ٹویوٹا کرولا 1974 – ریویو ایک مالک کی نظر سے

0 1 384

آج ہم پڑھنے والوں کے لیے ٹویوٹا کرولا 1974 کا ایک انوکھا ریویو لا رہے ہیں، خود اس کے ایک مالک کی نظر سے۔ یہ دوسری جنریشن کی کار ہے، اور مالک نے اسے 2019 میں خریدا تھا۔ مالک کے مطابق انہیں کلاسک کارز پسند ہیں اور وہ اس سے پہلے ایک 1972 کرولا ماڈل بھی رکھتے ہیں۔

اس کار کی پروڈکشن اصل میں 1970 سے 1978 کے دوران جاری رہی۔

قیمت اور خریداری کا فیصلہ:

مالک کا کہنا ہے کہ وہ ایک شیراڈ کار خریدنا چاہتے تھے، لیکن وہ انہیں نہیں ملی۔ انہوں نے کہا کہ «پھر میرے ایک دوست سے مجھے اس کار کے بارے میں بتایا۔ میں نے مالک سے ملاقات کی، گاڑی مجھے پسند آئی اس لیے میں نے خرید لی۔» مالک نے یہ گاڑی صرف 1,35,000 روپے میں خریدی ہے جو اسے ایک بجٹ کار بناتی ہے۔

ٹویوٹا کرولا 1974 کا انجن:

یہ گاڑی 1200cc کا اصل انجن رکھتی ہے، جو 4-اسپیڈ ٹرانسمیشن کے ساتھ ہے۔ گاڑی 83hp اور 102Nm ٹارک پیدا کرتی ہے۔ اس کے مقابلے میں 2019ماڈل کرولا 84hp اور 120Nm ٹارک پیدا کرتی ہے۔

یہ بیسک ویرینٹ ہے، جبکہ اس گاڑی کے تین ویرینٹس ہیں۔ مالک نے ہمیں بتایا کہ «باقی دو ویرینٹس 1400cc اور1600cc کے ہیں۔»

کنڈیشن:

مالک نے ہمیں بتایا کہ یہ ایک ہی مالک کے پاس رہی ہے اور اب بھی زبردست کنڈیشن میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ «باڈی میں کوئی زنگ نہیں ہے، جو اسے لو بجٹ میں ایک زبردست کار بناتی ہے۔» اس کے علاوہ انہوں نے پچھلے مالک سے اس گاڑی کے اصل ڈاکیومنٹ بھی حاصل کیے ہیں۔

کلاسک کرولا کار ہی کیوں؟

مالک نے کہا کہ انہیں یہ کلاسک گاڑیاں پسند ہیں، وہ انہیں لو بجٹ میں خریدتے ہیں اور پھر انہیں بہتر بناتے ہیں۔»میں نے اس پر تقریباً 50,000 روپے خرچ کیے ہیں اور 1,00,000 روپے مزید لگاؤں گا، پھر یہ ایک بہترین گاڑی بن جائے گی۔»

انہوں نے بتایا کہ وہ اس گاڑی میں نئے ٹائرز، الائے رمز، پاور ونڈوز اور پاور اسٹیئرنگ لگائیں گے۔

ٹویوٹا کرولا 1974 کا انٹیریئر:

کار کی سیٹیں اوریجنل ہیں لیکن پرانے مالک نے انہیں نئے سیٹ پوشش سے ڈھانپ دیا ہے۔ اس کے علاوہ اس کے ڈیش بورڈ میں ایک اسٹوریج جگہ اور ریڈیو بھی ہے۔ انہوں نے پاک ویلز کو بتایا کہ «بیسک ویرینٹ ہونے کی وجہ سے اس میں AC نہیں ہے۔»

ٹویوٹا کرولا 1974 میں سیفٹی:

کار میں ڈرائیور اور مسافر کی سیٹ کے لیے سیٹ بیلٹس موجود ہیں، جو اسے اپنے وقت کی گاڑیوں سے نسبتاً محفوظ بناتی ہیں۔

بڑے مسئلے:

مالک نے ہمیں بتایا کہ انہیں بریک کے ساتھ چند مسائل کا سامنا ہے۔ «کبھی کبھی بریک پریشر نہیں بنا پاتا اور ڈھیلا ہو جاتا ہے، یہ ایک سنجیدہ مسئلہ ہے۔» کیونکہ یہ بہت پرانا انجن ہے اس لیے انجن کے خراب ہوجانے کا ڈر ہمیشہ رہتا ہے۔ لیکن ان کا کہنا تھا کہ «اگر آپ اس کی اچھی طرح دیکھ بھال کریں اور آئل وقتاً فوقتاً تبدیل کرواتے رہیں، تو کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہوگا۔»

ٹویوٹا کرولا 1974 میں بیٹھنے کی گنجائش:

اس گاڑی میں اگلی سیٹوں پر بیٹھنے کی کافی گنجائش ہے، جو کہ پیچھے ذرا کم ہے۔ اس کے علاوہ اس کی سیٹیں کافی آرام دہ ہیں۔

فیول ایوریج:

اس گاڑی کا شہر کے اندر ایوریج 11 سے 12 کلومیٹرز فی لیٹر ہے، جبکہ انہوں نے اب تک اس گاڑی کو لمبے روٹ پر استعمال نہیں کیا۔

کرولا 1974 کیوں خریدنی چاہیے؟

مالک کے مطابق آپ اسے اپنی سائیڈ کار کے طور پر رکھ سکتے ہیں، ایک کلاسک کار کی حیثیت سے اور آٹو شوز میں لے جانے کے لیے۔ انہوں نے کہا کہ «یہ شہر کے اندر چلانے کے لیے بھی ایک اچھی گاڑی ہے، لیکن لمبے روٹ پر یہ مسئلے کر سکتی ہے۔»

وڈیو دیکھیں:

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.