ووکس ویگن پاکستان میں یہ گاڑیاں بنائے گا

0 17 390

سب سے بڑی جرمن آٹومیکر کمپنی فوکس ویگن 2022 سے پاکستان میں گاڑیوں کی پیداوار شروع کرے گی۔ خبروں کے مطابق کمپنی شروع میں ملک میں دو گاڑیاں بنائے گی۔ کار مینوفیکچرر پیداوار کا آغاز کرے گا کیونکہ یہ ADP 2016 کے تحت گرین فیلڈ اسٹیٹس حاصل کر چکا ہے۔

2018 میں فوکس ویگن AG اور پریمیئر موٹرز لمیٹڈ نے ہینوور، جرمنی میں کمرشل گاڑیاں بنانے کے لیے حتمی قانونی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ معاہدے کے تحت کمپنی پاکستان میں نئی گاڑیاں بنانے اور ایک اسمبلی یونٹ لگانے پر 135 ملین ڈالرز خرچ کرے گی۔

پاکستان میں فوکس ویگن کی گاڑیاں:

خبروں کے مطابق جرمن کمپنی پاکستان میں اپنا ایماروک ٹرک اور ٹرانسپورٹر وین بنائے گی۔ ایماروک ٹرک ٹویوٹا ہائی لکس اور اسوزو ڈی-میکس کا مقابلہ کرے گا۔ جبکہ ٹرانسپورٹر ہیونڈائی گرینڈ اسٹاریکس اورکِیا گرینڈ کارنیوَل کا۔

فوکس ویگن کا اسمبلی پلانٹ سالانہ 28,000 گاڑیاں بنانے کی گنجائش رکھے گا۔ البتہ خبریں بتاتی ہیں کہ کووِڈ-19 نے پلانٹ کی تعمیر میں تاخیر کی۔ اس سے پہلے کمپنی کو 2021ء میں پیداوار شروع کرنا تھی۔

ویسے پریمیئر موٹرز پاکستان میں 10 سالوں سے آؤڈی کاریں فروخت کر رہا ہے۔

معاہدہ:

جب 22 جون 2017 کو فوکس ویگن اور پریمیئر موٹرز نے معاہدہ کیا تھا تو کافی تہلکہ مچا تھا۔ فوکس ویگن کے بورڈ آف مینجمنٹ کے رکن ڈاکٹر جوزف بومرٹ نے وزیر اعظم سے ملاقات کی تھی۔ جن میں وزیر اعظم نے یقین دلایا تھا کہ حکومت یقینی بنائے گی کہ کمپنی کو تمام سہولیات اور درکار مدد حاصل ہو۔

‏ADP کے بعد جرمنی، فرانس، ترکی، جنوبی کوریا، چین، جاپان اور متحدہ عرب امارات کے کئی ادارے مقامی کمپنیوں کے تعاون سے کار مینوفیکچرنگ پلانٹس لگانے کے لیے پاکستان آئے۔

اس پیشرفت بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ یہ لوکل مارکیٹ میں ایک بہترین اضافہ ہوگا؟ اپنے خیالات نیچے کمنٹس میں پیش کیجیے۔

مزید نیوز، ویوز اور ریویوز کے لیے پاک ویلز بلاگ پر آتے رہیں۔

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.