ٹویوٹا یارِس اے ٹی آئی وی ایکس سی وی ٹی 1.5: ایک مالک کا ریویو

0 4 303

ہم ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT 1.5 کے ایک اور ریویو کے ساتھ حاضر ہیں، جو خود اس کے ایک مالک نے کیا ہے۔ ٹویوٹا انڈس موٹرز (IMC) نے مارچ میں یارِس کے متعدد ویرینٹس لانچ کیے تھے۔ تو آئیے جلدی سے اس گاڑی کا ریویو شروع کرتے ہیں۔

engine

خریداری کا فیصلہ، قیمت:

مالک نے پاک ویلز کو بتایاکہ انہوں نے یہ گاڑی مئی میں بُک کروائی تھی اور انہیں ستمبر میں ملی۔ انہوں نے کہا کہ «جب میں نے یہ کار بُک کروائی تھی تو ڈیلرشپ نے مجھے اگست کی تاریخ دی تھی، لیکن جب میں نے پے آرڈر جمع کروایا تو انہوں نے تاریخ تبدیل کرکے ستمبر کر دی۔»

مالک نے یہ گاڑی 29 لاکھ 93 ہزار روپے میں خریدی۔

خریداری کے فیصلے کے بارے میں بات کرتے ہوئے مالک نے کہا کہ ان کے پاس اس بجٹ میں 1.6L ٹویوٹا آلٹس اور ہونڈا سٹی کا ٹاپ ویرینٹ خریدنے کا آپشن تھا۔ انہوں نے وضاحت کی کہ «میں نے چار سال تک سٹی چلائی تھی اور یارِس میں آلٹس سے زیادہ آپشن تھے، اس لیے میں نے اس گاڑی کا انتخاب کیا۔»

اس کے علاوہ وہ ایک نئی گاڑی خریدنا چاہتے تھے، اس لیے انہوں نے امپورٹڈ استعمال شدہ گاڑیوں کا رُخ نہیں کیا۔

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 کے اہم فیچرز:

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 اسمارٹ انٹری، الارم، اموبیلائزر اور پُش اسٹارٹ بٹن کے ساتھ آتی ہے۔ اس کے علاوہ کمپنی نے اس میں ڈجیٹل کلائمٹ کنٹرول، ملٹی انفارمیشن سسٹم اور ٹویوٹا کنیکٹ فار موبائل انسٹال بھی کیا ہے۔ مالک نے ہمیں بتایا کہ «ٹویوٹا نے اس میں ساؤنڈ پروفنگ کے لیے acoustic laminated وِنڈ شیلڈ بھی لگائی ہے۔»

اس ویرینٹ میں تین ڈرائیو موڈز بھی ہیں: نارمل، ایکو اور اسپورٹس۔

infotainment system Push start

سیفٹی:

یہ کار ABS اور ڈوئل ایئربیگز رکھتی ہے، جو اسے سفر کے لیے نسبتاً محفوظ کار بناتے ہیں۔

airbags

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 ہی کیوں؟

1.5L خریدنے کی وجہ بتاتے ہوئے مالک نے کہا کہ اس میں سب سے زیادہ فیچرز ہیں۔ انہوں نے کہا کہ «اس کا طاقتور انجن اور فیول ایوریج دوسرے ویرینٹس کے مقابلے میں بہترین ہے۔»

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 کا فیول ایوریج:

مالک کے مطابق شہر کے اندر اس کا فیول ایوریج 9 سے 10 کلومیٹرز/لیٹر ہے، جبکہ لمبے روٹ پر یہ 18 سے 19 کلومیٹرز/لیٹر دیتی ہے۔

اسپیڈومیٹر:

اسپیڈومیٹر یا انفارمیشن ڈسپلے رفتار، باہر کا ٹمپریچر، فیول ایوریج اور ڈرائیو ٹائم بتاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ «اگر آپ فیول کی قیمت اور ایک حد مقرر کر دیں تو یہ آپ کو فیول کی بچت کے حوالے سے معلومات بھی دے گا۔»

speedometer

AC کی پرفارمنس:

مالک AC کی پرفارمنس سے مکمل طور پر مطمئن ہیں، کیونکہ وہ اس کار کو لمبے روٹ پر بھی لے گئے ہیں اور اس نے کوئی مسئلہ نہیں کیا۔

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 میں انفوٹینمنٹ سسٹم:

