لیکسس سی ٹی 200ایچ 2011: ایک مالک کی نظر سے

0 2 621

پاک ویلز لیکسس CT 200h کے 2011ء ماڈل کا ریویو لا رہا ہے، ایک نئے یوزر اور مالک کی نظر سے۔ یہ 1800cc کار 2011ء میں آئی تھی اور اب بھی اسی جنریشن میں آتی ہے۔ کمپنی نے امریکا میں اس ماڈل کو ختم کر دیا ہے؛ لیکن یہ اب بھی کئی ملکوں میں موجود ہے۔

یہ 2011ء ماڈل جس کا ریویو کیا جا رہا ہے، 2015ء میں امپورٹ اور اسی سال رجسٹرڈ کیا گیا تھا۔

اگر آپ ایک امپورٹڈ کار خریدنے کا ارادہ رکھتے ہیں تو پاک ویلز ویریفکیشن شیٹ اور کار انسپکشن سروس کا استعمال ضرور کریں، تاکہ آپ کو بہترین گاڑی ملے۔

خریداری اور قیمت:

مالک کے مطابق انہوں نے یہ کار جنوری 2020ء میں 24 لاکھ روپے میں خریدی تھی۔ اس کار کو خریدنے کے پروسس کے بارے میں بات کرتے ہوئے مالک نے کہا کہ انہوں نے اپنی پرائیس فروخت کر دی تھی اور اسی گاڑی کا نیا ماڈل خریدنا چاہتے تھے۔ مالک نے بتایا کہ «اُس وقت میں نے پاک ویلز پر اس گاڑی کے اشتہار دیکھے، مجھے پسند آئی تو میں نے خرید لی۔»

لیکسس CT 200h کا فیول ایوریج:

مالک کے مطابق اس کار کا شہر کے اندر فیول ایوریج 15 سے 16 کلومیٹرز فی لیٹر ہے، جبکہ لمبے روٹ پر یہ ایکو موڈ پر کروز کنٹرول کے ساتھ اوسطاً 17 سے 18 کلومیٹرز فی لیٹر دیتی ہے۔

اہم فیچرز:

ڈیش بورڈ، سینٹرل کونسول اور اسٹیئرنگ بہت پریمیم لُک رکھتے ہیں اور گاڑی کے اسپورٹی ٹائپ کے مطابق انٹرفیس رکھتے ہیں۔ آپ کونسول میں موجود تمام فیچرز کو ماؤس کے ذریعے استعمال کر سکتے ہیں۔ مالک بتاتے ہیں کہ کار کا برطانوی ویرینٹ سن رُوف کے ساتھ آتا ہے، لیکن انہوں نے جاپانی ویرینٹ خریدا ہے، جس میں یہ فیچر نہیں ہے۔

لیکن ہمارے ایک پاک ویلر نے بتایا ہے کہ جاپانی ویرینٹ بھی سن رُوف کے ساتھ آتا ہے۔

سینٹرل کونسول مختلف آپشنز اور بٹنز رکھتا ہے، جس میں EV موڈ، CD چینجر، ڈرائیونگ موڈ، پارکنگ سینسرز اور ہِیٹڈ سیٹس موجود ہیں۔ کار تین ڈرائیونگ موڈز رکھتی ہے، نارمل، ایکو اور اسپورٹس۔

اس کے علاوہ انفارمیشن کلسٹر فیول ایوریج، ڈرائیو دورانیہ اور دوسری ضروری معلومات ظاہر کرتا ہے۔

لیکسس CT 200h کی ‏AC پرفارمنس:

کار ڈوئل کلائمٹ کنٹرول AC رکھتی ہے، اور مالک کے مطابق اس کی پرفارمنس شاندار ہے۔

معلوم خرابیاں:

مالک نے ہمیں بتایا کہ کار کی معلوم خرابی اس کے ABS ہیں، اور یہ آپ کو 50,000 روپے تک کے پڑیں گے۔ اس کے علاوہ مالک نے بتایا کہ اس کا بلوٹوتھ صرف کال کے لیے کنکٹ ہوتا ہے، اور آپ اس کے ذریعے میوزک نہیں سن سکتے۔

البتہ ہمارے قارئین نے ہمیں بتایا کہ مسئلہ یہ نہیں ہے؛ آپ لیکسس کے ماڈل میں بلوٹوتھ کے ذریعے میوزک سن سکتے ہیں۔

لیکسس CT 200h کی سیفٹی:

کار آٹھ ایئر بیگز رکھتی ہے، جو اسے سفر اور ڈرائیو کے لیے محفوظ گاڑی بناتے ہیں۔

گراؤنڈ کلیئرنس اور سسپنشن:

کئی دوسری جاپانی گاڑیوں کی طرح اس کار کی گراؤنڈ کلیئرنس بھی لوکل سڑکوں کے لیے اچھی نہیں ہے۔ مالک نے کہا کہ «آپ کو اسپیڈ بریکرز پر گاڑی کو tilt کرنا پڑتا ہے۔» اس کےعلاوہ انہوں نے کہا کہ سسپنشن ایکو موڈ پر بہت اچھا کام کرتا ہے لیکن اسپورٹس موڈ میں ذرا سخت ہو جاتا ہے۔

ڈِگی، لیگ اسپیس:

کار کی ڈِگی میں کافی گنجائش موجود ہے اور آپ دو سفری بیگ اس میں رکھ سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ گاڑی میں فرنٹ اور بیک دونوں سیٹوں پر مناسب لیگ اسپیس موجود ہے۔

پارٹس کی دستیابی:

مالک کے مطابق اس گاڑی کے اسپیئر پارٹس دستیاب ہیں، لیکن نسبتاً مہنگے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ «اس کی ایک ہیڈلائٹ تقریباً 70,000 روپے کی پڑتی ہے۔»

لیکسس CT 200h کی ری سَیل ویلیو:

مالک کے مطابق یہ گاڑی اپنی ویلیو برقرار رکھے گی لیکن ہونڈااور ٹویوٹا جیسی لوکل گاڑیوں کی طرح جلد فروخت نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ «اسے فروخت کرنا ذرا مشکل ہے۔»

آئل چینج پر لاگت:

مالک نے کہا کہ وہ ہر 5,000 کلومیٹرز کے بعد آئل چینج کرواتے ہیں، جو 4,500 سے 5,000 روپے میں ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ سالانہ ٹوکن انہیں 5,000 روپے کا پڑتا ہے۔

اگر کوئی سیکنڈ ہینڈ لیکسس CT 200h خریدنا چاہتا ہے تو پاک ویلز کا استعمال شدہ کاروں والا سیکشن دیکھیں۔

وڈیو یہاں دیکھیں:

Google App Store App Store

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.