کریم پاکستان نے “خواتین کپتان” متعارف کروادیں

careem-women-drivers-pakistan

کریم پاکستان نے خواتین ڈرائیورز کی دستیابی کا باضابطہ اعلان کردیا ہے۔ ملک کے تین بڑے شہروں کراچی، لاہور اور اسلام آباد میں مقیم خواتین و حضرات اب کریم کی منتخب کردہ “خاتون کپتان” کے ساتھ سفر کرسکیں گے۔ دبئی سے تعلق رکھنے والی ٹیکسی سروس کریم کے اس فیصلے سے نہ صرف خواتین کو روزگار کے اضافی مواقع حاصل ہوں گے بلکہ مسافر خواتین کو بھی مزید اطمینان کے ساتھ سفر کرنے کا موقع میسر آسکے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے رائیٹرز سے بات کرتے ہوئے کریم پاکستان کے جنرل منیجر احمد عثمان نے بتایا کہ اب تک سات خواتین ڈرائیورز کو کریم کے توسط سے گاڑیاں چلانے کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مرد اور خواتین کو اضافی آمدنی کے یکساں مواقع فراہم کرنا چاہتے ہیں۔ احمد عثمان نے امید ظاہر کی کہ خواتین کریم کی اس سہولت سے ضرور استفادہ حاصل کریں گی۔ انہوں نے بتایا کہ خواتین ڈرائیورز کے لیے مزید درخواستیں وصول کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

کریم پاکستان کی جانب سے خواتین کپتان متعارف کروائے جانے کے بعد سوشل میڈیا پر بہت مثبت ردعمل سامنے آرہا ہے۔ گو کہ کریم نے گزشتہ روز پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن (PIA) کی پرواز PK-661 کو ہونے والے اندوہناک حادثے کے بعد اس حوالے سے طے شدہ تقاریب موخر کردیں تاہم کریم استعمال کرنے والوں کی جانب سے خواتین ڈرائیورز کی شمولیت پر اظہار مسرت کا سلسلہ جاری رہا۔

سال 2012 میں شروع ہونے والی کریم دنیا بھر میں 90 ہزار سے زائد ڈرائیورز کے ساتھ کام کر رہی ہے جبکہ موبائل ایپ کے ذریعے کریم کی خدمات حاصل کرنے والوں کی تعداد 40 لاکھ سے بھی زائد ہے۔ اب سے ٹھیک ایک ماہ قبل 9 نومبر 2015ء کو کریم نے متحدہ عرب امارات میں “امیرہ” کے نام سے پہلی مرتبہ خواتین ڈرائیورز کی حامل ٹیکسی سروس متعارف کروائی تھی۔ خواتین کے لیے مخصوص اس سروس کی کامیابی کے بعد اب کریم دیگر ممالک بشمول پاکستان میں بھی اس حوالے سے پیش رفت جاری رکھے ہوئے ہے۔

مزید پڑھیں: کریم کی جانب سے خواتین کے لیے مخصوص ٹیکسی سروس کا آغاز


Top