ہونڈا اٹلس کاروں کی فروخت – ایک تقابل 2019ء اور 2018ء کا

Honda Atlas price hike of 2020

پاکستان کی آٹو انڈسٹری چند دہائیوں سے تین بڑے جاپانی اداروں پر مشتمل ہے کہ گاڑیوں کی مقامی سطح پر پیداوار کر رہے ہیں۔ سال 2019ء آٹو ڈیولپمنٹ پالیسی (ADP) ‏2016-21ء‎ کے تحت مقامی مارکیٹ میں کئی نئے اداروں کی آمد کا سال رہا۔ البتہ تمام موجودہ آٹو میکرز 2019ء کے دوران بڑے زوال کا شکار ہوئے ہیں اور مارکیٹ میں طلب کم ہونے کی وجہ سے اداروں کے پاس اپنی پیداوار کو کم کرنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں۔ فروخت میں آنے والی کمی کی بنیادی وجہ امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں آنے والی کمی اور حکومت کی جانب سے مقامی طور پر بنائی جانے والی گاڑیوں پر متعدد ٹیکس اور ڈیوٹیاں لگانا ہے۔ ہونڈا اٹلس مقامی مارکیٹ میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والے آٹو مینوفیکچرر رہا۔ ہونڈا اٹلس کی سیلز کو اس کی مشہور سوِک اور سٹی ماڈلز سے تحریک ملتی ہے جو 2019ء کے دوران جدوجہد کرتے دکھائی دیے۔ کمپنی ان دونوں ماڈلز کی فروخت کے اعداد و شمار علیحدہ علیحدہ ظاہر نہیں کرتی اس لیے یہ جاننا ناممکن ہے کہ دونوں میں سے کس نے بہتر کارکردگی پیش کی۔ پاکستان آٹوموٹو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (PAMA) کے جاری کردہ حالیہ اعداد و شمار کے مطابق جنوری-نومبر 2019ء کے عرصے میں ہونڈا اٹلس کی کُل فروخت 27,097 یونٹس پر کھڑی رہی۔ پچھلے سال کے اسی عرصے میں یہ 48,625 یونٹس کی زبردست تعداد پر تھی، یعنی موجودہ سال سے 44.27 فیصد زیادہ۔ 

ہونڈا اٹلس کی مجموعی فروخت میں سوِک اور سٹی کا غلبہ رہا کیونکہ کمپنی نے 2019ء میں پچھلے سال کے 42,984 یونٹس کے مقابلے میں 2019ء کے ابتدائی 11 مہینوں میں اِن کے 23,440 یونٹس فروخت کیے۔ ان ماڈلوں کی فروخت میں رواں سال 45.46 فیصد کی کمی آئی ہے، جس میں بڑا حصہ سال کی دوسری ششماہی میں فروخت کے حجم میں آنے والی بہت بڑی کمی تھی۔ دوسری جانب ہونڈا BR-V نے 2019ء میں توقعات کے مطابق کارکردگی نہیں دکھائی۔ آٹومیکر جنوری-نومبر 2019ء کے دوران BR-V کے محض 3,657 یونٹس فروخت کر پایا حالانکہ پچھلے سال کے اسی عرصے میں اس نے 5,641 یونٹس فروخت کیے تھے، یعنی اس سال 35.17 فیصد کا زوال آیا ہے۔ 

اس کے علاوہ مندرجہ ذیل گراف 2019 ء کے ہر مہینے میں مقامی مارکیٹ میں اس کی گاڑیوں کی فروخت کے اعداد و شمار ظاہر کرتا ہے۔ یہ گراف فروخت میں آنے والی بڑی کمی دکھاتا ہے جو بالخصوص ہر گزرتے مہینے کے ساتھ سوِک اور سٹی کے لیے بڑھتی ہی چلی گئی۔ 

ہونڈا سوِک اور سٹی: 

