پہلا ملک ہوگا۔

پاکستان میں الیکٹرک بسوں کا پسِ منظر:

جنوری 2020 میں وزیر اعظم کے مشیر برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم نے کہا تھا کہ پاکستان میں جلد ہی الیکٹرک بسیں لائی جائیں گی، اور ان کے کہنے کے مطابق پاکستان ملک میں آلودگی کے خاتمے کے لیے یہ بسیں لانچ کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ ابتدائی مرحلے میں یہ گاڑیاں پنجاب کے صوبائی دارالحکومت یعنی لاہور میں چلیں گی۔

ملک امین اسلم نے کہا کہ حکومت روایتی انجن رکھنے والی گاڑیوں سے پھیلتی خطرناک آلودگی کو کم کرنے کے لیے ضروری اقدامات اٹھا رہی ہے۔

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.