کراچی میں ویمن آن وِیلز مہم کا آغاز


پنجاب کے بعد کراچی، سندھ میں بھی ویمن آن وِیلز (Women On Wheels) مہم کا آغاز کردیا گیا ہے۔ 

اس منصوبے کی افتتاحی تقریب اتوار کو فریئر ہال میں منعقد ہوئی۔ سندھ میں ویمن آن وِیلز مہم کا آغاز حکومتِ سندھ اور سلمان صوفی فاؤنڈیشن نے کیا ہے۔ چیئرمین سلمان صوفی فاؤنڈیشن سلمان صوفی نے کہا کہ پاکستان میں ہر کسی کو خود مختار اور خود اعتماد ہونے کا حق حاصل ہے۔ پاکستان میں خواتین کو یہ حق ٹھیک سے نہیں دیا جا رہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ خواتین کو موٹر سائیکلیں چلانے کی تربیت دینا ملک میں خواتین کو خود مختار بنانے کے عمل کا حصہ ہے کہ جس کے ذریعے وہ ذاتی و پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کی ادائیگی کے لیے آزادانہ سفر کر سکیں گی۔ 

اس مہم کے تحت خواتین کو کم قیمت پر موٹر سائیکلیں بھی دی جائیں گی۔ حصہ لینے والی خواتین کو آپس میں ملاقاتوں کے مواقع بھی ملیں گے۔ سلمان صوفی نے خواتین پر تشدد کے خلاف ایک مرکز کا بھی آغاز کیا جو جنوبی ایشیا میں اپنی نوعیت کا واحد سینٹر ہے۔ پاکستان میں خواتین کو ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے کے لیے پبلک ٹرانسپورٹ کا استعمال کرنا پڑتا ہے یا پھر گھر کے کسی مرد کے ساتھ جانا پڑتا ہے۔ یہ مہم انہیں اپنے بل بوتے پر خود سفر کرنے کا اختیار دے گی۔ 

ابتدائی مرحلوں میں یہ مہم صرف کراچی تک محدود ہوگی۔ البتہ مستقبل میں ویمن آن وِیلز مہم دیہی سندھ میں بھی متعارف کروائی جائے گی۔ اس مہم میں 10,000 خواتین کو موٹر سائیکلیں چلانے کی تربیت دی جائے گی۔ مہم میں خواتین کے لیے ڈرائیونگ لائسنس کا حصول بنانے میں مدد بھی شامل ہے۔ 

ان خواتین کو ہراسگی سے نمٹنے اور اپنی حفاظت کرنے کی تربیت بھی دی جائے گی۔ صوفی فاؤنڈیشن کے چیئرمین نے عورتوں کے لیے اس مہم کے انعقاد میں مدد دینے پر حکومتِ سندھ کا شکریہ بھی ادا کیا۔ ویمن آن وِیلز پہلے پنجاب میں شروع کی گئی تھی کہ جو کامیاب رہی۔ پنجاب میں یہ مہم لاہور، سرگودھا، راولپنڈی اور فیصل آباد میں چلائی گئی۔

بیرسٹر مرتضیٰ وہاب، مشیر وزیر اعلیٰ سندھ، نے کہا کہ یہ مہم صوبے میں خواتین کی روزمرہ زندگیوں کو آسان بنائے گی۔ وہ دفتر اور جامعات کو باآسانی خود جا سکیں گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ مہم سندھ میں خواتین کو سماجی خود مختاری دینے کے عمل میں ایک سنگِ میل ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ کوشش کریں گے کہ اس مہم میں حصہ لینے والی خواتین کو مفت لائسنس جاری کیے جائیں۔

سندھ کی وزیر برائے ترقی نسواں شہلا رضا نے بھی اس مہم میں حصہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ اس مہم کا دائرہ نواب شاہ اور سکھر تک پھیلانے کو یقینی بنائے گی۔ مزید یہ کہ انہوں نے زور دیا کہ ویمن آن ویلز ان کئی منصوبوں میں سے ایک ہے جو حکومت سندھ صوبے میں خواتین کو خود مختار بنانے کے لیے چلا رہی ہے۔ مہم کے اختتام پر ایک موٹر سائیکل ریلی ہوئی جس میں شہلا رضا اور بیرسٹر مرتضیٰ و دیگر نے موٹر سائیکل پر بیٹھ کر ویمن آن ویلز کے منصوبے کے لیے اپنی حمایت کا اظہار کیا۔ 

ویمن آن ویلز مہم کے حوالے سے اپنے خیالات نیچے تبصروں میں پیش کیجیے اور مزید خبروں اور معلوماتی مواد کے لیے پاک ویلز پر آتے رہیے۔ 


Google App Store App Store

Top