جیسا کہ پہلے بتایا گیا کہ سوِک اور سٹی کمپنی کی مجموعی فروخت میں بڑا حصہ ڈالتی ہیں۔ سال 2019ء کا آغاز دونوں ماڈلز کے لیے بہتر رہا کیونکہ جنوری 2019ء میں پچھلے سال کے اسی مہینے کے مقابلے میں فروخت میں 3.5 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا۔ اس کے بعد سے سوِک اور سٹی کی فروخت اگلے 10 مہینوں تک یعنی نومبر 2019ء تک گرتی ہی رہی۔ فروخت میں سب سے بڑی کمی اکتوبر 2019ء کے دوران دیکھی گئی جب کمپنی نے 76.9 فیصد کی کمی کا سامنا کیا۔ 2019ء میں سال بہ سال کی بنیاد پر فروخت میں کل 45.4 فیصد کی کمی آئی جس میں بڑا کردار سال کی دوسری ششماہی میں ہونے والی کم فروخت کا تھا جو متعدد ٹیکس لاگو ہونے اور آسمان سے باتیں کرتی قیمتوں کی وجہ سے ہوئی۔ مکمل تفصیلات کے لیے نیچے دیا گیا ٹیبل دیکھیں:

ہونڈا BR-V: 

ہونڈا BR-V جاپانی آٹو مینوفیکچرر کی ایک کومپیکٹ SUV ہے جس نے 2019ء کے پہلے 11 مہینوں میں فروخت میں 35.1 فیصد کی کمی کا مشاہدہ کیا۔ اکتوبر 2019ء کے دوران کمپنی BR-V کے صرف 78 یونٹس فروخت کر پائی، جو پچھلے دو سالوں میں گاڑی کی فروخت ہونے والی سب سے کم تعداد ہے۔ کمپنی نے حال ہی میں BR-V کا فیس لفٹ ورژن بھی متعارف کروایا، جس نے کسی حد تک فروخت میں بحالی تو ظاہر کی لیکن پچھلے سال کے مقابلے میں بہتر کارکردگی پیش نہیں کی۔ 

ہونڈا اٹلس کی مجموعی فروخت میں ہر ماڈل کا کردار: 

حیران کن طور پر 2019ء کے دوران سوِک اور سٹی نے (مجموعی طور پر) آٹومیکر کی مجموعی فروخت میں صرف 1 فیصد حصہ کھویا۔ پچھلے سال دونوں ماڈلز نے کمپنی کی مجموعی فروخت میں 88 فیصد کا حصہ ڈالا جبکہ اس سال یہ تعداد گھٹ کر 87 فیصد ہوئی۔ دوسری جانب BR-V نے آٹومیکر کی مجموعی فروخت میں اپنا حصہ 1 فیصد بڑھایا۔ 

رعایتی اسکیمیں پیش کرنے اور اپنی گاڑیوں کی قیمتوں میں کمی کرنے کے بجائے ہونڈا اٹلس مارکیٹ کی کم طلب کی وجہ سے پیداوار بند کرنے میں آگے آگے رہا۔ جولائی 2019ء سے کمپنی اب تک سب سے زیادہ غیر پیداواری دِن (NPDs) کا سامنا کر چکی ہے۔ کمپنی پاکستان بھر میں اپنے ڈیلرشپ نیٹ ورکس کے پاس نہ فروخت ہونے والی گاڑیوں کے وسیع ذخائر کا دعویٰ کرتی ہے۔ اگلے سال میں کمپنی کے مستقبل کے بارے میں آپ کی رائے کیا ہے؟ ہمیں فیڈ بیک میں ضرور بتائیں اور پاکستان کی آٹوموبائل انڈسٹری کے بارے میں اعداد و شمار سے آگاہ رہنے کے لیے پاک ویلز پر آتے رہیں۔


Google App Store App Store

Apart from being an Electrical Engineer by profession, he is an automotive content writer at PakWheels, a web designer and a photographer.

Top