انفوٹینمنٹ سسٹم میں ایک بلوٹوتھ سسٹم ہے جو زبردست کنیکٹیوِٹی رکھتا ہے، اور آپ باآسانی فون کال پر بات کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ «اس کا والیم enhance سسٹم کافی پیچیدہ ہے کیونکہ اس کا آپشن زیادہ پریکٹیکل نہیں ہے۔» ساؤنڈ کوالٹی کے بارے میں بات کرتے ہوئے مالک نے کہا کہ یہ ہونڈا سٹی سے بہتر نہیں ہے۔

اس کے علاوہ یہ گاڑی ایپل کار پلے یا اینڈرائیڈ آٹو اور پری لوڈڈ گوگل میپس نہیں رکھتی۔

مجموعی صورت:

مالک کا کہنا ہے کہ اس گاڑی کی مجموعی صورت نامکمل سی لگتی ہے۔ مالک کا کہنا ہے کہ «لگتا ہے ٹویوٹا پیسہ بچانا چاہتا تھا؛ اس لیے اس نے کار میں مڈ فلیپس نہیں لگائے۔» اس کے علاوہ یہ گاڑی پہلے ہی اونچی ہے اور بغیر فلیپس کے یہ اور اٹھی ہوئی لگتی ہے۔

اس کے علاوہ ایسا لگتا ہے کہ اس گاڑی کے پہیے باقی باڈی سے اندر کی طرف ہیں۔

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 کے پارٹس کی دستیابی:

مالک کا کہنا ہے کہ وہ گاڑی خریدنے کے بعد ایک روڈ ٹرپ پر نکل گئے تھے، انہیں اس کار کے اسپیئر پارٹس کی دستیابی اور قیمتوں کے بارے میں زیادہ کچھ معلوم نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ «سفر کے دوران میرا رِم ٹوٹ گیا، اور 12 سے 13 ہزار میں نیا لگوا لیا تھا۔»

رجسٹریشن اور ٹوکن ٹیکس:

مالک کے مطابق انہوں نے یہ گاڑی اسلام آباد میں 74,000 میں رجسٹرڈ کروائی تھی، جبکہ اس کا سالانہ ٹوکن 4,000 روپے ہے۔

کیا یہ پیسے کا بہترین نعم البدل ہے؟

مالک کے مطابق اگر آپ قیمت کی رینج دیکھیں اور اس کار میں موجود آپشنز پر نظر ڈالیں ۃو آپ اسے بلاشبہ پیسے کا بہترین نعم البدل پائیں گے۔

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 کی معلوم خامیاں:

حالانکہ فرنٹ سیٹس پر گنجائش بہترین ہے، لیکن پچھلی سیٹس پر کافی لیگ یا ہیڈ اسپیس نہیں ہے، خاص طور پر لمبے افراد کے لیے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ لمبے روٹ پر چار افراد کے لیے ہی آئیڈیل ہے۔

leg space

ڈِگی کی گنجائش:

مالک ڈِگی کی گنجائش سے مطمئن ہیں، ان کا کہنا ہے کہ یہ GLi اور آلٹس جتنی ہی ہے۔

ٹویوٹا یارِس ATIV X CVT1.5 کی ری سَیل ویلیو:

اس وقت اس گاڑی کی ری سَیل ویلیو اتنی نہیں ہے کیونکہ ٹویوٹا کے کسٹمرز اس کار اور آلٹس کے درمیان کنفیوز ہیں۔

فیچرز جو موجود نہیں:

یہ کار کروز کنٹرول اور ری ٹریکٹ ایبل سائیڈ مررز نہیں رکھتی۔ انہوں نے کہا کہ «کمپنی نے مجھے بتایا کہ وہ 43,000 روپے میں مررز میں موٹرز لگائیں گے، لیکن وہ پریکٹیکل نہیں ہیں۔»

سفر میں آرام:

مالک کا کہنا ہے کہ یہ گاڑی کافی آرام دہ ہے، اور وہ اس سے مطمئن ہیں۔ «اس کے سسپنشن بہت سافٹ ہیں، اور اس کا پِک بھی بہت اچھا ہے کیونکہ یہ 4200RPM پر 140nm پیدا کرتا ہے۔»

اگر آپ اس کا مقابلہ ہونڈا سٹی سے کریں تو یہ کہیں بہتر پِک اور انجن پاور رکھتی ہے۔

آخری فیصلہ:

مالک کے مطابق اگر کیبن اسپیس کو چھوڑ دیں تو اس گاڑی کو 5 میں سے 4/4.5 نمبر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ «لیکن اگر کیبن اسپیس آپ کے لیے بڑا مسئلہ ہو تو پھر آپ کو خریدنے سے پہلے اپنے فیصلے پر غور کرنا ہوگا۔»

وڈیو یہاں دیکھیں:

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.