سوزوکی سوئفٹ کو الوداع کہنے کا وقت آ گیا!

0 11 405

پاک سوزوکی نے اگلے سال سوزوکی سوئفٹ کے خاتمے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ایک بیان میں کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ اگست 2021 سے اِس 1300cc ہیچ بیک کی پروڈکشن بند کر دے گا۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ اگست 2020 سے اگست 2021 تک سوزوکی کے 2,432 یونٹس بنائے گا۔

سوزوکی سوئفٹ کی پروڈکشن تفصیلات:

ایک چارٹ میں پاک سوزوکی نے اگلے سال کے لیے اس کار کی پروڈکشن تفصیلات پیش کی ہیں کہ کمپنی اگلے ایک سال میں 668 عدد ‏DLX NAV ویرینٹس اور 2423 عدد AT NAV ویرینٹس بنائے گی۔

سوزوکی سوئفٹ بزنس پارٹنرز کے لیے اسٹیٹمنٹ:

کمپنی نے اپنے بزنس پارٹنرز کو بھی بتایا ہے کہ کُل پروڈکشن quantity یعنی مقدار یہی رہے گی۔ لیکن ماہانہ مقدار ہو سکتا ہے کسٹمرز کی ڈیمانڈ کے مطابق کچھ تبدیل ہو۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ «امپورٹڈ مٹیریلز کے لیے سپلائرز کی جانب سے آخری آرڈر موجود اسٹاک کے مطابق ہونا چاہیے۔» اس میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پائپ لائن میں موجود آرڈرز اور پاک سوزوکی موٹرز کمپنی لمیٹڈ (PSMC) کے موجود اسٹاک کو بھی اس میں شامل سمجھا جائے گا۔

Suzuki Swift

لوکل مٹیریلز کے لیے آرڈر:

لوکل مٹیریل کے لیے آخری آرڈر پر بات کرتے ہوئے پاک سوزوکی نے سپلائرز کو مشورہ دیا کہ وہ PSMC کے آرڈرز کی سختی سے پیروی کریں۔ سوزوکی نے کہا کہ «سپلائرز کو آخری آرڈر دینے سے پہلے PSMC کے پاس موجود اسٹاک پر بھی غور کرنا ہوگا۔»

کمپنی نے مزید کہا کہ PSMC پہلے ہی تمام سپلائرز کو سوئفٹ کے تمام «اِن سپلائی پارٹس» کی unamortized ٹولنگ لاگت ادا کر چکا ہے۔ اس لیے کمپنی ایسے کسی دعوے کو خاطر میں نہیں لائے گی۔

سوزوکی نے اپنے پارٹنرز سے درخواست کی ہے کہ باقی سوئفٹ کاریں بنانے کے لیے مؤثر مٹیریل اور مینجمنٹ فراہم کریں۔

پاکستان میں سوزوکی سوئفٹ کی تاریخ:

پاک سوزوکی نے 2010 میں 1300cc سوئفٹ ہیچ بیک لانچ کی تھی۔ یہ کار 2004 سے انٹرنیشنل مارکیٹ میں دستیاب تھی؛ لیکن سوزوکی نے چھ سال کی تاخیر سے اسے پاکستان میں لانچ کیا۔

ویسے تو اس کار میں لیانا میں پایا جانے والا M13A انجن ہی تھا، لیکن کہا جاتا ہے کہ سوئفٹ میں ہیڈ بہتر تھا اور اس میں لیانا جیسے مسائل نہیں آتے تھے۔

سوئفٹ کے ابتدائی سال مشکل تھے؛ یہ سوزوکی کے اپنے اقدامات کا نشانہ بنی کیونکہ لوگ جدید سوئفٹ کے مقابلے  میں سستی maintenance رکھنے والی پرانی کلٹس کو ترجیح دے رہے تھے۔ بالآخر سوزوکی نے سوئفٹ کی سیلز بڑھانے کے لیے کلٹس VXL کا خاتمہ کر دیا اور اس فیصلے نے کام کر دکھایا۔ ‏2011-12 میں سوئفٹ اپنی سب سے زیادہ فروخت تک پہنچی، جس کے ایک سال میں 7000 سے زیادہ یونٹس فروخت ہوئے، لیکن ساتھ ہی سیلز میں کمی آنا بھی شروع ہو گئی۔

حال ہی میں ایک رپورٹ میں ظاہر ہوا کہ سوزوکی نے 2019 کی دوسری سہ ماہی میں سوئفٹ کے صرف 1,440 یونٹس فروخت کیے، جبکہ کمپنی نے 2020 کے اسی عرصے میں صرف 280 سوئفٹ کاریں بیچیں۔ اس کے علاوہ جاپانی امپورٹڈ کاروں نے بھی سوئفٹ کی سیلز کو بُری طرح نقصان پہنچایا۔

Recommended For You:

Pak Suzuki Reports Record Loss Of Rs1.52billion 

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.